رسوئی گیس کی قیمت میں اضافہ حکومت کا سفاکانہ قدم: مایاوتی

Source: S.O. News Service | Published on 13th February 2020, 12:36 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،12/فروری(ایس او نیوز/یو این آئی) بہوجن سماج پارٹی کی صدر مایاوتی نے رسوئی گیس سلنڈر کی قیمتوں میں بھاری اضافہ کے لئے مرکزی حکومت پر سخت تنقید کرتے ہوئے بدھ کے روز کہا کہ یہ حکومت کا سفاکانہ قدم ہے۔ مایاوتی نے ایک ٹوئٹ میں کہا کہ زبردست مہنگائی کے وقت حکومت کا یہ قدم ظالمانہ ہے۔ نیز حکومت کو آئین کی روح کے مطابق فلاحی حکومت کی طرح کام کرنا چاہیے۔

مایاوتی نے ٹوئٹ میں کہا ’’کھانا پکانے کے غیر سبسڈی والے گیس سلنڈر کے دام میں آج سے تقریباً 150 روپے کا بھاری اضافہ ملک کے کروڑوں غریب اور محنت کش لوگوں کے لئے زبردست مہنگائی میں آٹا گیلا کرنے والا سفاکانہ قدم ہے۔ مرکز آئین کی منشا کے مطابق فلاحی حکومت کی طرح کام کرے تو یہ بہتر ہو گا‘‘۔

قبل ازیں، دہلی اسمبلی انتخابات کے نتائج آنے کے بعد بدھ کے روز ملک میں رسوئی گیس سلینڈر کی قیمت میں تقریباً ڈیڑھ سو روپے کا اضافہ کیا گیا۔ ملک کی سب سے بڑی آئل مارکیٹنگ کمپنی انڈین آئل کارپوریشن کے مطابق آج سے بغیر سبسڈی والا 14.2 کلو گرام کا گھریلو رسوئی گیس سلینڈر 144.50 روپے مہنگا ہو گیا ہے اور اس کی قیمت 858.50 روپے ہو گئی ہے۔ پہلے اس کی قیمت 714 روپے تھی۔

ادھر، سبسڈی والے سلینڈر کی قیمتوں پر لگنے والے گڈس اینڈ سروس ٹیکس (جی ایس ٹی) میں بھی اضافہ کیا گیا ہے۔ عام طور پر رسوئی گیس کی قیمتوں میں مہینے کی پہلی تاریخ سے کی جاتی ہے لیکن اس مرتبہ یہ تبدیلی 12 فروری سے کر دی گئی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ دہلی اسمبلی انتخابات کی وجہ سے اس مہینے قیمتوں میں اضافہ کرنے میں تاخیر کی گئی۔ کولکاتا میں بغیر سبسڈی والے رسوئی گیس سلینڈر کی قیمت 149 روپے بڑھ کر 747 روپے، ممبئی میں 145 روپے بڑھ کر 684.50 روپے اور چنئی میں 147 روپے بڑھ کر 734 روپے ہو گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

سونیا گاندھی نے لکھا پی ایم مودی کو خط ’منریگا کے تحت 21 دن کی اجرت پیشگی ادا کریں‘

 کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے وزیر اعظم نریندر مودی کو خط لکھ کر اپیل کی ہے کہ 21 دن کے لاک ڈاؤن کی وجہ سے دیہی علاقوں میں مزدوروں کے سامنے روزی روٹی کا بحران پیدا ہو گیا ہے، لہذا ان کارکنوں کو منریگا کے تحت ملنے والی 21 دن کی اجرت پیشگی ادا کی جائے۔

کرناٹک سے درجنوں افراد نے مرکز نظام الدین کے اجتماع میں شرکت کی؛ کورونا سے ایک کی موت، باقی کی نشاندہی کر کے کورانٹائن، 13/ افراد میں وائرس نہ ہونے کی تصدیق

دہلی کے مرکز نظام الدین میں 10/ مارچ کو ہوئے اجتماع میں شریک افراد میں سے 24 کے کورونا وائرس کا شکار ہوجانے اور ان میں سے6/افراد کی موت کی خبروں کے بعد اس مرکز کے اجتماع میں شرکت کے بعد اپنے اپنے مقامات پر لوٹنے والے افراد کی نشاندہی کر کے انہیں کورانٹائن کرنے کا سلسلہ شروع ہوا ہے۔

کورونا: ملک میں 32؍اموات،227نئے معاملے، جملہ 1251 ؍مریض، دنیا بھر میں مہلک مرض سے 37ہزار 519جانیں تلف، 781656؍متاثر

ملک میں پچھلے 24گھنٹوں میں کورونا وائرس انفیکشن کے 227 نئے معاملے سامنے آنے کے بعد انفیکشن کے کل مریضوں کی تعداد بڑھ کر 1251ہوگئی اور تین مریضوں کی موت سے اس وائرس کی زد میں آکر مرنے والوں کی تعداد 32ہوگئی ہے -