داونگیرے : بھتیجے کی موت معاملے پر پولیس کے رویہ سے کرناٹکا کے بی جے پی رکن اسمبلی ناخوش، عائد کیا لاپروائی کا الزام

Source: S.O. News Service | Published on 7th November 2022, 1:13 PM | ریاستی خبریں |

داونگیرے، 7؍نومبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) کرناٹک  کے بی جے پی رکن اسمبلی ایم پی رینوکاچاریہ نے ہفتہ کے روز اپنے بھتیجے چندرشیکھر کی موت معاملے میں جانچ کو لے کر پولیس محکمہ پر لاپروائی کا الزام عائد کرتے ہوئے ناراضگی ظاہر کی ہے۔ رینوکاچاریہ کا کہنا ہے کہ ’’اگر رکن اسمبلی کے بیٹے (رینوکاچاریہ اپنے بھتیجے کو اپنا بیٹا کہتے ہیں) کو سیکورٹی نہیں دی جا سکتی تو عام آدمی کی کیا حالت ہوگی؟‘‘

واضح رہے کہ جمعرات کو رینوکاچاریہ کے بھتیجے چندرشیکھر کی لاش بری حالت میں نہر سے برآمد کی گئی تھی۔ پولیس محکمہ کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ کار کی تیز رفتاری کے سبب پیش آیا ہے۔ ویسے چندرشیکھر کے اغوا اور قتل کا اندیشہ بھی ظاہر کیا جا رہا ہے۔ میڈیا اہلکاروں سے بات کرتے ہوئے رینوکاچاریہ نے کہا کہ ’’یہ ایک منصوبہ بندی کے ساتھ کیے گئے قتل کا معاملہ ہے۔ میرے بیٹے کو بے رحمی سے پیٹا گیا اور مار ڈالا گیا۔ پولیس محکمہ کی لاپروائی واضح طور سے دکھائی دے رہی ہے۔‘‘

رینوکاچاریہ کا کہنا ہے کہ ’’میری پارٹی کے کارکنان اور حامیوں نے ڈرون کیمروں کا استعمال کیا تھا۔ انھوں نے کار کا پتہ لگایا۔ یہ سب میرے انتخابی حلقہ کے لوگوں کے ذریعہ کیا جا رہا ہے۔ پولیس نے ایسا کچھ نہیں کیا۔‘‘ وہ مزید کہتے ہیں ’’اگر مہلوک چندرشیکھر کی روح کو سکون دینا ہے تو معاملے کی مناسب جانچ ہونی چاہیے۔ سچائی سامنے آنی ہی ہے۔ میں خاموش ہوں۔ مجھے بھڑکانے کی کوشش مت کیجیے۔‘‘ انھوں نے محکمہ پولیس پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ’’مجھے ایک سال پہلے جان سے مارنے کی دھمکی ملی تھی۔ میں نے اس کے بارے میں مقامی پولیس سے بات کی تھی۔ انھیں معاملے کی جانچ کرنی چاہیے تھی۔ سیکورٹی سخت کی جانی چاہیے تھی۔ کوئی سیکورٹی نہیں دی گئی۔‘‘

رینوکاچاریہ کا کہنا ہے کہ بدمعاشوں نے ان کے بھتیجے کا قتل الگ جگہ پر کیا تھا اور لاش کو کار کے ساتھ نہر میں پھینک دیا تھا۔ رینوکاچاریہ نے کہا کہ ان کے بھتیجے کے ہاتھ بندھے ہوئے تھے۔ پولیس محکمہ کے ذریعہ معاملے کی جانچ کے طریقے پر بی جے پی کارکنان نے بھی ناراضگی ظاہر کی ہے۔ پولیس نے آگے کی جانچ شروع کر دی ہے۔

واضح رہے کہ 24 سالہ چندرشیکھر اتوار کے روز لاپتہ ہو گیا تھا۔ اندیشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ اس کا اغوا کر لیا گیا تھا۔ رینوکاچاریہ کے حامیوں کے ذریعہ دی گئی اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے پولیس کو چندرشیکھر کی کار 3 نومبر کو نہر کے اندر ملی تھی۔ کرین سے کار کو اٹھانے کے بعد نوجوان کی لاش بری حالت میں برآمد ہوئی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں بی جے پی حکومت کے دوران ہندوؤں کا سب سے زیادہ قتل ہوا، یہی ان کا اصلی چہرہ ہے: سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا

کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس لیڈر ایس سدارامیا نے منگل کے روز ریاست میں برسراقتدار بی جے پی پر زوردار حملہ کیا۔ انھوں نے بی جے پی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں بی جے پی حکومت میں سب سے زیادہ ہندوؤں کا قتل کیا گیا۔ انھوں نے کہا کہ ہمارے دور میں نہ صرف ہندو، ...

بی جے پی کے ریاستی صدر نلین کمار کٹیل کی بھٹکل آمد؛ آنے والے انتخابات کو لے کر کٹیل نے کہا؛ ساورکر اور ٹیپو نظریات کے درمیان ہوگا الیکشن

اس بار ریاستی انتخابات کانگریس اور بی جے پی کے بجائے ساورکر اور ٹیپو  نظریات کے درمیان ہوں گے۔ یہ بات  بی جے پی ریاستی یونٹ کے صدر نلین کمار کٹیل نے کہی۔ شرالی میں منعقدہ بی جے پی پروگرام میں شریک ہوتے ہوئے  کٹیل نے سوال کیا کہ آپ کو محب وطن ساورکرچاہئے  یا جنونی ٹیپو  چاہئے ...

 اڈانی کمپنی کے خُرد بُرد معاملہ پر کانگریس کا بنگلورو میں احتجاج

ریاست کرناٹک کے دارلحکومت بنگلورو کے میسور بینک سرکل پر کانگریس کی جانب سے اڈانی کمپنی سے جڑے معاملات پراحتتجاج کیاگیا جس میں پارٹی کے رہنما و کارکنان شریک تھے۔ احتجاج کے دوران کانگریس کے رہنماؤں نے کہا کہ راہل گاندھی نے پہلے ہی اس معاملہ سے متعلق پیشن گوئی کی تھی۔

منگلورو: نیشنل ایجوکیشن پالیسی 'ہندوتوا راشٹرا' بنانے کا ٹوُل کِٹ ہے؛ ماہر تعلیم ڈاکٹر نرنجنارادھیا 

کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کی آل انڈیا یوتھ فیڈریشن (اے آئی وائی ایف) جنوبی کینرا و اڈپی، سمدرشی ویدیکے منگلورو، کرناٹکا تھیولوجیکل ریسرچ انسٹی ٹیوٹ منگلورو کے اشتراک سے 'نیشنل ایجوکیشن پالیسی (این ای پی) اور اسکولی تعلیم' کے عنوان پر شہر میں منعقدہ  سیمینار میں اپنے خیالات کا ...

پتور: آپسی اختلافات بھول کر بی جے پی کو شکست دینے کے لئے متحد ہوجائیں - کانگریس پارٹی کارکنان سے لیڈروں کی اپیل 

کانگریس پارٹی لیڈران نے  پتور کے نیلیاڈی سے  ملناڈ اور ساحلی علاقے کے لئے اپنی 'پرجا دھونی یاترا' کا دوسرا مرحلہ شروع کرتے ہوئے اپنی کارکنان کو آواز دی کہ وہ آپسی اختلافات بھول کر بی جے پی کی  "بد عنوان، غیر فعال، غیر مخلص، غیر موثر اور عوام سے دور" حکومت کو ہٹانے کے لئے متحد ...