رمیش جارکی ہولی سیکس سی ڈی کا شاخسانہ؛  کرناٹکا کے 6 وزراء پر طاری ہوگئی کپکپی ۔ اپنے خلاف خبروں کی اشاعت روکنے کے لئے کھٹکھٹایا ہائی کورٹ کا دروازہ

Source: S.O. News Service | Published on 6th March 2021, 11:02 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 6؍ مارچ (ایس او نیوز) ایڈی یورپا کی قیادت والی بی جے پی حکومت میں وزارتی قلمدان رکھنے والے رمیش جارکی ہولی کی سیکس سی ڈی عام ہونے کے بعد آر ٹی آئی ایکٹیویسٹ نے اعلان کیا تھا کہ اس کے پاس کچھ اور بھی وزراء کی ایسی سی ڈیز موجود ہیں جس سے سیاسی طوفان مزید تیز ہو سکتا ہے۔

    ایسا لگتا ہے کہ اس  بیان میں کچھ حقیقت ضرور موجود ہے جس کی وجہ سے بعض اہم ترین وزراء پر کپکپی طاری ہوگئی ہے۔ یہی وجہ ہے ایڈی یورپا کابینہ کے 6 وزراء نے ریاستی ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹاتے ہوئے عدالت سے مانگ کی ہے کہ میڈیا میں ان کے خلاف کسی قسم کا رسوا کن مواد شائع یا نشر کرنے پر پابندی لگائی جائے۔ 

    خیال رہے کہ رمیش جارکی ہولی نے دیگر کانگریسی اور جنتا دل اراکین کو اپنے ساتھ ملاکر بغاوت  کا اعلان کیا تھا اور کانگریس جے ڈی ایس مخلوط گرانے کا کام کیا تھا۔ اس کے بعد وہ لوگ بی جے پی میں شامل ہوگئے تھے اور بی جے پی ٹکٹ پر ضمنی الیکشن جیت کر وزرات میں حصہ دار بن گئے تھے۔

    اب سیاسی میدان میں جنسی طوفان اٹھنے کے بعد رمیش جارکی ہولی نے استعفیٰ دے دیا ہے، مگر اس طوفان میں اپنی کشتی بھی ڈوبتی دیکھ کر رمیش کے قریبی سمجھے جانے والے لیبر منسٹر شیورام ہیبار، وزیر زراعت بی سی پاٹل، وزیر کھیل کود نارائن گوڈا، وزیر صحت کے سدھاکر،منسٹر فار کوآپریشن ایس ٹی سوم شیکھر اوروزیر شہری ترقیات بئیرتھی بسوا راجو نے 5؍مارچ کو عدالت میں درخواست داخل کی ہے کہ میڈیا میں ان کے خلاف منفی رپورٹس شائع یا نشر کرنے پر حکم امتناع لگایا جائے۔ عدالت نے یہ عرضی قبول کرلی ہے جس پر آج 6 مارچ کو فیصلہ ہوگا۔

ایک نظر اس پر بھی

گوکرن کے مہابلیشور مندر کے متعلق سپریم کورٹ کا اہم فیصلہ : مندرکی نگرانی کے لئے کمیٹی تشکیل دینے کا حکم

اترکنڑاضلع کے ہندؤوں کے مشہورو تاریخی مذہبی مقام گوکرن کی مہابلیشور مندر کے تعلق سے سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ  ریاستی حکومت  مندر کے انتظامی امور کو رام چندر پور مٹھ سے واپس لے۔ یاد رہے کہ  پچھلی بی جے پی کی حکومت نے گوکرن کے مہابلیشور مندر کی انتظامیہ اور نگرانی رام چندر ...

لاک ڈاؤن کی بجائے دفعہ 144 نافذ کی جائے : سی ایم ابراہیم| کورونا سے شہید ہونے والے مسلمانوں کی تدفین کیلئے علاحدہ جگہ دی جائے : ضمیر احمد خان 

کورونا سے شہید ہونے والے مسلم طبقے کے افراد کی تدفین کے لئے علاحدہ جگہ دی جائے ۔رکن اسمبلی ضمیر احمد خان نے  ودھان سودھا میں ہوئی بنگلورو کے اراکین اسمبلی،اراکین پارلیمان کی میٹنگ میں یہ مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہر ایک رکن اسمبلی کے لئے 25 کووڈ بیڈ اسپتالوں میں ریزرو کئے ...

کرناٹک میں لاک ڈاؤن ضروری نہیں، نائٹ کرفیو کے اوقات میں تبدیلی نہیں، دفعہ 144 نافذ کریں؛ ریاستی حکومت کو اپوزیشن کے مشورے 

بنگلورو میں کووڈ۔ 19 معاملات تیزی سے بڑھنے کے سبب  وزیر اعلیٰ  یڈیورپا، بنگلورو کے وزراء، اراکین پارلیمان اور اراکین اسمبلی کے ساتھ ویڈیو کانفرنس منعقد کی گئی۔  جس میں حکومت کو مشورہ دیا گیا کہ لاک ڈاؤن نافذ نہ  کر یں ،اسپتالوں میں کووڈ بستروں کی قلت دور  کریں۔مہلوکین کی ...

کرناٹک میں کورونا کی دہشت کا ایک اور ریکارڈ ، تقریباً 20 ؍ ہزار متاثر ، بنگلورو میں لاک ڈاؤن یا سخت امتناعی احکامات ؟

اتوارکے روز کرناٹک میں کورونا نے اپنا خوفناک ترین رخ پیش کیا اور اب تک متاثرین کی تعداد کا ایک نیا ریکارڈ سامنے آیا ریاست بھر میں 7 6 0 9 1 تازه معاملات سامنے آئے ۔ 81 لوگوں کی موت واقع ہوئی ہے۔

بھٹکل: ریاست میں کورونا کے بڑھتے معاملات سےپریشان طلبہ نے پیر سے شروع ہونے والے امتحانات منسوخ کرنے ٹوئیٹر پر چلائی مہم

کورونا کی دوسری لہر میں  بڑھتے کیسس کے دوران ایک طرف  میٹرک اور سکینڈ پی یوسی کے امتحانات ملتوی اور منسوخ کئے جارہےہیں تو وہیں دوسری طرف ویشویشوریا ٹیکنالوجیکل یونیورسٹی (وی ٹی یو) کے تحت آنے والی کالجس میں کل  پیر سے فرسٹ سیمسٹر کے امتحانات شروع ہورہےہیں۔