مذہبی آزادی پر حملہ کے دور میں جارج کی کمی محسوس ہے:سدارامیا

Source: S.O. News Service | Published on 27th September 2022, 12:36 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو ، 27؍ستمبر(ایس او  نیوز)سابق ریاستی وزیر اعلیٰ واپوزیشن لیڈر سدارامیا نے کہا کہ ملک میں شخصی اور مذہبی آزادی چھینی جارہی ہے ان مشکل حالات میں جارج فرنانڈیز کی کمی محسوس ہورہی ہے۔

یہاں کونڈ جی بسپا ہال میں سابق مرکزی وزیرآنجہانی جارج فرنانڈیز کی سوانح حیات پر لکھی گئی کتاب ”دی لائف اینڈ ٹائمس آف جارج فرنانڈیز“ کے رسم اجراء تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سدارامیا نے اس خیال کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ ان کی سیاسی زندگی کو پروان چڑھانے میں جارج کا رول اہم ہے اور ان کی کتاب قوم کے نام منسوب کرنے سے خوشی محسوس ہورہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ رہنما پروفیسر ایم ڈی ننجنڈا سوامی نے انہیں سیاست میں داخل کیا اور ان کی خواہش پر سماج وادی پارٹی میں شامل ہوا جہاں فرنانڈیز سے ملاقات ہوئی۔انہوں نے بتایا کہ 1980ء میں پہلی مرتبہ انہوں نے انتخابات میں حصہ لیا جس کے ذمہ دار جارج فرنانڈیز تھے۔

سدارامیا نے بتایا کہ جس وقت مرار جی دیسائی وزیر اعظم تھے جارج فرنانڈیز وزیر صنعت تھے اور اس وقت انہوں نے میسور کا دورہ کیا جہاں میں نے اپنے دوستوں کے ساتھ کوکا کولا کمپنی کے خلاف جدوجہد کی تھی اور کوکا کولا استعمال نہ کرنے کی قسم کھائی تھی اور آج تک کوکا کولا کا استعمال نہیں کیا۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مؤرخ رام چندرا گوہا نے کہا کہ جارج فرنانڈیز زندگی بھر سماج واد سے جڑے رہے۔ خالی ہاتھ ممبئی روانہ ہوئے اور وہاں مزدور تنظیم قائم کرکے سیاست میں قدم رکھا۔ سپریم کورٹ کے وظیفہ یاب جسٹس وینکٹا چلیا نے کہا کہ جارج فرنانڈیز کی زندگی موجودہ سیاستدانوں کے لئے مشعل راہ ہے۔

اس موقع پر سابق لوک آیکتہ جسٹس سنتوش ہیگڑے، سابق وزیرایس کے کانتا، حلقہ مزدور کسان پنچایت کے قومی صدر مائیکل فرنانڈیز،سینئر صحافی بی ایم حنیف ودیگر حاضر رہے۔

ایک نظر اس پر بھی

گرام پنچایتوں کیلئے آئین کی نقل تقسیم: وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی

وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے کہا کہ ریاست کے تمام گرام پنچایتوں کی لائبریریوں میں آئین کی نقل کے ساتھ گرام پنچایت 73اور 74ویں ترمیم، پنچایت راج قوانین کی نقول بھی روانہ کرکے وہاں بھی آئین پر مبنی انتظامیہ فراہم کرنا حکومت کا مقصد ہے۔

ووٹر ڈاٹا چوری معاملہ: 4 بی بی ایم پی افسروں سمیت اب تک11افراد گرفتار

ووٹرلسٹوں میں مبینہ ہیراپھیری،چھیڑ چھاڑ اور چیلومے نامی ادارے کے کارکنوں کو سرکاری عہدیداروں کا فرضی شناختی کارڈ دینے کے معاملے کی سختی سے جانچ کرتے ہوئے شہر کی پولیس نے اب تک اس کیس میں 11 افراد کو گرفتار کیا ہے -

بنگلورو: بی بی ایم پی بجٹ میں عوام کو شامل کرنے”مائی سٹی۔مائی بجٹ“ مہم

بروہت بنگلور مہا نگر پالیکے(بی بی ایم پی) بجٹ میں عوامی مشوروں کو شامل کرنے کے مقصد سے جنا گراہا نامی رضاکارانہ ادارے کی جانب سے ہر سال ”مائی سٹی۔مائی بجٹ“(اپنا شہر۔اپنا بجٹ) مہم چلائی جاتی ہے جس کے تحت بی بی ایم پی کے تمام وارڈز میں مہم کے دوران مقامی افراد سے مشورے حاصل کر کے ...

بیلگاوی کرناٹک میں رہے یامہاراشٹر میں کیافرق پڑنے والاہے: کمارسوامی

سابق وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے بی جے پی کوشدیدتنقیدکانشانہ بناتے ہوئے کہاکہ یکساں سیول کوڈ نافذ کرنے جا رہے بی جے پی والو، کیا آپ یہ نہیں کہہ رہے کہ ہم سب ہندوستانی ہیں؟ اگر ایسا ہے تو بیلگام یہاں کرناٹک میں رہے یامہاراشٹر میں کیافرق پڑنے والاہے،ہم سب ہندوستانی ہیں؟

بیلگام: مدرسہ کی 4طالبات سیلفی لینےکے دوران ندی میں غرق؛ ایک کو بچالیا گیا

بیلگام سرحد سے متصل ، مہاراشٹرا کے کتواڑ فالس میں سیلفی لینے کے دوران مدرسہ میں زیر تعلیم  4طالبات توازن کھو کر غرق ہوگئیں  اور اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھیں۔ واقعہ سنیچر کو پیش آیا۔ حادثے میں ایک طالبہ کو بچالیا گیا ہے، مگر اس کی حالت نازک بتائی گئی ہے۔

پونے : پھر گرم ہوا کرناٹکا - مہاراشٹرا سرحدی تنازعہ - کرناٹکا کی بسوں پر پوتا گیا کالا رنگ - مہاراشٹرا کی حمایت میں لکھے گئے نعرے

کرناٹکا اور مہاراشٹرا کے بیچ جو سرحدی تنازعہ ہے اس پر کرناٹکا کے وزیر اعلیٰ بسوا راج بومئی نے جو بیان دیا تھا اس کے خلاف مہاراشٹرا کے کئی علاقوں میں مراٹھا تنظیموں نے احتجاجی مظاہرے کیے ۔ اسی کے ساتھ  کے ایس آر ٹی سی  کی بین الریاستی بسوں پر بعض جگہ کالا رنگ پوتا گیا اور اس پر ...