آسام :سائیکل پر بھائی کی لاش لے جاتا نظرآیا ایک شخص

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th April 2017, 10:48 AM | ملکی خبریں |

گوہاٹی، 19؍اپریل(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) اڑیسہ کے کالا ہانڈی ضلع میں بیوی کی لاش کو کندھے پر لے کر 10کلومیٹر تک چلنے والے دانا مانجھی کی تصویر کے بعد اب آسام کے وزیر اعلی سربانند سونووال کے اسمبلی حلقہ مجولی میں ایسا ہی ایک تکلیف دہ واقعہ سامنے آیا ہے۔آسام کے اخبارات میں شائع تصویر میں نظر آرہا ہے کہ ایک شخص اپنے 18سالہ بھائی کی لاش کو سائیکل سے لے جا رہا ہے۔بتایا جا رہا ہے کہ گاؤں کی سڑک اتنی خراب ہے کہ کوئی بھی گاڑی والا اس کے بھائی کی لاش کو لے جانے کے لیے تیار نہیں ہوا، آخر کار اس نے بھائی کی لاش کو کپڑوں میں لپیٹ کر سائیکل پر رکھ لیا اور اس کو لے کر نکل پڑا۔ایک مقامی نیوز چینل پر اس کی تصویر آنے کے بعد وزیر اعلی سونووال نے معاملے کی جانچ کی ہدایت دی ہے۔ساتھ ہی ریاست کے اعلی طبی حکام کو موقع پر پہنچنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ایک اخبار میں شائع خبر کے مطابق ،مرنے والا نوجوان لکھیم پور ضلع کے بالی جان گاؤں کا رہنے والا تھا،اس گاؤں سے اسپتا ل کی دوری تقریبا 8 کلومیٹر ہے۔میت کے بھائی نے کہا کہ منگل کو اسپتا ل میں اس کے بھائی کی موت ہو گئی تھی، اس کے بعد وہ وہاں سے اپنے بھائی کی لاش سائیکل پر باندھ کر گاؤں کے لیے نکل پڑا تھا۔ اس معاملہ میں مجولی کے ڈپٹی کمشنر پی جی جھا نے بتایا کہ نوجوان کی موت گارامر سول اسپتا ل میں ہوئی ہے۔اس واقعہ پر انہوں نے کہا کہ میت کے گاؤں بالی جان جانے کے لیے ایسی سڑک نہیں ہے کہ وہاں گاڑی لے جائی جا سکے، اس گاؤں میں جانے کے لیے بانس کے عارضی پل سے بھی گزرنا پڑتا ہے۔پیر کو اسپتا ل میں داخل کرائے گئے نوجوان کو سانس لینے میں تکلیف تھی، اس کے موت کی وجہ بھی یہی بتائی گئی ہیں۔گارامر سول اسپتا ل کے سپرنٹنڈنٹ مانک کا کہنا ہے کہ مرنے والے نوجوان کو انتہائی سنگین حالت میں اسپتا ل لایا گیا تھا،کافی کوشش کے بعد بھی اسے نہیں بچایاجاسکا ۔

ایک نظر اس پر بھی

یوگی حکومت اب اتر پردیش میں غیر قانونی پٹاخہ فیکٹریوں پر سخت کارروائی کرے گی 

اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے غازی آباد کی پٹاخہ فیکٹری میں آگ لگنے کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے سبھی ضلع مجسٹریٹ اور پولیس کپتانوں کو ہدایت دی ہے کہ وہ اپنے اپنے ضلع میں غیر قانونی پٹاخہ فیکٹریوں کی نشاندہی کرکے قصورواروں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کریں ۔