دہلی میں کارپوریشن-حکومت کی ملی بھگت سے بند عمارتوں میں چل رہے کاروبار: کانگریس

Source: S.O. News Service | Published on 19th September 2021, 12:05 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،18؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) دہلی پردیش کانگریس نے بی جے پی حکمراں میونسپل کارپوریشن اور دہلی کی کیجریوال حکومت کو کٹہرے میں کھڑا کرتے ہوئے ان پر بدعنوانی کا الزام عائد کیا ہے۔ ریاستی کانگریس صدر انل کمار نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کی شہ پر کمرشیل علاقہ قرول باغ میں ایک مال سرکاری کاغذات میں سیل ہونے کے بعد بھی چل رہا ہے۔

انل کمار نے بتایا کہ 2012 میں قوانین کی خلاف ورزی کے سبب قرول باغ میں ایک مال کو سیل کیا گیا تھا، لیکن ب جے پی اور عآپ کی ملی بھگت سے آج اس مال میں کمرشیل سرگرمیاں بے خوف چل رہی ہیں۔ انھوں نے مطالبہ کیا کہ بغیر اجازت کے سرکاری سیلنگ کو غیر قانونی طریقے سے توڑنے والوں کے ساتھ حکم عدولی کی مجرمانہ کارروائی ہونی چاہیے اور اس میں شامل کارپوریشن اور دہلی حکومت کے افسروں کی بھی جانچ ہونی چاہیے۔

انل کمار کے مطابق دہلی میں صرف قرول باغ واقع مال ہی نہیں، کتنی ہی ایسی ملکیتیں ہیں جو آفیشیل طور پر کاغذوں میں بند ہونے کے باوجود ان میں کمرشیل سرگرمیاں بدعنوانی کے سبب برسرعام چل رہی ہیں، جس میں بی جے پی اور عام آدمی پارٹی کے لیڈروں کی مکمل ملی بھگت ہے۔

دہلی کانگریس سربراہ نے سوال پوچھتے ہوئے کہا کہ دہلی میں پانی اور بجلی تو دہلی حکومت دستیاب کراتی ہے، تو کیسے ایک بند دکان اور مال کو پانی اور بجلی کی سہولت مل رہی ہے؟ یہ سہولتیں صرف پیسے کے لین دین کے ذریعہ ہی ممکن ہے۔ اس سے واضح ہے کہ سیل عمارتوں میں کمرشیل سرگرمیاں چلنے میں میونسپل کارپوریشن اور دہلی حکومت کی ملی بھگت ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

سماج وادی پارٹی اور راجبھر کی سہیل دیو پارٹی کے درمیان اتحاد

 اسمبلی انتخابات سے قبل اترپردیش میں تیزی سے بدلتے سیاسی منظر نامے کے درمیان سال 2017 میں بی جے پی حکومت کا حصہ رہنے والی سہیل دیو سماج پارٹی نے بدھ کو مین اپوزیشن سماج وادی پارٹی کے ساتھ ہاتھ ملا کر بی جے پی کو اقتدار سے بے دخل کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔

بی جے پی کو بے دخل کرنے لئے سیکولر پارٹیاں متحد ہوں: شیوپال یادو

 پرگتی شیل سماج پارٹی (لوہیا) کے سربراہ شیوپال یادو نے کہا کہ بی جے پی کو اترپردیش کے اقتدار سے بے دخل کرنے کے لئے یکساں نظریات کی حامل سبھی سیکولر پارٹیوں کو ایک ساتھ آنا ہوگا۔ وہ اس کے لئے سماج وادی پارٹی سمیت کسی بھی پارٹی سے اتحاد کرنے کو تیار ہیں۔

شوپیاں تصادم: ایک مزدور کی ہلاکت میں ملوث ملی ٹنٹ سمیت دو ملی ٹنٹ ہلاک، آپریشن جاری

جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیاں کے درگڈ علاقے میں بدھ کی صبح سیکورٹی فورسز اور ملی ٹنٹوں کے درمیان چھڑنے والے مسلح تصادم میں دو ملی ٹنٹ ہلاک ہوئے ہیں جبکہ آپریشن ابھی جاری ہے۔ مہلوک ملی ٹنٹوں میں سے ایک کی شناخت عادل احمد وانی کے بطور کی گئی ہے جو پلوامہ کے لتر علاقے میں ایک غریب ...

اتراکھنڈ: شدید بارش سے اب تک 46 افراد ہلاک، 11 لاپتہ

اتراکھنڈ میں تقریباً 48 گھنٹے ہوئی موسلا دھار بارش اور لینڈ سلائیڈنگ کی زد میں آنے سے اب تک کل 46 افراد ہلاک اور 11 دیگر لاپتہ ہیں۔ اس تباہی میں کل 12 افراد زخمی حالت میں اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ تباہی میں کل نو عمارتوں کو جزوی یا مکمل طور پر نقصان پہنچا ہے۔

کشمیر کے تمام لوگ شہری ہلاکتوں کی مذمت کرتے ہیں: غلام نبی آزاد

 سنیئر کانگریس لیڈر اور سابق وزیر اعلیٰ غلام نبی آزاد کا کہنا ہے کہ وادی کشمیر کے تمام لوگ شہری ہلاکتوں کی مذمت کرتے ہیں اور ان میں ملوث افراد کی گرفتاری کا مطالبہ کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مارنے والوں کا طریقہ بدل گیا ہے لہذا ضروری ہے کہ ایک آدھ مارنے والوں کو پکڑا جائے تاکہ ان ...

اگر میرے ساتھ تصویر لینا گناہ ہے تو اس کی سزا بھی مجھے ملے: پرینکا گاندھی

حراست میں فوت ہونے والے ارون والمیکی کے اہل خانہ سے ملاقات کے لئے جا رہی کانگریس کی جنرل سیکریٹری کو پہلے پولیس انتظامیہ نے روکا اور انہیں شاہراہ سے لکھنؤ پولیس لائن لے کر آئی بعد میں انہیں 4 لوگوں کے ساتھ آگرہ جانے کی اجازت فراہم کر دی گئی۔