شیوراج حکومت میں قبائلی طبقہ پر مظالم اور استحصال، حکومت وہائٹ پیپر جاری کرے: کمل ناتھ

Source: S.O. News Service | Published on 7th December 2021, 10:37 PM | ملکی خبریں |

بھوپال،7؍دسمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) مدھیہ پردیش کانگریس کے صدر کمل ناتھ نے شیوراج حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ گزشتہ 18 سالوں میں قبائلی طبقہ کے حالات پر وہائٹ پیپر جاری کرے۔ کانگریس ریاستی صدر کمل ناتھ نے اس تعلق سے ایک بیان جاری کر کہا ہے کہ ’’مدھیہ پردیش کی شیوراج حکومت قبائلی طبقہ کو خوش کرنے کے لیے بھلے ہی کتنی بھی کوشش کر لے، ان تقاریب پر کروڑوں روپے لٹا دے، لیکن سچ یہ ہے کہ ریاست کی بی جے پی حکومت میں قبائلی طبقہ پر مظالم اور استحصال کے واقعات میں ریاست کا نام ملک میں سرفہرست ہے۔‘‘

کمل ناتھ نے بیان میں یہ بھی کہا ہے کہ 18 سال بعد شیوراج حکومت کو قبائلی طبقہ اور ان کے ہیروز کی یاد آ رہی ہے، انھیں رانی کملاپتی سے لے کر برسا منڈا، ٹنٹیا بھیل، راجہ شنکر شاہ، کنور رگھوناتھ شاہ جیسے ہیروز کی یاد آ رہی ہے، یہ سب صرف بی جے پی کا انتخابی ایجنڈا ہے۔

سابق وزیر اعلیٰ کمل ناتھ نے اپنی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے کہا کہ این سی آر بی کے 2020 کے اعداد و شمار نیتی آیوگ کے ذریعہ جاری کثیر جہتی غریبی انڈیکس اور اب مرکزی قبائلی امور کی وزارت کے ذریعہ جاری 21-2020 کی سالانہ رپورٹ ریاست میں قبائلی طبقہ کی حالت کا انکشاف کرتی ہے۔

قبائلی امور کی وزارت کی رپورٹ بتاتی ہے کہ قبائلی علاقوں میں صحت سہولیات کے معاملے میں بھی مدھیہ پردیش کی حالت بدتر ہے۔ اتنا ہی نہیں، قبائلی آبادی پر مظالم کے معاملے میں بھی مدھیہ پردیش سرفہرست ہے۔ جرائم اور مظالم کی بات کریں تو قبائلی طبقہ کے خلاف ملک بھر میں درج ہونے والے جرائم میں مدھیہ پردیش کی شراکت داری 23 فیصد ہے، جب کہ ملک میں سب سے زیادہ 14.7 فیصد قبائلی آبادی مدھیہ پردیش میں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

اسٹیٹ بینک آ ف انڈیا- اڈانی کیپٹل پارٹنرشپ تباہ کن ہے: ایم کے فیضی

سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (SDPI) کے قومی صدر ایم کے فیضی نے کسانوں کو قرض حاصل کرنے میں مدد کرنے کی آڑ میں اسٹیٹ بینک آف انڈیا (SBI)۔ اڈانی کیپٹل کی شراکت داری کا سخت نوٹس لیتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ یہ شراکت داری پبلک بینکنگ سیکٹر اور کسانوں کیلئے انتہائی تباہ کن ہے اس لیے اس ...

بہار: اب وی آئی پی نے بی جے پی کو دکھائی آنکھ، آر جے ڈی سے ہاتھ ملانے کا اشارہ

اتر پردیش میں ہو رہے اسمبلی انتخاب کا اثر اب بہار میں بھی پڑتا صاف دکھائی پڑ رہا ہے۔ بہار میں برسراقتدار این ڈی اے میں شامل وکاس شیل انسان پارٹی (وی آئی پی) یوپی انتخاب میں تنہا انتخابی میدان میں اتری ہے، تو اب بہار میں بھی وہ بی جے پی کے آمنے سامنے ہو گئی ہے۔

پنجاب اسمبلی انتخاب: عآپ کے وزیر اعلیٰ امیدوار بھگونت مان شراب کے ہیں عادی، بی جے پی نے لگائے کئی سنگین الزامات

عام آدمی پارٹی (عآپ) کی طرف سے کامیڈین سے لیڈر بنے بھگونت مان کو پنجاب ریاست کے لیے وزیر اعلیٰ عہدہ کے امیدوار کی شکل میں پیش کیے جانے کے کچھ دن بعد بی جے پی نے بھگونت مان کو عوامی طور پر بھدے چٹکلے سنانے والا ایڈکٹ کہہ کر پارٹی پر حملہ کیا ہے۔

پنجاب کے بعد اب منی پور میں اسمبلی انتخابات کی تاریخ بدلنے کا مطالبہ

 پنجاب کے بعد اب منی پور سے بھی اسمبلی انتخابات کے لئے پولنگ کی تاریخ کو تبدیل کرنے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔ آل منی پور کرشچین آرگینائیزیشن (اے ایم سی او) نے مطالبہ کیا ہے کہ 27 فروری کو ہونے والی پہلے مرحلہ کی پولنگ کسی اور دن کرائی جائے کیونکہ اتوار عیسائیوں کی عبادت کا دن ہوتا ...