سرکار کی منصوبہ بندی سے چھتیس گڑھ میں کھیتی-کسانی کے تئیں دلچسپی بڑھی: بھوپیش بگھیل

Source: S.O. News Service | Published on 25th February 2021, 10:09 PM | ملکی خبریں |

رائے پور،25؍فروری(ایس او نیوز؍ایجنسی) چھتیس گرھ کے وزیراعلیٰ بھوپیش بگھیل نے کہا ہے کہ ریاستی حکومت کے پروجیکٹس اور منصوبہ بندی کے سبب چھتیس گڑھ میں کسانوں کی کھیتی-کاشت کاری کے تئیں دلچسپی بڑھی ہے۔ بھوپیش بگھیل نے اسمبلی میں آج رواں مالی سال کے 505 کروڑ 700 روپیے تیسرے ضمنی بجٹ پر ہوئی بحث کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے ایوان کو یقین دہانی کروائی کہ کسانوں کو راجیو گاندھی کسان نیائے یوجنا کی چوتھی قسط اس مالی سال کے ختم ہونے کے پہلے پہلے مل جائے گی۔ رواں مالی سال کا اہم بجٹ 95 ہزار 650 کروڑ روپیے کا تھا۔ اول، دوم اور سوم ضمنی بجٹ کو ملا کر بجٹ اب ایک لاکھ دو ہزار 349 کروڑ روپیے ہوگیا ہے۔

بھوپیش بگھیل نے کہا کہ گزشتہ حکومت نے کسانوں کی قرض معافی اور ہر سال بونس دینے کا وعدہ کیا تھا، جسے پورا نہیں کیا گیا۔ گزشتہ حکومت کی مدت کار میں چھتیس گڑھ میں کسانی کا دائرہ مسلسل سکڑتا جا رہا تھا۔ کم از کم امدادی قیمت پر دھان بیچنے کے لیے 15 لاکھ کسانوں نے رجسٹریش کروایا تھا، جس میں سے محض 12 لاکھ کسانوں نے دھان فروخت کیا تھا۔ رواں سال 21 لاکھ کسانوں نے ایم ایس پی پر دھان بیچنے کے لیے رجسٹریشن کرایا جس میں سے ساڑھے 20 لاکھ کسانوں نے دھان فروخت کیا تھا۔ اس بار ہماری مدت کار میں دھان کے رقبے میں 21 لاکھ ہیکٹیئر تک کا اضافہ بھی ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت چھتیس گڑھ کے ساتھ تفریق کر رہی ہے۔ جب سے چھتیس گڑھ میں نئی حکومت بنی ہے مرکزی حکومت کی جانب سے مرکزی محصولات میں ریاست کے حصے میں 14 ہزار 73 کروڑ روپیے کی کمی کی گئی ہے۔ مرکزی حکومت کے نئے بجٹ میں ایکسائز ڈیوٹی کم کرنے اور پٹرول-ڈیزل میں چار فیصد سیس لگانے کا التزام کیا گیا ہے۔ سیس کی پوری رقم مرکز کو جائے گی، جس سے چھتیس گڑھ کو 1000 کروڑ روپیے کا نقصان ہوگا۔ 14 ہزار 73 کروڑ روپیے کی رقم اگر مل جاتی تو ہمیں قرض لینے کی ضرورت ہی نہیں ہوتی۔ بھوپیش بگھیل کے جواب کے بعد ایوان نے ضمنی مطالبات کو منظوری دے دی۔

ایک نظر اس پر بھی

شعبہ اردوجامعہ ملیہ اسلامیہ کی جانب سے ممتاز ادیب و شعرا سلطان اختر، انجم عثمانی، مشرف عالم ذوقی، مناظر عاشق ہرگانوی اور سید نورالہدیٰ کے سانحہ ارتحال پر تعزیتی جلسے کا انعقاد

شعبہ اردوجامعہ ملیہ اسلامیہ کی جانب سے عظیم آباد پٹنہ میں مقیم بزرگ و ممتاز شاعر سلطان اختر، عہد حاضر کے معروف فکشن نگار اور صحافی انجم عثمانی، دور حاضر کے ممتاز ناول نگار اور بے باک صحافی مشرف عالم ذوقی، کثیرالتصانیف مصنف پروفیسر مناظر عاشق ہرگانوی اور اردو میں تاریخی، ...

فضول ہے یہ بحث کہ لاک ڈاؤن کب لگنا چاہئے! حالات انتہائی خراب

سمجھ نہیں آ رہا کہ کورونا وباکو روکنے کے لئے کس بات کو مانا جائے اور کس کو نہیں! کبھی اس وبا کو روکنے کے لئے لاک ڈاؤن اتنا ضروری ہو جاتا ہے کہ اگر ملک میں چند سو کیسز بھی ہوں تو لاک ڈاؤن نافذ کر دیا جاتا ہے اور اس بات کا بھی خیال نہیں کیا جاتا کہ مہاجر مزدوروں کا کیا حال ہوگا؟ ان ...

دہلی میں لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد مہاجر مزدوروں میں ایک بار پھر افراتفری ، وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کی عوام سے اپیل ، کہا ؛ دہلی چھوڑ کر نہ جائیں ، یہ لاک ڈاؤن مختصر وقفے کیلئے ہے

دہلی میں لاک ڈاؤن کا اعلان ہوتے ہی ایک بار پھر دہلی کے مہا جر مزدوروں کو وہ پرانے دن یاد آگئے جب گزشتہ سال اچانک ملک بھر میں لاک ڈاؤن لگا دیا گیا تھا۔

حکومت ٹیکہ بنانے والی کمپنیوں کو 4500 کروڑ روپئے پیشگی دے گی ، ٹیکوں کا پروڈکشن بڑھانے اور ٹیکہ کاری کو رفتار دینے کیلئے اہم فیصلہ ، وزیر اعظم کی کمپنیوں کے ذمہ داروں سے میٹنگ

مودی حکومت نے کورونا کے سبب ملک میں پھیلی ابتری پر اب سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوۓ ٹیکہ بنانے والی کمپنیوں سے ان کا پروڈکشن بڑھانے کی اپیل کی ہے۔ ساتھ ہی اس معاملے میں 45 سوکروڑ روپئے  پیشگی  کے طور پرادا کرنے کا فیصلہ کیا ہے تا کہ یہ کمپنیاں اپنے ٹیکوں کے پروڈکشن میں اضافہ ...

مہاراشٹر میں مکمل لاک ڈاؤن کی دستک ، نئی پابندیاں ، دکانیں صبح 7 سے 11 بجے تک ہی کھلی رہی گی

مہاراشٹر میں جنتا کرفیو کے نفاذ کے ایک ہفتہ بعد بھی حالات میں سدھار نہ آنے اور کورونا کے نئے معاملات میں مسلسل اضافے کو دیکھتے ہوئے ریاست میں مکمل لاک ڈاؤن کی دستک سنائی دینے لگی ہے جس کے تعلق سے وزیراعلیٰ اُ دھوٹھا کرے بدھ کو حتمی  اعلان کر سکتے ہیں۔ لاک ڈاؤن کے امکان کو تقویت ...

ہندوستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 259170 نئے کورونا کے معاملے، ایک دن میں سب سے زیادہ اموات

 کورونا وائرس کے معاملوں میں اضافہ کا سلسلہ لگاتار جاری ہے۔ مرکزی وزارت صحت کی طرف سے جاری اعدادوشمار کے مطابق منگل کے روز ملک میں ایک بار پھر ڈھائی لاکھ سے زیادہ کیسز کی تصدیق کی گئی۔ یہ لگاتار چوتھا دن ہے جب ملک میں ڈھائی لاکھ سے زہادہ کیسز کی تصدیق کی گئی۔