مسلم نوجوان آگے آئیں، محکمہ پولیس میں اپنا مستقبل بنائیں، کرناٹک کے شیموگہ میں جاری ہے بیداری و تربیتی پروگرام

Source: S.O. News Service | Published on 15th September 2020, 9:57 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،15؍ستمبر (ایس او نیوز) کرناٹک میں ان دنوں بڑے پیمانے پر محکمہ پولیس میں بھرتیاں ہورہی ہیں۔ پولیس کے اعلی عہدوں سمیت مختلف زمروں کی اسامیوں کیلئے تقریباً 22 ہزار امیدواروں کی تقرری عمل میں لائی جارہی ہے۔ فزیکل ٹسٹ، تحریری امتحانات اور انٹرویوز کے ذریعہ امیدواروں کی بھرتیاں ہونے والی ہیں۔ اس سلسلے میں اقلیتی نوجوانوں میں بیداری پیدا کرنے، بالخصوص مسلم نوجوانوں کو محکمہ پولیس کی جانب راغب کرنے کیلئے کرناٹک کے شیموگہ شہر میں منفرد کوشش دیکھنے کو مل رہی ہے۔ یہاں کے اردو روزنامہ آج کا انقلاب اور سٹیزن یونائیٹیڈ مومنٹ نے مل کر نوجوانوں کو مفت پولیس ٹریننگ فراہم کرنے کا بیڑا اٹھایا ہے۔

شیموگہ کے مسلم ہاسٹل میں 100 سے زائد نوجوانوں کو مفت قیام و طعام کے ساتھ تربیت فراہم کی جارہی ہے۔ اردو روزنامہ ’آج کا انقلاب’ کے ایڈیٹر مدثر احمد نے کہا کہ یہ خدمت بلا لحاظ مذہب و ملت انجام دی جارہی ہے۔ مدثر احمد نے کہا کہ پولیس محکمہ میں مسلمانوں کی نمائندگی کافی کم ہوتی ہے۔ محکمہ کے متعلق غلط فہمیاں بھی پائی جاتی ہیں۔ مسلم طبقہ کا رجحان پولیس سروس کی جانب کم ہی رہا ہے۔ اس کمی کو محسوس کرتے ہوئے سٹیزن یونائیٹیڈ موومنٹ اور روزنامہ ’آج کا انقلاب’ نے مل کر پہلے بیداری مہم شروع کی۔

پولیس کی مختلف اسامیوں کیلئے تعلیمی لیاقت اور اہلیت رکھنے والے نوجوانوں کو اس ضمن میں آگاہ کیا۔ خواہش مند امیدواروں کو  آن لائن درخواستیں بھرتی کرنے کیلئے ترغیب دی۔ اس کے بعد 100 سے زائد امیدواروں کو مفت تربیت کیلئے منتخب کیا گیا۔ ان میں چند خواتین اور برادران وطن کے بھی چند امیدوار شامل ہیں۔ نہ صرف شیموگہ بلکہ دیگر شہروں کے نوجوان یہاں پہونچ کر تربیت حاصل کررہے ہیں۔ مقامی کوچنگ سینٹر سے اشتراک کرتے ہوئے یہ فزیکل اور تحریری امتحانات کیلئے تربیت فراہم کی جا رہی ہے۔ سٹیزن یونائیٹیڈ موومنٹ کے کنوینر مزمل احمد نے کہا کہ پولیس عہدوں کیلئے شروع کئے گئے ٹریننگ پروگرام سے زیادہ تر غریب اور دیہاتوں کے نوجوان استفادہ کر رہے ہیں۔ نہ صرف مسلمان بلکہ دیگر مذاہب کے نوجوانوں کو بھی پولیس امتحانات کی تربیت دی جارہی ہے۔

مزمل احمد نے کہا کہ سٹیزن یونائیٹیڈ موومنٹ نے کورونا کی وبا اور لاک ڈاؤن کے دوران ضرورت مندوں میں راشن تقسیم کرنے، مالی اور طبی مدد فراہم کرنے جیسے فلاحی کام انجام دیئے ہیں۔ جیسے ہی پولیس محکمہ میں تقرریوں کا اعلان کیا گیا۔ اس ادارے نے بیداری اور تربیتی پروگرام شروع کرنے کا فیصلہ لیا۔ ایک واٹس ایپ گروپ قائم کرتے ہوئے خواہش مند امیدواروں کی رہنمائی کی گئی۔ منتخب امیدواروں کیلئے قلیل مدتی ٹریننگ کا آغاز کیا گیا ہے، جو پولیس سرویس کیلئے ہونے والے امتحانات تک جاری رہے گی۔ روزنامہ آج کا انقلاب کے مدیر مدثر احمد نے کہا کہ پولیس کا محکمہ ایک وسیع دائرہ رکھتا ہے۔ مرد اور خواتین دونوں اس محکمہ میں شامل ہوکر ملک اور سماج کی خدمت انجام دے سکتے ہیں۔ اپنے مستقبل کو روشن بناتے ہوئے خاندان کیلئے سہارا بن سکتے ہیں۔ عام طور پر مسلم طبقہ کا رجحان میڈیکل، انجینئرنگ کی جانب رہتا ہے۔ پولیس سرویس کی اہمیت اور فوائد سے بھی نوجوانوں کو واقف کروانے کی ضرورت ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

’کسان مخالف‘ پالیسیوں کے خلاف کل 28ستمبر کومنایا جائے گا مکمل’ کرناٹکابند ‘ مینگلور اور اڈپی میں بھی احتجاجی مظاہرہ ہوگا، بعض جگہوں پر راستہ روکو کا پلان

’رعیت سنگھا ‘اور ’ہسیرو سینا‘کے ریاستی صدر کوڈیہلّی چندرا شیکھر کے بیان کے مطابق مرکزی اور ریاستی حکومت کی ’کسان مخالف‘پالیسیوں کے خلاف کل 28 ستمبر کو ’مکمل  کرناٹکابند ‘منایا جائے گا۔

اسمبلی سے اپوزیشن کے واک آؤٹ کے درمیان اے پی ایم سی بل بنگلورو، بل سے کسانوں کو نقصان نہیں ہوگا، حکومت کا دفاع۔ کسانوں کے مفاد نجی اداروں کو فروخت نہ کریں: سدارامیا

اپوزیشن کانگریس اور جے ڈی ایس کی سخت مخالفت اور ایوان کی کارروائی سے واک آؤٹ کے باوجود ریاستی اسمبلی میں آج اے پی ایم سی قانون ترمیمی بل منظور کر لیا گیا ۔

کل 28 ستمبر کو کرناٹک بند؛ کسان تنظیموں نے لگائی آواز، زراعتی بل کو قرار دیا کسان، مزدور اور غریب مخالف

28؍ستمبر پیر کے دن تمام کسان تنظیموں نے کرناٹک بند کی آواز دی ہے۔ اس بند کو ترکاریاں اور پھل کے ہول سیل تاجروں نے بھی حمایت دی ہے، اس دن شہر کا سب سے بڑا کے آر مارکیٹ بندر رہے گا۔

28ستمبر کو کرناٹکا بند کے پس منظر میں ایس ایس ایل سی سپلمنٹری امتحان کیا گیا ملتوی

کرناٹکا ہائی اسکول اکزامنیشن بورڈ کی طرف سے جاری کیے گئے اعلامیہ کے مطابق ایس ایس ایل سی کا جو سپلمنٹری امتحان  28ستمبر کو منعقد ہونے والا تھا اسے کسانوں کے احتجاجی بند کے پیش نظر ملتوی کردیا گیا ہے۔

بھٹکل جامعہ اسلامیہ کے صدر مولانا عبد العلیم قاسمی صاحب کی بنگلور میں شال پوشی

آل انڈیا ملی کونسل کرناٹک کے نائب صدر اور الجامعہ الاسلامیہ بھٹکل کے نو منتخب صدر ، حضرت مولانا عبد العلیم قاسمی صاحب کی بنگلور آمد پر ،، ملی کونسل کرناٹک ، بنگلور ،، کی جانب سے شال پوشی کی گئی ۔

ایڈی یورپا حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش۔ حکومت اکثریت ثابت کرے گی، اشوک کا دعویٰ۔وزیر اعلیٰ کو مستعفی ہوجانا چاہئے:سدارامیا

اپوزیشن کانگریس لیڈر سدارامیا نے وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا کی قیادت والی بی جے پی حکومت کے خلاف آج ریاستی اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد نوٹس پیش کردیا ہے۔