کشمیر کو لے کر ٹرمپ کے ’ہندو -مسلمان‘ بیان پر اویسی برہم 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 22nd August 2019, 12:02 AM | ملکی خبریں |

 نئی دہلی،21/ اگست (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) جموں و کشمیر کو لے کر امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ہندو مسلمان والے بیان پر آل انڈیا مجلس اتحادالمسلمین کے چیف اور حیدرآباد سے ممبر پارلیمنٹ اسد الدین اویسی نے مودی حکومت کی تنقید کی ہے۔  اویسی نے پوچھا ہے کہ کیا بھارت میں ہندو مسلمان ایک مسئلہ ہے؟ اگر نہیں تو حکومت خاموش کیوں ہے۔اسد الدین اویسی نے ٹوئٹ کر کے کہا ہے کہ کیا بھارت میں ہندو مسلمان مسئلہ ہے؟ اگر نہیں تو ڈونالڈ ٹرمپ کے بیان پر حکومت خاموش کیوں ہے؟ واضح ہو کہ ڈونالڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر بھارت اور پاکستان کے درمیان ثالثی کی خواہش ظاہر کی ہے۔ ثالثی کی پیشکش کے درمیان انہوں نے متنازعہ بیان دیتے ہوئے کہا کہ کشمیر انتہائی پیچیدہ جگہ ہے۔ یہاں ہندو اور مسلمان بھی ہیں اور میں نہیں کہہ سکتا کہ:’ان کے درمیان اتفاق ہے۔ ثالثی کے لئے جو بھی بہتر ہو سکے گا، میں وہ کروں گا۔اس سے پہلے کل اسد الدین اویسی نے وزیر اعظم نریندر مودی اور ٹرمپ کے درمیان فون پر کشمیر مسئلے کو لے کر بات چیت پر بھی سوال کھڑے کیے تھے۔ اسد الدین اویسی نے کہا تھا کہ ہمارے وزیر اعظم نے فون پر کشمیر کو لے کر ڈونالڈ ٹرمپ سے بات چیت کی۔ ٹرمپ ہمارے لئے کیا ہے؟ کیا وہ پوری دنیا کے پولیس اہلکار ہیں یا وہ کوئی چودھری ہیں؟انہوں نے کہا کہ کشمیر ایک باہمی مسئلہ ہے اور کسی تیسری پارٹی کو مداخلت کرنے کی اجازت نہیں ہے۔غور طلب ہے کہ 19 اگست کو وزیر اعظم مودی نے ڈونالڈ ٹرمپ سے فون پر بات چیت کر ان سے پاکستان کی جانب سے دیئے جا رہے بھارت مخالف بیانات سے آگاہ کیا تھا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ہندوؤں کو اقلیتی درجہ دینے کا مطالبہ کرنے والی عرضی سپریم کورٹ سے خارج

سپریم کورٹ نے لفظ اقلیت کی تعریف کرنے اور ملک کی 9 ریاستوں میں اقلیتوں کی شناخت کےلئے ہدایت جاری کرنے سے متعلق عرضی جمعرات کو خارج کر دی۔ عرضی میں مطالبہ کیا گیا تھا کہ جن ریاستوں میں ہندوؤں کی تعداد کم ہے وہاں انہیں اقلیتی درجہ فراہم کیا جائے۔

اپہار آتشزدگی سانحہ: متاثرین کی ’كيوریٹو عرضی‘ خارج، انسل برادران نہیں جائیں گے جیل

سپریم کورٹ نے اپہار سینما آتشزدگی سانحہ میں لاپروائی کے مجرم اورملک کے جانےمانے بلڈر انسل برادران کو بڑی راحت دیتے ہوئے آتشزدگی شکار کی ایسوسی ایشن کی كيوریٹو عرضی خارج کردی ہے۔ اب سشیل انسل اور گوپال انسل کو جیل نہیں جانا پڑے گا۔

دہلی: ڈاکٹر کفیل کی رہائی کے لئے یوپی بھون پر مظاہرہ، جامعہ کے متعدد طلبا پولیس حراست میں

اتر پردیش میں سیاسی اور سماجی کارکنان کے خلاف استعمال کیے جانے والے سخت قوانین کے خلاف جامعہ ملیہ اسلامیہ کے طلبہ نے جمعرات کو یہاں اتر پردیش بھون کا گھیراؤ کرنے کی کوشش کی لیکن پولیس نے انھیں حراست میں لے لیا۔

کیرالہ: وزیر اعلیٰ وجین کا سڑک حادثے میں 20 افراد کی موت پر تعزیت کا اظہار

 کیرالہ کے وزیراعلی پنارائی وجین نے جمعرات کو تمل ناڈو کے تروپور ضلع کے اویناشی کے نزدیک قومی شاہراہ پرایک لاری کے کیرالہ ریاستی ٹرانسپورٹ کارپوریشن (کے ایس آرٹی سی) کی بس سے ٹکرانے کی وجہ سے ہوئے حادثے میں 20 افراد کی موت پر گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔

نربھیا کیس: مجرم ونے شرما نے خود کو بتایا شدید ذہنی مریض، عدالت میں داخل کی عرضی

نربھیا عصمت دری اور قتل کیس کے قصورواروں میں سے ایک ونے تہاڑ جیل میں اپنے کمرے کی دیوار میں سر مار کر خود کو زخمی کر لیا اور اب عدالت میں عرضی دائر کی ہے کہ اس کی ذہنی حالت ٹھیک نہیں ہے لہٰذا اس کا علاج کروایا جائے۔