نتائج سے قبل ای وی ایم پر پھر سوال چندرا بابو کی قیادت میں 7پارٹیوں کی الیکشن کمیشن سے ملاقات

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 21st May 2019, 11:47 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،21/ مئی(ایس او نیوز/ایجنسی) لوک سبھا انتخابات کے 10 میں سے9/ایگزٹ پولس میں این ڈی اے کوسب سے زیادہ سیٹیں دئے جانے کے بعد ای وی ایم پر ایک بار پھر سوال اٹھنے لگا ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی اور بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ کا دعویٰ اب کی بار300کے پار،بالکل پورے طور پر اسی طرح سچ ثابت ہورہا ہے جس طرح2014 کے عام انتخابات میں سچ ثابت ہوا تھا؟ایگزٹ پولس نے ایک بار پھر اپوزیشن پارٹیوں کو سنجیدگی سے غور و فکر کرنے پر مجبور کردیا ہے۔ حالانکہ اپوزیشن پارٹیوں نے تمام ایگزٹ پولس کو مسترد کرتے ہوئے مخلوط حکومت بنانے کی تیاریاں شروع کردی ہیں جس کے پیش نظر چندرا بابو نائیڈو نے مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی سے ملاقات کی،وہیں سماج وادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو اور بہوجن سماج پارٹی کی سربراہ مایاوتی نے آئندہ کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا تو وہیں بی جے پی کے ایک طبقہ میں بھی یہ خدشہ ظاہر ہوا ہے کہ مطلوبہ سیٹیں نہ ہونے پرمرکز میں وزیراعظم ان کی پسند کا ہوگا جس کے لئے انہوں نے آر ایس ایس کے چہیتے نتن گڈکری سے ملاقاتیں شروع کردی ہیں۔بہرحال7پارٹیوں نے آندھرا پردیش کے وزیراعلیٰ چندرا بابو نائیڈو کی قیادت میں منگل کو الیکشن کمیشن سے ملاقات کا فیصلہ کیا ہے۔ مانا جارہا ہے کہ وہ کمیشن سے ووٹوں کی گنتی کے دن ای وی ایم کا میلان 50فیصد وی وی پیاٹ کی پرچیوں سے کئے جانے کا مطالبہ کریں گے۔ نائیڈو کے علاوہ مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی، عام آدمی پارٹی کے لیڈر سنجے سنگھ، کرناٹک کے وزیراعلیٰ کمارسوامی، کانگریس کے سینئر لیڈر راشد علوی، کمیونسٹ پارٹی کے جنرل سکریٹری سیتا رام یچوری، آر جے ڈی لیڈر تیجسونی یادو نے بھی ایگزٹ پول اور ای وی ایم پر سوال اٹھائے ہیں۔نائیڈو نے ای وی ایم سے چھیڑ چھاڑ کا خدشہ کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ فون ٹیپ کرنے کی طرح ہی ای وی ایم سے چھیڑ چھاڑ کرنا آسان ہے۔ اپوزیشن کو متحد کرنے کی کوشش میں لگے نائیڈو نے کہا کہ ای وی ایم کے معاملے میں کئی طرح کی باتیں چل رہی ہیں۔ دہلی میں کچھ لوگ کہہ رہے ہیں کہ ای وی ایم اور کنٹرول یونٹ بدلی جارہی ہے تو کچھ لوگ کہہ رہے ہیں کہ ہم فریکونسی کی مدد سے باہر سے ہی سبھی ووٹ بدل سکتے ہیں۔سبھی پارٹیاں فکرمند ہیں کہ کیسے ای وی ایم کو بچایا جائے لیکن اپوزیشن پارٹیوں نے پورے 5سال میں الیکشن کمیشن کے کہنے کے باوجود کوئی ٹھوس تیاری نہیں کی تو پھر کیوں لوک سبھا انتخابات2019 کے نتائج سے عین قبل انہیں ای وی ایم پرشک ہورہا ہے۔کیونکہ سیاسی ماہرین اس بات کی جانب اسمبلی انتخابات کے دوران واضح طور پر اشارے کررہے تھے کہ مودی لہر اب بھی برقرار ہے لیکن سیاسی پارٹیوں پر اس کا اسی وقت اثر ہوتا جب انتخابات میں شکست سے دوچار ہوجائیں۔مدھیہ پردیش، راجستھان اور چھتیس گڑھ میں کانگریس کی فتح کے بعد سیاسی مبصرین نے کہا تھا کہ اس میں بی جے پی نے لولی پاپ دکھا کر کانگریس کو خاموش کردیاہے یعنی تینوں ریاستوں میں فتح سے سرشار کانگریس اب ای وی ایم پر سوال نہیں اٹھاسکتی۔ لہٰذا لوک سبھا انتخابات2019 میں مودی اور ان کی ٹیم ای وی ایم میں چھیڑ چھاڑ کرنے میں پوری طرح کامیاب ہوجائے گی۔کانگریس لیڈر راشد علوی نے بیان دیا ہے کہ اگر ایگزٹ پول کے نتائج درست ثابت ہوتے ہیں، تو اس کا مطلب ای وی ایم میں دھاندلی ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ تمام ایگزٹ پول یکطرفہ نتیجے دکھا رہے ہیں، اس لئے ہم اس پر بھروسہ نہیں کر رہے ہیں۔ راشد علوی نے کہا کہ اگر ایگزٹ پول جیسے نتائج آتے ہیں تو ہمارا خیال ہے کہ گزشتہ دنوں تین ریاستوں کے انتخابات میں جہاں جہاں کانگریس جیتی ہے وہ ایک سازش تھی۔انہوں نے کہا کہ تین ریاستوں میں کانگریس کی جیت کے ساتھ یہ یقین دلایا گیا کہ ای وی ایم درست ہے۔اس سے انہوں نے یہ بھی ثابت کرنے کی کوشش کی کہ الیکشن کمیشن پر حکومت کا کوئی دخل نہیں ہے۔اسی کے ساتھ راشد علوی نے ایگزٹ پول کرنے والی کمپنیوں پر بھی سوال کھڑا کیا ہے۔جے پی چھوڑ کانگریس میں شامل ہونے والے ایم پی ادت راج نے بھی ایگزٹ پول کے نتائج کو مسترد کیا ہے۔انہوں نے ٹویٹر پر مرکزی حکومت پر الزام لگاتے ہوئے لکھاکہ ٹی وی سروے بی جے پی کو جتا رہے ہیں تاکہ اپوزیشن ناامید ہو جائے اور ایک ساتھ کوشش نہ کرے۔ایک وجہ اور ہو سکتی ہے کہ ای وی ایم کھیل کیا جائے۔

ایک نظر اس پر بھی

بابری مسجد ملکیت مقدمہ؛ ڈاکٹرراجیودھون کو دھمکی دینے والے پروفیسرنے مانگی غیر مشروط معافی ؛ راجیو دھون نے عدالت کو بتایا؛ 1528میں شرعی طریقہ سے ہوئی تھی مسجد کی تعمیر

بابری مسجد ملکیت مقدمہ میں روزانہ کی بنیاد پر چلنے والی سماعت کاآج27 واں دن تھا جس کے دوران سب سے سینئر ایڈوکیٹ کپل سبل اور ایڈوکیٹ آن ریکارڈ اعجاز مقبول نے جمعیۃ علماء ہند کے وکیل ڈاکٹر راجیو دھون کو چنئی کے پروفیسر شنمگم کی جانب سے بھیجے گئے  دھمکی آمیز خط کے خلاف داخل توہین ...

آسا م میں حاملہ خاتون سمیت تین بہنوں پر تشدد کرنے والے پولیس اہلکاروں کو ڈیوٹی سے برطرف کیا جائے: ویمن انڈیا موؤمنٹ 

ویمن انڈیا موؤمنٹ (WIM)نے آسام کے درانگ ضلع کے پولیس چوکی میں حاملہ خاتون اور اس کی بہنوں کو برہنہ کرکے شدید تشدد کا نشانہ بنانے والے پولیس اہلکاروں کی شدید مذمت کی ہے۔

حضرت عائشہؓ پر وسیم رضوی کی فلم کے بارے میں دہلی اقلیتی کمیشن کا نوٹس اور پروجکٹ پر مزید کام نہ کرنے عبوری حکم

 میڈیا رپورٹوں اور دہلی کے کچھ باشندوں کی شکایت پر دہلی اقلیتی کمیشن نے شری وسیم رضوی کو ایک نوٹس بھیجا ہے۔ اطلاعات کے مطابق شری  رضوی حضور پاک ﷺ  کی زوجۂ طاہرہ حضرت عائشہؓ کے بارے میں ایک فلم بنارہے ہیں یا بنا چکے ہیں۔ انھوں نے اپنی فلم کا ایک ٹریلر ریلیز کیا ہے اور اس متنازع ...

فرضی پاسپورٹ ویزہ گروہ کا پردہ فاش، آٹھ لوگ گرفتار

دہلی پولس کرائم برانچ کی ٹیم نے فرضی پاسپورٹ ویزہ فراہم کرنے کے نام پر لوگوں سے دھوکہ دہی کرنے والے بین الاقوامی گروہ کا پردہ فاش کرکے ایجنٹوں سمیت آٹھ لوگوں کو گرفتار کرنے میں کامیابی حاصل کی ہے۔