آر ایس ایس کی شاکھا سے نکلے لوگ اسمبلی میں گندی فلمیں دیکھتے ہیں: سابق وزیر اعلیٰ کماراسوامی کا الزام

Source: S.O. News Service | Published on 20th October 2021, 9:11 PM | ریاستی خبریں |

وجئے پور، 20؍اکتوبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) جنتا دل (سیکولر) کے سینئر لیڈر اور کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کماراسوامی نے آر ایس ایس کو لے کر ایک ایسا بیان دیا ہے جس پر ہنگامہ برپا ہو سکتا ہے۔ انھوں نے آر ایس ایس پر طنز کستے ہوئے کہا ہے کہ سَنگھ کی شاکھا میں تربیت لینے والے لوگ اسمبلی اجلاس میں ’بلو فلمیں‘ دیکھتے ہیں۔ دراصل ریاستی بی جے پی صدر نلین کمار کٹیل نے کماراسوامی کو آر ایس ایس کی شاکھا میں آ کر سَنگھ کی سرگرمیاں سیکھنے کی دعوت دی تھی، اسی پر کماراسوامی نے اپنا رد عمل طنزیہ انداز میں ظاہر کیا۔

کرناٹک بی جے پی صدر نلین کمار کٹیل کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کماراسوامی نے کہا کہ ’’مجھے ان کا (آر ایس ایس کا) ساتھ نہیں چاہیے۔ کیا ہم نے نہیں دیکھا کہ سَنگھ کی شاکھا میں کیا سکھایا جاتا ہے؟ وہاں سے نکلے لوگ اسمبلی میں کس طرح سے سلوک کرتے ہیں؟ اسمبلی کے اندر سیشن کے دوران بلو فلمیں دیکھنا، کیا انھیں (بی جے پی) شاکھا میں نہیں سکھایا جاتا؟ کماراسوامی نے سوالیہ انداز میں کہا کہ ’’کیا یہ سب سیکھنے کے لیے مجھے وہاں (آر ایس ایس شاکھا) جانے کی ضرورت ہے؟‘‘

صحافیوں سے بات چیت کے دوران کماراسوامی نے واضح لفظوں میں کہا کہ ’’ان کی شاکھا مجھے نہیں چاہیے۔ میں نے غریبوں کی شاکھا سے کافی کچھ سیکھا ہے۔ اب میرے پاس ان سے سیکھنے کو کچھ نہیں ہے۔‘‘

یہاں قابل ذکر ہے کہ 2012 میں کرناٹک اسمبلی اجلاس کے دوران تین وزراء مبینہ طور سے ’فحش ویڈیوز‘ دیکھتے ہوئے کیمرے میں قید ہو گئے تھے۔ اسی واقعہ کا تذکرہ کرتے ہوئے کماراسوامی نے کرناٹک بی جے پی سربراہ نلین کمار پر جوابی حملہ کیا۔

ایک نظر اس پر بھی

جے ڈی ایس امیدواروں کی جیت کے ذریعے پارٹی کارکن اپنی طاقت کا مظاہرہ کریں: انیتاکمارسوامی

بنگلورو دیہی لوکل باڈیز حلقے سے ریاستی قانون ساز کونسل کیلئے ہورہے انتخابات کو جے ڈی ایس پارٹی نے سنجیدگی سے لیاہے اور اس انتخابات میں پارٹی امیدواروں کوکامیاب کرکے پارٹی کارکنوں کو اپنی طاقت کا مظاہرہ کرناہوگا۔یہ بات رکن اسمبلی انیتاکمار سوامی نے کہی۔

منگلورو : طلبہ کے درمیان گروہی تصادم - کئی طلبہ ہوئے زخمی -  پولیس نے مارا ہاسٹل پر چھاپہ - 6 طالب علم گرفتار ۔ مقامی لوگوں کا احتجاج ۔ ہاسٹل خالی کروانے کا مطالبہ  

شہر کے ایک ڈگری کالج میں زیر تعلیم اور گوجرکیرے علاقے میں واقع ہاسٹل میں قیام پزیر طلبہ کے دو گروہ آپس میں لڑ پڑے جس کے نتیجے میں بعض طلبہ زخمی بھی ہوگئے ۔ مار پیٹ اور تصادم کی اطلاع ملنے پر پولیس نے دیر رات ہاسٹل پر چھاپہ مار کر کئی طالب علموں کو گرفتار کر لیا ۔

چامنڈی پہاڑ پر زمین کھسکنے کے واقعات: نندی مجسمے کے راستے کو پیدل چلنے والے راستہ میں تبدیل کرنے اپیل

گزشتہ چند دنوں سے میسورو ضلع میں مسلسل بارشوں کی وجہ سے میسور کے قریب واقع چامنڈی پہاڑ پر زمین کھسکنے کے واقعات پیش آرہے ہیں جس کی وجہ سے پہاڑ پر واقع چامنڈیشوری دیوی کے درشن کو پہنچنے والے زائرین کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔