کورونا کی روک تھام کے لئے رہنما اصول پر سختی سے عمل کرائے حکومت بہار: کانگریس

Source: S.O. News Service | Published on 16th July 2020, 11:48 AM | ملکی خبریں |

پٹنہ،16؍جولائی (ایس او نیوز؍ایجنسی) بہار کانگریس نے کورونا انفیکشن کے تیزی سے بڑھ رہے معاملوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ریاستی حکومت سے متاثرین کیلئے عالمی ادارہ صحت ( ڈبلیو ایچ او ) کے رہنما اصول پر سختی سے عمل کرائے جانے کی درخواست کی ہے۔ آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے رکن اور بہار نوجوان کانگریس کے سابق ریاستی صدر للن کمار نے بدھ کو یہاں کہاکہ ریاست میں روزانہ متاثرین کی تعداد میں بے تحاشہ اضافہ تشویش کا باعث ہے ۔ کہیں نہ کہیں ریاستی حکومت کی ناکامی اس سے ظاہرہورہی ہے ۔

کمار نے کہاکہ ڈبلیو ایچ او نے اپنی ہدایتوں میں واضح طور پر کہاہے کہ کورونا متاثرین کو ان کے گھروںسے الگ قرنطینہ سینٹر میں رکھاجائے ۔ اگر پازیٹیو فرد گھر میں کورنٹائن کئے جارہے ہیں تو اس سے متاثرہ افراد کے کنبہ اور آس پاس کے لوگوں کے بھی پازیٹیو ہونے کا خطرہ رہتاہے ۔

کانگریس لیڈر نے کہاکہ ڈبلیو ایچ او کے رہنما اصول کے بر خلاف بہار کی نتیش حکومت کورونا متاثرین کو ہوم کورنٹائن رہنے کی صلاح دے کر بحران کے اس دور میں اپنے فرائض سے چھٹکارہ پانے کی کوشش میں ہے ۔ بہار کا طبی نظام دیگر ریاستوں سے ابتر ہے ۔ انہوں نے کہاکہ کورونا کی کون کہے عام بیماری کی دوا بھی شاید ہی یہاں کے طبی مراکز میں دسیتاب ہیں۔

کمار نے کہاکہ کورونا انفیکشن کی تعداد کو دیکھتے ہوئے ریاستی حکومت کو دار الحکومت پٹنہ کے نوتعمیر بہار میوزیم میں قرنطینہ سینٹر بنانا چاہئے جس سے کورونا انفیکشن سے لوگوں کو محفوظ رکھا جاسکے ۔ انہوں نے کہاکہ صرف جرمانہ لگا کر کورونا انفیکشن پر قابو نہیںپایاجاسکتا بلکہ اس پر سختی سے عمل کروانا ہوگا ۔ وزیراعلیٰ رہائش جب کورنا سے محفوظ نہیں رہا تو گاﺅں کی صورتحال کو سمجھا جاسکتاہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

کشمیر میں بی جے پی کارکنان کو ایک منصوبہ کے تحت نشانہ بنایا جارہا: الطاف ٹھاکر

 بی جے پی جموں و کشمیر یونٹ کے ترجمان الطاف ٹھاکر نے پارٹی کارکنوں پر ہونے والے حملوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیر میں بی جے پی کے کارکنوں کو ایک منصوبہ بند سازش کے تحت نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

مرکزی حکومت کا ہتھیاروں کی درآمد پر پابندی کا فیصلہ ناقابل فہم: سوگت رائے

مرکزی حکومت کے ذریعہ 101ملٹری ہتھیاروں کی درآمدگی پر پابندی عاید کیے جانے پر ترنمول کانگریس نے سوال کھڑے کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ قدم اٹھانے سے قبل ملک میں اسلحہ سازی کی صلاحیت میں اضافہ کرنے کی ضرورت تھی اور اس کے لئے روڈ میپ تیار کیا جانا چاہیے۔

کشمیر: ڈاکٹر شاہ فیصل نے اٹھایا حیرت انگیز قدم، پارٹی کے صدارتی عہدہ سے دیا استعفیٰ

 کشمیری قوم کے لئے نیلسن منڈیلا بننے کی تمنا رکھنے والے 36 سالہ سابق آئی اے ایس افسر ڈاکٹر شاہ فیصل نے گزشتہ برس مارچ میں 'ہوا بدلے گی' نعرے کے تحت لانچ کردہ اپنی جماعت 'جموں و کشمیر پیپلز موومنٹ' کے صدارتی عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ ان کی جگہ پر پارٹی کے نائب صدر فیروز پیرزادہ کو ...