خوف نہ کھائیں، اسکولوں کو آئیں۔طلبا سے بومئی کی گزارش، حکومت نے بچوں کو کووڈ سے محفوظ رکھنے احتیاطی تدابیر کی ہیں

Source: S.O. News Service | Published on 22nd August 2021, 11:54 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،22؍اگست (ایس او نیوز)  پیر سے ریاست میں اسکولس کھولے جارہے ہیں۔اس مناسبت سے وزیراعلیٰ بسوراج بومئی نے آج کہا کہ اسکولوں کو آنے والے بچوں کو کووڈ سے محفوظ رکھنے کو یقینی بنانے کے لئے حکومت نے تمام احتیاطی اقدامات کئے ہیں۔

یہاں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے بومئی نے بتایا کہ 9ویں تا 12ویں جماعت جن میں پری یونیورسٹی بھی شامل ہے،23اگست سے کلاس بحال ہوجائیں گے۔ اس کے لئے متبادل بیاچس کا اہتمام کیا گیا ہے۔اسکولوں کودوبارہ کھولنے کے لئے ہم تیار ہیں۔ بچوں کو کس طرح اسکولوں کو لانا چاہئے اس سلسلہ میں ہم نے سرکاری اور نجی اسکولوں کو مناسب ہدایات جاری کردی ہیں۔ان ہدایات میں والدین یا سرپرستوں کی منظوری، بچوں کو بٹھانے کی ترتیب، کلاسوں کومتبادل دنوں میں شفٹوں میں چلانا اور پورے کلاس رومس کو سینی ٹائزڈ کروانا یہ سب شامل ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ریاستی وزیر برائے پرائمری و سکینڈری تعلیم بی سی ناگیش کے ہمراہ وہ دوبارہ اسکولوں کا معائنہ بھی کریں گے۔وزیراعلیٰ نے بتایاکہ ہم چاہتے ہیں کہ بچے دھیرے دھیرے اسکولوں کو واپس لوٹ آئیں۔پچھلے ڈیڑھ سال سے بچے اسکولوں کا رخ نہیں کئے ہیں۔ہم یہ بھی چاہتے ہیں کہ اسکولوں میں بچوں کی حاضری مرحلوں میں بڑھے۔

بومئی نے بتایا کہ بچوں کو کلاس رومس میں پڑھانے کے دوران تمام احتیاطی تدابیر اپنائے جائیں تاکہ بچوں کو کورونا وباء سے محفوظ رکھا جائے۔بومئی نے والدین کو آواز دی ہے کہ خود اور بچوں کو ویکسین لگوا کر بچوں کے درمیان اعتماد پیدا کریں۔انہوں نے بتایا کہ ایک بار بچے گھروں سے اسکولوں کو آنے لگیں تو والدین ان پر نگاہ رکھیں۔آج بروز ہفتہ بومئی نے وجئے پورہ ضلع میں آلمٹی ڈیم کا معائنہ کیا اور کرشنا ندی کی پوجا بھی کی۔

انہوں نے بتایا کہ باگل کوٹ میں میں نے عوامی نمائندوں سے بھی ملاقات کرکے کووڈ۔19اور سیلاب سے متعلق تبادلہ خیال کیا۔ والدین سے بومئی نے کہا ہے کہ ڈر و خوف کے بغیر بچوں کو اسکول روانہ کریں۔حکومت آپ کے بچوں کی کووڈ سے تحفظ کرے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

مسلمانوں میں نکاح معاہدہ ہے نہ کہ ہندو شادی کی طرح رسم، طلاق کے معاملے پرکرناٹک ہائی کورٹ کااہم تبصرہ

کرناٹک ہائی کورٹ نے اہم تبصرہ کرتے ہوئے کہاہے کہ مسلمانوں کے یہاں نکاح ایک معاہدہ ہے جس کے کئی معنی ہیں ، یہ ہندو شادی کی طرح ایک رسم نہیں ہے اور اس کے تحلیل ہونے سے پیدا ہونے والے حقوق اور ذمہ داریوں سے دور نہیں کیا جاسکتا۔

کرناٹک سے روزانہ 2100کلو بیف گوا کو سپلائی ہوتاہے : وزیر اعلیٰ پرمود ساونت

بی جے پی کی اقتدار والی ریاست کرناٹک سے روزانہ 2000کلوگرام سے زائد جانور اور بھینس کا گوشت (بیف)گوا کو رفت ہونےکی جانکاری بی جے پی اقتدار والی ریاست گوا کے وزیرا علیٰ پرمود ساونت نے دی۔ وہ گوا ودھان سبھا کو تحریری جواب دیتےہوئے اس بات کی جانکاری دی ۔

کرناٹک کے داونگیرے میں ایک لڑکی نے والدین سمیت 4 افرادکو سلایا موت کی نیند؛ کیا ہے پورا واقعہ

کرناٹک میں ایک لڑکی نے امتیازی سلوک سے تنگ آکر اپنے پورے خاندان کو زہر دے کر ہلاک کردیا۔ جب فارنسک رپورٹ منظر عام پر آئی تو انکشاف ہوا کہ اس خاندان کی موت رات کے کھانے میں پائے جانے والے زہر سے ہوئی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق داونگیر میں ایک 17 سالہ لڑکی کو کچھ عرصے سے اپنے خاندان ...

ہبلی میں مبینہ تبدیلی مذہب کی مخالفت کرتے ہوئے شدت پسند ہندو تنظیموں کے کارکنوں نے چرچ کے اندر گھس کر گایا بھجن

ہبلی میں تبدیلی مذہب کی مخالفت کرتے ہوئے ہندو شدت پسند تنظیموں کے کارکنوں نے ایک چرچ کے اندر گھس کر بھجن گانا شروع کردیا جس کی وائرل ہونے والی ویڈیو میں درجنوں مرد و خواتین کو دیکھا گیا ہے کہ وہ کس طرح ہبلی کے بیری ڈیوارکوپا چرچ کے اندر بیٹھے ہاتھ جوڑ کر بھجن گارہے ہیں۔