کرناٹک: دلت ہونے کی وجہ سے بی جے پی ایم پی کو گاؤں میں جانے سے روکا،جانچ شروع

Source: S.O. News Service | Published on 17th September 2019, 8:03 PM | ریاستی خبریں |

بنگلور،17ستمبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) ذات امتیازی سلوک کا شکار اب بی جے پی کے ایک ایم پی کو ہونا پڑا ہے۔کرناٹک کے چتردرگ سے ممبر پارلیمنٹ نارائن سوامی ٹمکر ضلع کے پاواگڑا کے گولارہٹی میں ترقیاتی کاموں کا جائزہ لینے کے لئے تھے۔اسی دوران دیہاتیوں نے انہیں اس لئے گاؤں میں گھسنے سے روک دیا کیونکہ وہ دلت ذات سے تعلق رکھتے ہیں،گاؤں والوں سے اس دوران تھوڑی بحث بھی ہوئی لیکن ممبر پارلیمنٹ کو واپس لوٹنا پڑا۔نارائن سوامی ایک نجی سروس کمپنی کے حکام کے ساتھ پینے کے صاف پانی پروجیکٹ قائم کرنے کے لئے گاؤں میں جانے کی کوشش کر رہے تھے،تبھی دیہاتیوں نے گاؤں کی سرحد پر ایم پی کی گاڑی کو روک دیا، ممبر پارلیمنٹ نے اس کی مخالفت کی،گاؤں یادو اکثریتی ہے،ایم پی نارائن سوامی نے اس واقعہ کی تصدیق کی ہے۔انہوں نے انگریزی اخبار دی ہندو کو بتایاکہ مجھے گہرا درد ہوا کیونکہ مجھے دلت ہونے کی وجہ گولاراہٹی میں جانے کی اجازت نہیں دی گئی،میں ان کے مسائل کو سننے اور انہیں رہائش گاہ اور دیگر بنیادی سہولیات فراہم کرنے کے لئے گیا تھا، کیونکہ وہ کئی سالوں سے بغیر کسی سہولت کے جھونپڑیوں میں رہ رہے ہیں۔نارئن سوامی نے کہا کہ وہ پولیس کی مدد سے گاؤں میں داخل ہو سکتے تھے لیکن انہوں نے ایسا نہیں کیا۔انہوں نے کہاکہ گولاراہٹی کے گوللا کمیونٹی کے لوگوں نے ہمیں بتایا کہ دلت ہونے کی وجہ سے پہلے بھی ایک سابق ممبر اسمبلی تھماریپا کو گاؤں میں نہیں گھسنے دیا گیا تھا۔عینی شاہدین نے بھی کہا کہ دلت ہونے کی وجہ سے ایم پی کو گاؤں میں جانے سے روکا گیا۔ایک دیہی نے کہاکہ پرانی روایت ہے، تاریخ ہے، لہذا لوگوں نے کہا کہ ان کو اجازت نہیں دی جانی چاہیے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے کورونا؛ 122 نئے کیسس، صرف گلبرگہ میں ہی 29 پوزیٹو کی تصدیق، دکشن کنڑا اور اُڈپی میں بھی بڑھ رہے ہیں معاملات

ریاست کرناٹک میں  کورونا کیسس تھمنے کا نام نہیں رہے ہیں اور ہرروز سو سے زائد معاملات درج کئے جارہےہیں ۔ آج بدھ کو ریاست میں 122 کورونا پوزیٹو کیسس کی تصدیق کی گئی ہے جس میں سب سے زیادہ گلبرگہ سے 28 معاملات سامنے آئے ہیں، یادگیر سے16، ہاسن سے 15جبکہ ضلع اُترکنڑا میں چھ،  پڑوسی ضلع ...

گجرات کے سورت سے نکلی ٹرین ، بہار کے چھپرا کے بجائے پہنچی کرناٹک کے بنگلورو: مزدورں کا حال بے حال

لاک ڈاؤن کی مدت میں مزدوروں کو ان کے وطن لوٹانے گجرات سے نکلی ایک مزدور ٹرین (شریمک ریل ) بہار پہنچنے کے بجائے کرناٹکا کے بنگلورو پہنچ کر سب کو حیرت میں ڈال دیا ہے۔ گرچہ یہ ایک مذاق لگتا ہے مگر ہے حقیقت۔ اسی طرح اور ایک خصوصی مزدور ریل گجرات کے سورت سے 1200مزدوروں کو لے کر بہار کے ...

کیا کرناٹکا میں یکم جون سے مسجد، گرجا گھر اور مندروں کو کھولنے کی دی جائے گی اجازت ؟

کورونا وائرس کے انفیکشن کو پھیلنے سے روکنے کے لئے ملک میں لاک ڈاؤن لاگو ہے۔لاک ڈاؤن 4.0 میں حکومت کی جانب سے بہت سی مراعات دی گئی ہیں، تاہم مندر، مسجد کو لے کر پابندیاں جاری ہیں لیکن حکومت نے لاک ڈاؤن میں رعایت کو لے کر ریاستوں کو بھی فیصلہ لینے کا حق دیا تھا۔دریں اثنا کرناٹک ...

حاملہ خاتون کی رپورٹ  کورونا پوزیٹو آنے پر  ہوسکوٹے کے ایک گائوں میں4 ہزار لیٹر دودھ نالی میں بہادینے کی واردات

کرناٹک کے ہوسکوٹے کے قریب چکّا کوریٹی گاؤں کے دودھ تیار کرنے والے کسانوں کو مجبوراً 4ہزار لیٹر دودھ نالی میں بہا دینا پڑا کیونکہ گاؤں میں کورونا کا مریض ہونے کی وجہ سے فیڈریشن نے دودھ لینے سے انکار کردیا۔