کرناٹک میں دسمبر تک ویکسین لگانے کی کارروائی مکمل ہوجائے گی ، ہر چہارشنبہ کے دن ریاست میں خصوصی ویکسین اتسوا منعقد ہوگا: سدھاکر

Source: S.O. News Service | Published on 31st August 2021, 11:24 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،31؍اگست (ایس او نیوز) ریاستی وزیر برائے صحت و میڈیکل تعلیم ڈاکٹر کے سدھاکر نے آج کہا کہ ریاست میں دسمبر کے آخر تک تمام لوگوں کو دو ڈوز کووڈ ویکسین لگانے کی کارروائی مکمل ہوجائے گی۔انہوں نے بتایا کہ آئندہ ہر چہارشنبہ کے دن ریاست میں خصوصی ویکسین اتسوا منایا جائے گا۔

ودھان سودھا میں آج متعلقہ اعلیٰ افسروں کے ساتھ اجلاس منعقد کرنے کے بعد نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ماہ دسمبر کے آخر تک ریاست میں ہر شہری کو دو ڈوز ویکسین لگانے کا پروگرام مکمل ہوجائے گا۔اس کے لئے خصوصی پروگرام ترتیب دیا گیا ہے۔یکم ستمبر سے ہر دن ریاست میں 5لاکھ ڈوز ویکسین لگائے جائیں گے۔اسی طرح ہر چہارشنبہ کے دن ویکسین اتسوا کا اہتمام کیا جائے گا۔اس دن ایک دن میں دس لاکھ ڈوز ویکسین لگانے کانشانہ مقرر کیا گیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ریاست میں کورونا کی تیسری لہر کی روک تھام کے لئے تمام لوگوں کو ویکسین لگانا ضروری ہے۔انہوں نے بتایا کہ بچوں کو ویکسین لگانے کی منظوری ملنے کے فوری بعد ریاست میں بچوں کو بھی ویکسین لگانے کا آغاز ہوجائے گا۔انہوں نے بتایا کہ ریاست میں کووڈ کی تیسری لہر آنے سے قبل ہی حکومت نے احتیاطی اقدامات پر عمل شروع کردیا ہے۔اس وباء سے بچنے کے لئے علاج بھی شروع کردیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ کووڈ کی تیسری لہر کوآنے سے روکنا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

سدھاکر نے بتایا کہ چند ریاستوں میں کووڈ کی تیسری لہر آچکی ہے۔ریاست کرناٹک میں تیسری لہر کو روکنے کے لئے ہرسطح پر احتیاطی اقدامات کئے جارہے ہیں۔اس میں کسی بھی طرح کا سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔مرکزی وزیر صحت نے بھی کرناٹک کو درکار ویکسین فراہم کرنے کی منظوری دی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اگست کے آخر تک4کروڑ 10لاکھ ڈوز ویکسین لگائے جاچکے ہوں گے۔ریاست کے چند اضلاع میں لوگ ویکسین لینے سے پیچھے ہٹ رہے ہیں۔ان اضلاع میں ویکسین لگانے کی مہم چلائی جائے گی۔ بیدر، یادگار اور کلبرگی اضلاع میں لوگ ویکسین لینے سے پیچھے ہٹ رہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ سرحدی اضلاع بالخصوص کیرلا کی سرحد کے 20 کلومیٹرس فاصلہ کی حدود میں ہر ایک کے لئے ویکسین لگوالینا ضروری ہے۔انہوں نے بتایا کہ اطلاع ملی ہے کہ چند لوگ اپنا پہلا ویکسین ڈوز لگوانے کے وقت ایک موبائل نمبر دے رہے ہیں اور دوسرے ڈوز کے وقت دوسرا موبائل نمبر فراہم کررہے ہیں۔اس کی وجہ سے ٹیکنیکل مسائل پیدا ہورہے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ ریاست میں 65فیصد لوگ پہلا ڈوز اور 20فیصد لوگ دوسرا ڈوز ویکسین لگوا چکے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ گنیش تہوار اور دیگر مذہبی پروگراموں پر پابندی عائد کرنے حکومت کو بھی اچھا نہیں لگ رہا ہے۔لیکن کووڈ گائیڈ لائنس پر عمل کرنا بھی ضروری ہے۔پانچویں تا آٹھویں جماعت کے بچوں کے لئے آف لائن کلاسس شروع کرنے حکومت پر زیادہ دباؤ ڈالا جارہا ہے۔لیکن شہر بنگلور میں سب کے لئے ویکسین لگانے کا پروگرام کامیابی کے ساتھ چل رہاہے۔

ایک نظر اس پر بھی

مسلمانوں میں نکاح معاہدہ ہے نہ کہ ہندو شادی کی طرح رسم، طلاق کے معاملے پرکرناٹک ہائی کورٹ کااہم تبصرہ

کرناٹک ہائی کورٹ نے اہم تبصرہ کرتے ہوئے کہاہے کہ مسلمانوں کے یہاں نکاح ایک معاہدہ ہے جس کے کئی معنی ہیں ، یہ ہندو شادی کی طرح ایک رسم نہیں ہے اور اس کے تحلیل ہونے سے پیدا ہونے والے حقوق اور ذمہ داریوں سے دور نہیں کیا جاسکتا۔

کرناٹک سے روزانہ 2100کلو بیف گوا کو سپلائی ہوتاہے : وزیر اعلیٰ پرمود ساونت

بی جے پی کی اقتدار والی ریاست کرناٹک سے روزانہ 2000کلوگرام سے زائد جانور اور بھینس کا گوشت (بیف)گوا کو رفت ہونےکی جانکاری بی جے پی اقتدار والی ریاست گوا کے وزیرا علیٰ پرمود ساونت نے دی۔ وہ گوا ودھان سبھا کو تحریری جواب دیتےہوئے اس بات کی جانکاری دی ۔

کرناٹک کے داونگیرے میں ایک لڑکی نے والدین سمیت 4 افرادکو سلایا موت کی نیند؛ کیا ہے پورا واقعہ

کرناٹک میں ایک لڑکی نے امتیازی سلوک سے تنگ آکر اپنے پورے خاندان کو زہر دے کر ہلاک کردیا۔ جب فارنسک رپورٹ منظر عام پر آئی تو انکشاف ہوا کہ اس خاندان کی موت رات کے کھانے میں پائے جانے والے زہر سے ہوئی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق داونگیر میں ایک 17 سالہ لڑکی کو کچھ عرصے سے اپنے خاندان ...

ہبلی میں مبینہ تبدیلی مذہب کی مخالفت کرتے ہوئے شدت پسند ہندو تنظیموں کے کارکنوں نے چرچ کے اندر گھس کر گایا بھجن

ہبلی میں تبدیلی مذہب کی مخالفت کرتے ہوئے ہندو شدت پسند تنظیموں کے کارکنوں نے ایک چرچ کے اندر گھس کر بھجن گانا شروع کردیا جس کی وائرل ہونے والی ویڈیو میں درجنوں مرد و خواتین کو دیکھا گیا ہے کہ وہ کس طرح ہبلی کے بیری ڈیوارکوپا چرچ کے اندر بیٹھے ہاتھ جوڑ کر بھجن گارہے ہیں۔