ہریانہ میں سرکاری اداروں کو احتجاجاًدودھ100؍ روپے لیٹر بیچنے کی اپیل

Source: S.O. News Service | Published on 28th February 2021, 12:55 PM | ملکی خبریں |

چندی گڑھ ،28؍فروری (ایس او نیوز؍ایجنسی) زرعی قوانین  کے خلاف کسانوں کے احتجاج کو مودی حکومت  کے ذریعہ پوری طرح نظر انداز کردیئے جانے  کے  بعد احتجاج کا نیا طریقہ تجویز کرتے ہوئے ہریانہ کی کھاپ پنچایت نے کسانوں سے دودھ خریدنے والی سرکاری کوآپریٹیو سوسائٹیوں کو دودھ 100؍ روپے لیٹر فروخت کرنے کی اپیل کی ہے۔ یہ اپیل  حصار میں منعقدہ سترول کھاپ میں پیش کی گئی۔

 انہوں نے بہرحال وضاحت کی کہ عوام کو دودھ  55؍ سے 60؍ روپے فی لیٹر کی موجودہ قیمت پر ہی ملتا رہےگا۔  کھاپ پنچایت کے لیڈر پھول کمار پیتوار نے بتایا کہ’’اس کھاپ نے ایک فیصلہ کیا ہے جس میں ہم نے کسانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ حکومت کی کوآپریٹیو سوسائٹیو ں کو دودھ100؍ روپے لیٹر کی قیمت پر فروخت کریں۔عام آدمی کیلئے یہ قیمت 55؍ سے 60؍ روپے فی لیٹر ہی رہےگی۔‘‘ا نہوں  نے کہا کہ ’’ہم حکومت کو جگانا چاہتے ہیں کہ وہ زرعی قوانین کو واپس لیں اور ایندھن کی قیمتیں کم کریں۔ اس بیچ زرعی قوانین کے خلاف جاری کسانوں کی تحریک   کے ساتھ ہی اب نجکاری  کے خلاف بھی ایک منظم تحریک کا خاکہ تیار کیا جا رہا ہے ۔

خاص بات یہ ہے کہ پرائیویٹائیزیشن کے خلاف نہ صرف اپوزیشن سے تعلق رکھنے والی یونینوں اور لوگوں کی طرف سے آواز بلند ہونے والی ہے بلکہ اس میں بی جے پی کی تنظیم بھارتیہ مزدور سنگھ کی شرکت ہونے جا رہی ہے ۔ملک کی ٹریڈ یونینوں کی طرف سے خاکہ تیار کیا جا رہا ہے اور جلد ہی اس کے نتیجہ میں ایک مسلسل مہم سامنے آسکتی ہے ۔ گزشتہ 5؍ فروری کو اسی قسم کی ایک خبر نے سب کو چونکایا تھا جب بینکوں ، انشورنس کمپنیوں اوردیگر سرکاری کمپنیوں کو تقسیم کرنے کی تجویز حکومت کی طرف سے پاس کی گئی تھی تو اس وقت اپوزیشن کے ساتھ ساتھ بھارتیہ مزدور سنگھ نے بھی اس کی پرزور مخالفت کی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

ہانک کانگ نےہندوستان،پاکستان اور فلپائن کی پروازوں پر لگائی دو ہفتوں کی پابندی

کورونا وبا کےپھیلاؤ کےپیش نظر ہانگ کانگ نے فیصلہ کیا ہےکہ وہ اگلےدوہفتوں کےلئےہندوستان، پاکستان اور فلپائن سےآنےوالی پروازوں پر پابندی لگارہا ہے۔ہانگ کانگ نےان تین ممالک سےآنےوالی تمام پرواز یں معطل کر دی ہیں۔ہانک کانگ کےذمہ داران اس کی وجہ کووڈ19 کے ایشیائی ممالک میں ...

مدھیہ پردیش میں کووڈ کا قہر، 30 اپریل تک کورونا کرفیو کا نفاذ

مدھیہ پردیش میں حکومت کی تمام کوششوں کے باوجود کورونا کا قہرجاری ہے۔ ریاست میں کورونا کے ایکٹو مریضوں کی تعداد جہاں اڑسٹھ ہزار کو تجاوز کر گئی ہیں وہیں پچھلے چوبیس گھنٹےمیں ریاست میں کورونا کے بارہ ہزار دو سو اڑتالیس نئے معاملے درج کئے گئے ہیں ۔

کووڈ بحران سے نمٹنےکےلیے سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے وزیراعظم مودی کو دیئے یہ 5اہم مشورے

ہندوستان میں عالمی وبا کورونا وائرس کے مثبت معاملوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کے بارے میں ہر حلقے سے تشویش کا اظہار کیاجارہا ہے۔ اسی ضمن میں ملک کے سابق وزیراعظم، کانگریس کے سینئر ترین رہنما اور معروف ماہر معاشیات ڈاکٹر منموہن سنگھ  نے وزیراعظم نریندر مودی کو کووڈ۔19 کے بحران سے ...

بہار میں15 مئی تک اسکول ، کالج اور تمام مذہبی مقامات بند ،رات کا کرفیو نافذ

ہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے ریاست میں کورونا کے تیزی سے بڑھ رہے معاملوں پر لاک ڈاﺅن کا اشارہ دیتے ہوئے باہر سے آنے والے لوگوں سے جلد سے جلد لوٹنے کی اپیل کرتے ہوئے آج کہاکہ وبا کی روک تھام کیلئے فی الحال ریاست میں ” رات کا کرفیو“ سرکاری دفاتر میں کام کی مدت کم کرنے ، سبھی ...