مضافات بنگلورو میں قبرستان کیلئے چار متبادل جگہوں کی نشاندہی، چیف سکریٹری اور بنگلورو کے ڈی سی سے مسلم اراکین اسمبلی کی ملاقات کے دوران تفصیلات پر گفتگو

Source: S.O. News Service | Published on 29th July 2020, 11:47 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،29؍جولائی(ایس ا و  نیوز)شہر بنگلورومیں کورونا وائرس کے سبب دن بدن اموات میں اضافہ کے پیش نظر قبرستانوں میں جگہ دن بدن تنگ ہوتی جا رہی ہے۔ اس کے لئے مسلم نمائندوں کی طرف سے بارہا حکومت سے نمائندگی کی گئی کہ قبرستان کیلئے زمین مہیا کروائی جائے۔

دو ہفتہ قبل حکومت کی طرف سے 35.8ایکڑ زمین فراہم کرنے کے لئے شہر بنگلورو کی مضافات میں آنے والے دس مختلف مقامات پر زمین کی نشاندہی کی گئی لیکن ان میں سے 90فیصد زمینات مقدموں میں پھنسی ہوئی تھیں اور وہاں پر کاشت کاری جاری تھی۔جبکہ ایک زمین پتھر کی کواری ہے جو 60فیٹ گہری ہے۔ اس لئے ان زمینا ت کی بجائے متبادل زمین مہیا کروانے کے لئے حال ہی میں رکن اسمبلی ضمیر احمد خان نے وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا سے ملاقات کر کے نمائندگی کی۔

اس کے بعد منگل کے روز مسلم اراکین اسمبلی کے ایک وفد نے ودھان سودھا میں ریاست کے چیف سکریٹری ٹی ایم وجئے بھاسکر سے ملاقات کی اور حکومت کی طرف سے قبرستان کے لئے متبادل زمین مہیا کروانے کے سلسلے میں تبادلہ خیال کیا۔ اس کے بعد ان اراکین اسمبلی نے بنگلورو اربن ضلع کے ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر جی این شیو مورتی سے بھی ملاقات کی۔ اس ملاقات کے دوران ڈپٹی کمشنر نے وفد کو بتایا کہ شہر کے انتظامیہ کی طرف سے متبادل زمینات کی نشاندہی کی گئی ہے۔ اس میٹنگ میں اسسٹنٹ کمشنر، بنگلورو نارتھ تعلقہ یلہنکا کے تحصیلدار، اور دیگر افسر موجود تھے۔ اس میٹنگ میں ڈپٹی کمشنر نے اراکین اسمبلی کو بتایا کہ حکومت کی طرف سے جن مقامات کی نشاندہی کی گئی تھی ان کی جگہ پر چار مقامات پر متبادل زمین مسلم قبرستانوں کے لئے نشاندہی کی گئی ہے جن میں یلہنکا ڈیویژن میں آنے والے مارینا ہلی علاقے میں جو 5ایکڑ کی کواری کی نشاندہی بھی شامل ہے۔ اس سے متصل ہی محکمہ جنگلات کی زمین کے پاس ایک ڈی نوٹیفائی کی گئی۔زمین کی نشاندہی میٹنگ کے دوران ہی تحصیلدار نے کی اور کہا کہ دو دن کے اندر اس کے متعلق رپورٹ دی جائے گی۔ اس کے علاوہ رزاق صاحب پالیہ اور محمد صاحب پالیہ میں بھی ایک ایک زمین کی نشاندہی کی گئی ہے۔ میٹنگ کے دوران شہر کے آنیکل میں محکمہ دفاع کو دی گئی 250ایکڑ زمین میں سے قبرستان کے لئے جگہ مہیا کرانے کی مانگ کئے جانے پر ڈی سی نے تیقن دیا کہ اس سلسلہ میں وہ آنیکل کے تحصیلدار کو طلب کر کے اس کے بعد دو دن کے اندر اس کی رپورٹ دیں گے۔ انہوں نے یلہنکا کے تحصیلدار سے کہا کہ باقی تین جگہوں کے بارے میں دو تین دن کے اند ر رپورٹ پیش کی جائے۔ چیف سکریٹری اور ڈپٹی کمشنر سے میٹنگ کے دوران اراکین اسمبلی ضمیر احمد خان، این اے حارث، رضوان ارشد اور رکن کونسل نصیر احمد موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں تیز ہوا اور موسلا دھار بارش کا سلسلہ جاری

تیز ہوا کے ساتھ موسلا دھار بارش کا سلسلہ شمالی کرناٹک کے دوردراز اور ساحلی علاقے نیز ملناڈ خطّے میں جاری ہے۔ کچھ مقامات پر کاویری، Thungabhadra اور کرشنا ندی میں طغیانی آگئی ہے۔ بارش کے سبب Talacauvery میں مٹّی کے تودے گرے ہیں۔

کورونا متاثر مریض کی لاش کا کیا جاسکتا ہے آخری دیدار، کرناٹک حکومت نے جاری کی نئی گائیڈلائنس

کرناٹک میں کورونا کی لاشوں کے متعلق نئی گائیڈ لائنس جاری کی گئی ہیں ۔ محمکہ صحت کی جانب سے جاری کی گئی گائیڈ لائنس کے مطابق کورونا وائرس سے مرنے والوں کی لاش اب ان کے رشتہ داروں کے حوالے کی جاسکتی ہے ۔

کووڈ۔19 کی نعشوں سے متعلق ترمیم شدہ رہنما خطوط جاری

کورونا وائرس کے بڑھتے کیسس کے درمیان کرناٹک حکومت نے کووڈ۔19 مریضوں کی نعشوں کے ضمن میں ترمیم رہنما خطوط جاری کیے ہیں جن میں اس وقت تک پوسٹ مارٹم سے بچنے پر زور دیا گیا جب تک کسی خاص وجہ سے ایسا کرنا ضروری نہ ہو۔

بھاری برسات کے وقت منگلوروایئر پورٹ پر طیاروں کو اترنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ ایئر پورٹ ڈائریکٹر راؤ کا بیان

منگلورو انٹر نیشنل ایئر پورٹ کے دائریکٹر وی وی راؤ نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھاری برسات اور خراب موسم کی وجہ سے چیزیں صاف دکھائی نہ دینے کی صورت میں ایئر پورٹ پر طیاروں کو لینڈنگ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

کیرالہ میں پیش آیا چٹان کھسکنے کا خطرناک حادثہ۔ 15ہلاک اور60سے زائدافراد ہوگئے لاپتہ۔ ملبے میں دب گئیں 30جیپ گاڑیاں 

کیرالہ کے مشہور تفریحی مقام ’مونار‘ سے قریب ’ایڈوکی‘ میں چٹان کھسکنے کا ایک خطرناک حادثہ پیش آیا جس میں تاحال 15افراد ہلاک ہونے اور 60سے زیادہ لوگ لاپتہ ہونے کے علاوہ 30جیپ گاڑیاں چٹان کے ملبے میں دب کر رہ جانے کی خبر ہے۔