کرناٹک: 16 اضلاع میں کورونا کیسز میں اضافہ، کرسمس تقریب پر پابندی کا اندیشہ

Source: S.O. News Service | Published on 6th December 2021, 8:48 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،6؍دسمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) کرناٹک کے 16 اضلاع میں دسمبر کے پہلے ہفتہ میں نئے کووڈ معاملوں کی تعداد میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔ حال کے دنوں میں 500 سے زیادہ طلبا پازیٹو پائے گئے ہیں، جو افسران کے لیے فکر انگیز بات ہے۔ محکمہ صحت کے ذرائع نے کہا کہ اگر یہی سلسلہ جاری رہا تو نئے سال اور کرسمس کے جشن کے دوران پابندیاں لگائی جا سکتی ہیں۔ نومبر کے پہلے ہفتہ تک کووڈ کے معاملوں میں گراوٹ آ رہی تھی اور مہاراشٹر کی سرحد سے لگے ضلعوں سمیت کئی اضلاع میں صفر معاملے درج کیے گئے تھے، جس سے پابندیوں کو پوری طرح سے ہٹانے کا راستہ ہموار ہوا۔ حالانکہ ریاستی حکومت نے حالات سے نمٹنے کے لیے پھر سے پابندی لگا دی ہے۔

محکمہ خاندانی فلاح و صحت کے مطابق کوڈاگو، ہاویری، چکابلاپور، منڈیا، میسورو، داونگیرے اور شمالی کنڑ اضلاع میں کووڈ کے معاملے زیادہ درج کیے گئے۔ دیگر اضلاع میں بہت کم یا ایک ہندسہ والے کووڈ معاملے درج کیے گئے ہیں۔ لیکن ان سبھی اضلاع میں کووڈ کے معاملے بڑھ رہے ہیں جہاں حالات پوری طرح قابو میں ہیں اور یہ اضافہ چار گنا ہے۔

گزشتہ ہفتہ (18 سے 25 نومبر) کے مقابلے میں 26 نومبر سے 3 دسمبر کے درمیان 2202 معاملے درج کیے گئے تھے۔ 19-12 نومبر تک کووڈ معاملوں کی تعداد 1588 تھی۔ محکمہ صحت کے پاس دستیاب اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 15 دنوں میں معاملوں میں 25 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ شیوموگا اور کوپل اضلاع میں چار گنا اضافہ دیکھا گیا ہے۔ شیوموگا نے 25-18 نومبر کے درمیان 28 کووڈ معاملوں کی اطلاع دی۔ یہ 26 نومبر سے 3 دسمبر تک بڑھ کر 86 ہو گیا، جس میں 430 فیصد کا اضافہ درج کیا گیا۔ اسی طرح کوپل، جس نے 25-18 نومبر تک صفر معاملے درج کیے، نے 26 نومبر سے 3 دسمبر کے درمیان چار معاملے درج کیے۔ اسی مدت میں بنگلورو شہر میں کووڈ کے معاملے 995 سے بڑھ کر 1167 ہو گئے۔

محکمہ صحت کے ذرائع کے مطابق وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی نے کہا ہے کہ حکومت کے سامنے سرگرمیوں اور تقاریب پر پابندی لگانے کا کوئی ایجنڈا نہیں تھا۔ حالانکہ انھوں نے کہا ہے کہ آنے والے دنوں میں ریاست کے حالات کا تجزیہ کرنے کے بعد مناسب فیصلہ لیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

اُڈپی کالج میں حجاب کا مسئلہ: ہیومن رائٹس کمیشن نے سنگین الزامات پر حکومت سے مانگی رپورٹ

اُڈپی میں ایک سرکاری اسکول میں طالبات کے حجاب کا تنازع ختم ہونے کا نام نہیں لے رہاہے۔ اس معاملے میں جہاں حکومت کرناٹک نے ایک اسپرٹ کمیٹی تشکیل دی ہے، وہیں قومی انسانی حقوق کمیشن(این ایچ آر سی) نے اس معاملے میں ریاستی حکومت کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کیا ہے۔

کولار؛ اسکول کے کمرے میں جمعہ کی نماز پڑھنے کی اجازت دینے پر ہیڈ مسٹریس معطل؛ انصاف کا مطالبہ کرتے ہوئے آئیٹا نے کیا تشویش کا اظہار

ہندو تنظیموں کے احتجاج اور اُن کی ناراضگی کے بعد محکمہ تعلیم کے حکام نے کرناٹک کے کولار ضلع میں ایک سرکاری اسکول کی ہیڈ مسٹریس کو مسلم طلباء کو کلاس روم میں نماز پڑھنے کی اجازت دینے پر معطل کر دیا ہے۔

رائچورعدالت میں ترنگا جھنڈا لہرانے کےلئے ہٹانی پڑی امبیڈکر کی تصویر، دلت تنظیموں نے احتجاجاً کیا والک آؤٹ

یہاں کے ضلعی عدالت کے ایک جج نے امبیڈ کی کر تصویر کو ہٹانے کا مطالبہ کرتے ہوئے پرچم کشائی کی رسم ادا کرنے سے انکار کرنے کا واقع سوشیل میڈیا پر تیزی سے وائرل ہوتا دکھائی دے رہا ہے۔

شیموگہ میں کار اور ٹپر کی ٹکر؛ دو لوگوں کی موقع پر موت

دو افراد اُس وقت ہلاک ہوگئے جب ایک ٹپر لاری نے مخالف سمت سے جارہی ایک کارکو ٹکرماردیا۔ مہلوک کی شناخت بھدراوتی کے رہائشی  شنموگ (39) اور رام چندر(40) کے طور پر کی گئی ہے۔ حادثہ جمعرات کی صبح بنگلور۔ شموگہ نیشنل ہائی وے پربھدراوتی تعلقہ کے ماچن ہلّی میں پیش آیا۔

بنگلورو: یوم جمہوریہ کے موقع پر10ڈرائیورس اور کنڈکٹرس کو گولڈ اور سلور میڈل

کرناٹک اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کار پوریشن (کے ایس آر ٹی سی) سنٹرل دفتر میں 73ویں یوم جمہوریہ تقریب منا ئی گئی۔ کے ایس آر ٹی سی کے مینیجنگ ڈائرکٹر شیوا یوگی کلسد، آئی اے ایس نے مہاتما گاندھی،ڈاکٹر بی آر امبیڈکر اور سنگولی رائنا کی تصاویر پر پھول نچھاور کر تے ہوئے انہیں خراج عقیدت پیش ...