ایکزٹ پولس مصنوعی مودی لہر پیدا کرنے کی کوشش، وزیراعلیٰ کمار سوامی نے ووٹنگ مشینوں کی معتبریت پر سوال اٹھائے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 21st May 2019, 10:56 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 21مئی (ایس او نیوز) ملک بھر کے مختلف ایکزٹ پولس میں وزیر اعظم مودی کے اقتدار پر برقرار رہنے اور کرناٹک میں بی جے پی کے غیر معمولی مظاہرے کی پیشین گوئی کو مسترد کرتے ہوئے وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے ایک بار پھر الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کی معتبریت پر سوال اٹھایا۔ ملک بھر میں مودی لہر کی پیشین گوئی کرنے والے ماہرین کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہاکہ 23مئی کو انتخابی نتائج کے مرحلے میں بی جے پی اگر اکثریت حاصل نہ کرپائی تو اس صورت میں علاقائی پارٹیوں کو قبل از وقت رجھانے کے لئے مودی کی طرف سے مصنوعی طور پر یہ لہر چلائی گئی ہے۔انہوں نے کہاکہ تمام اپوزیشن پارٹیوں نے مودی کے اقتدار میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کی معتبریت پر سوال اٹھاتے ہوئے تمام اپوزیشن پارٹیوں نے سپریم کور ٹ سے بھی رجوع کیا اور گزارش کی تھی کہ روایتی بیالیٹ کاغذ پر انتخابات کروائے جائیں، لیکن بدقسمتی سے عدالت نے اپوزیشن پارٹیوں کے استدلال کو خاطر میں نہیں لایا۔ کمار سوامی نے کہاکہ ترقی یافتہ ممالک نے بھی روایتی بیالیٹ پیر پر ووٹنگ کے نظام کو معتبر مانا ہے، اورو ہاں یہی نظام رائج ہے۔ انہوں نے کہاکہ ایگزی پولس کا استعمال اس تاثر کو پیدا کرنے کے لئے کیا جارہاہے کہ ملک میں اب بھی مودی لہر چل رہی ہے۔ جبکہ حقیقت کچھ اور ہی ہے۔ عوام کے فرمان کو مصنوعی طور پر موڑنے کی جو کوشش کی گئی ہے اس میں بی جے پی شاید ہی کامیاب ہو پائے۔ کرناٹک میں بی جے پی کو 21سیٹوں پر کامیابی کے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کمار سوامی نے کہاکہ ایسے دور میں جبکہ پورا ملک مودی لہر کی لپیٹ میں تھا، کرناٹک میں بی جے پی 17سیٹوں پر کامیاب ہوئی،اب جبکہ سارے ملک میں عوام مودی سے ناراض ہیں یہ دعویٰ کرنا کہ بی جے پی 21سیٹوں پر کامیاب ہورہی ہے خام خیالی ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

آئی ایم اے میں سرمایہ کاری کرکے دھوکہ کھانے والے متاثرین کی قانونی مدد کے لئے اے پی سی آر کی خدمات دستیاب

آئی ایم اے میں سرمایہ کاری کرکے دھوکہ کھانے والے متاثرین کی قانونی رہنمائی اور اُن کی  مدد کے لئے  اسوسی ایشن فور پروٹیکشن آف سیول رائٹس  (اے پی سی آر)  کی خدمات حاصل کی جاسکتی ہے۔جن  لوگوں نے  اپنی چھوٹی چھوٹی سرمایہ  کاری  اس کمپنی میں کی تھی اور اب وہ کنگال ہوچکے ہیں، اے پی ...

جندال اسٹیل کمپنی معاملہ سے متعلق حکومت نے سب کمیٹی تشکیل دی، کے پی سی سی سے استعفیٰ دینے کی خبرو ں میں کوئی سچائی نہیں: دنیش گنڈو راؤ

پردیش کانگریس کمیٹی(کے پی سی سی) صدر دنیش گنڈو راؤ نے کہا کہ جندال کمپنی کے لئے زمین فروخت کرنے کے معاملہ میں ریاستی حکومت نے سب کمیٹی تشکیل دی ہے۔

آئی ایم اے معاملہ میں نرم رویہ اختیار کرنے کاسوال پیدا نہیں ہوتا: ضمیر احمد خان

آئی مانیٹری اڈوائزری (آئی ایم اے) نامی پونزی کمپنی کے دھوکہ دہی معاملہ میں نرم رویہ اختیار کئے جانے کا سوال پیدا نہیں ہوتا۔ خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) کی جانب سے تحقیقات جاری ہیں۔اس پس منظر میں بی جے پی کی جانب سے عائد کئے جارہے الزامات بکواس ہیں۔

آئی ایم اے گھپلہ کی جانچ سی بی آئی کے ذریعہ کروانے عبدالعظیم کا مطالبہ؛ متاثرین کا ہرممکن تعاون کرنے ایڈی یورپااور شوبھا کا تیقن

آئی ایم اے کے متاثرین کو انصاف اور ان کا حق دلانے کے سلسلہ میں آج شہر کے آنند راؤ سرکل پر واقع گاندھی مجسمہ کے روبرو بی جے پی مائنارٹی مورچہ کے ریاستی صدر عبدالعظیم کی صدارت میں ایک اہم اجلاس طلب کیا گیا تھا،