گیان واپی مسجد تنازعہ: کورٹ کمشنر بدلنے کا مطالبہ خارج، 17 مئی سے پہلے سروے مکمل کرنے کا حکم

Source: S.O. News Service | Published on 12th May 2022, 10:06 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،12؍مئی (ایس او نیوز؍ایجنسی) وارانسی میں گیان واپی مسجد کے سروے سے متعلق عدالتی فیصلہ منظر عام پر آ چکا ہے۔ عدالت نے گیان واپی مسجد کے سروے کے لیے مقرر کیے گئے کورٹ کمشنر اجئے کمار مشرا کو ہٹائے جانے سے انکار کر دیا ہے۔ حالانکہ عدالت نے ایڈووکیٹ کمشنر کے ساتھ دو مزید وکیل کو سروے کمیٹی میں شامل کیا ہے۔ ساتھ ہی عدالت نے گیان واپی مسجد کا سروے 17 مئی سے قبل کرانے کا حکم صادر کیا ہے۔ عدالت نے 17 مئی کو سروے کی آئندہ رپورٹ دینے کے لیے کہا ہے۔

گیان واپی معاملے میں ہندو فریق کے وکیل مدن موہن یادو نے کہا کہ ’’عدالت نے فیصلہ دیا ہے کہ کمشنر اجئے مشرا نہیں بدلے جائیں گے اور ساتھ میں تالا کھول کر کارروائی کرنے کا حکم دیا ہے۔ عدالت نے 17 مئی تک رپورٹ مانگی ہے۔ اگر کارروائی میں کوئی مداخلت کرتا ہے تو اس پر ایف آئی آر کرنے کا حکم بھی دیا گیا ہے۔‘‘

قابل ذکر ہے کہ مسلم فریق نے 56(سی) کی بنیاد پر کورٹ کمشنر کو بدلنے کا مطالبہ کیا تھا جسے سول جج نے خارج کر دیا ہے۔ 61 (سی) کی بنیاد پر مسجد کے اندر سروے کی مسلم فریق نے مخالفت کی تھی۔ بہر حال، عدالت نے دو مزید اسپیشل کمشنر مقرر کیے ہیں جن کے نام وشال سنگھ اور اجئے پرتاپ سنگھ ہیں۔ وشال سنگھ کی غیر موجودگی میں اجئے پرتاپ معاون کمشنر ہوں گے۔ اس سے پہلے گیان واپی مسجد اور شرنگار گوری مندر تنازعہ میں ضلع عدالت نے تین دنوں تک چلی سماعت کے بعد فیصلہ محفوظ رکھ دیا تھا۔

واضح رہے کہ 18 اگست 2021 کو عدالت میں شروع ہوئے اس تنازعہ کے فریقین کا کہنا ہے کہ گیان واپی مسجد احاطہ میں ماں شرنگار گوری، بھگوان گنیش، ہنومان، آدی وشیشور، نندی جی اور دیگر دیوی-دیوتاؤں کی مورتیاں ہیں۔ یہ سبھی دیوی دیوتا پلاٹ نمبر 9130 میں موجود ہیں جو کاشی وشوناتھ کوریڈور سے ملحق ہے۔ عرضی دہندہ کا عدالت سے مطالبہ ہے کہ مسجد کی انتظامیہ کمیٹی ان مورتیوں کو نقصان نہ پہنچائے۔ ساتھ ہی ہندوؤں کو یہاں دَرشن اور پوجا کی اجازت ملے۔ ہندو فریق کی عرضی میں یہ مطالبہ بھی کیا گیا تھا کہ ایک کمیشن تشکیل کر کے عدالت مسجد احاطہ میں دیوی دیوتاؤں کی مورتیوں کی موجودگی کو یقینی کرے۔ اس سلسلے میں ہی کورٹ کمشنر کی تقرری کر عدالت نے مسجد احاطہ کی مبینہ ویڈیوگرافی کرانے کا حکم دیا تھا۔

دوسری طرف مسلم فریق ہندوؤں کے اس دعوے کو سرے سے خارج کر رہا ہے۔ مسلم فریق کے وکیل ابھئے یادو نے کہا کہ ہم یہ مانتے ہیں کہ شرنگار گوری کی مورتی ہے، لیکن وہ مسجد کی مغربی دیوار سے باہر ہے۔ ایسے میں مسجد میں جا کر سروے کی ضرورت ہی نہیں ہے۔ وہ یہ بھی کہتے ہیں کہ عدالت نے مسجد کے اندر جا کر سروے کرنے کا کوئی حکم نہیں دیا ہے۔ انھوں نے شرنگار گوری مندر کی موجودگی والے پلاٹ نمبر 9130 کی صورت حال پر بھی سوال اٹھایا ہے اور کہا ہے کہ عرضی دہندگان نے اس کا کوئی خاکہ بھی عدالت میں جمع نہیں کیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

حجاب کیس: ججوں کو دھمکیاں دینے والے شخص کی درخواست ضمانت مسترد

بنگلورو کی ایک سیشن عدالت نے تمل ناڈو کے ترونیل ویلی سے تعلق رکھنے والے رحمت اللہ کی ضمانت کی درخواست مسترد کر دی ہے، جو حال ہی میں کلاس رومز میں حجاب پہننے پر فیصلہ سنانے والے کرناٹک ہائی کورٹ کے ججوں کی جان کو مبینہ طور پر خطرے میں ڈالنے کے الزام میں عدالتی حراست میں ہے۔ سٹی ...

اب کارڈ کے بغیر بھی اے ٹی ایم سے رقم نکالنا ہوا ممکن

آر بی آئی نے نیا اصول نافذ کر دیا ہے۔ اگر آپ کے پاس بینک کارڈ نہیں ہے اور آپ اے ٹی ایم سے رقم نکالنا چاہتے ہیں، تب بھی نکال سکتے ہیں۔ آر بی آئی نے تمام بینکوں سے کہا ہے کہ وہ کارڈ استعمال کیے بغیر رقم نکالنے کی سہولت فراہم کریں۔ تاہم،ایس بی آئی سمیت کچھ منتخب بینک پہلے ہی یہ سہولت ...