ملٹی پریس سوشل سروس سوسائٹی کے سالانہ جلسہ میں سبھی مذاہب کے لوگوں کے ساتھ مل جل کر رہنے پر زور

Source: S.O. News Service | Published on 12th May 2022, 5:29 PM | ریاستی خبریں |

شیموگہ، 12؍مئی (ایس او نیوز)    بروز منگل 10؍ مئی 2022 کو ملٹی پریس سوشل سروس سوسائٹی   شیموگہ  نے لگان مندر گاڑی گوپال شیموگہ کے  ہال میں سالانہ جلسے کا انعقاد کیا۔ یہ اس سوسائٹی کا  تینتیسواں سالانہ جلسہ تھا۔ سوسائٹی  باالخصوص تعلیم و تدریس کی ترقی، اور خواتین کے حقوق اور ان کی حفظان صحت کے باب میں خدمات انجام دینے پر توجہ کرتی ہے۔ اس جلسے میں مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والی الگ الگ علاقوں سے آئی خواتین نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔

 جلسے کا افتتاح ڈاکٹر سیلومنی آر، ڈپٹی کمشنر ضلع شیموگہ  نے کیا اور صدارت کے فرائض ڈاکٹر فرانسس سیرلڈ ایس،جے نے ادا کیے۔ مہمان خصوصی کی حیثیت سے قومی انعام یافتہ شاعر و ادیب اور ریاستی ایوارڈ یافتہ بہبودی و خواتین و اطفال کے نمایاں خدمت گار ڈاکٹر حافظ کرناٹکی نے شرکت کی۔ اور مہمان اعزازی کی حیثیت سے ڈاکٹر شیو مورتی شیواچاریہ سوامی جی، ترلاباجگت گرو مٹھا اور ڈاکٹر لیوی ڈی سوزا، ایس،جے، سائنٹسٹ وظیفہ یاب پرنسپل سنت آلوشیس کالج منگلور نے شرکت کی۔ اس کے علاوہ شرکا اور بہت سارے دانشوروں نے اس جلسے میں شرکت کی۔ جن میں ڈاکٹر کلی فرڈ روشن پن ٹو سکریٹری شیموگا ملٹی پرپس سوشل سروس سوسائیٹی شیموگہ، فادر میلوین جوزف پن ٹو اور شری متی پرسلّا ماٹیش کے نام قابل ذکر ہیں۔ ڈاکٹر سرومنی ڈپٹی کمشنر شیموگہ نے اپنے افتتاحی خطاب میں کہا کہ ہندو، مسلم، کرسچین غرض سبھی مذاہب کے نمائندے اور عوام ایک ساتھ یہاں  مل جل کر ایک برادری کے ممبر کی طرح بیٹھے ہوئے ہیں۔ اس تصویر اور ملک عزیز کی اس تقدیر کو زندہ رکھنے میں ہی ملک کا بھلا ہے۔ اور امن و امان کی گیارنٹی ہے۔

کنڑا شاعر مسٹر فلیکس جو زف نورنانے خوب صورت کنڑا گیت  سنایا۔اور اپنی آواز سے سماں باندھ دیا۔ گیت میں یکجہتی کا پیغام اور خواتین کے حقوق کی حفاظت کے بہت واضح پیغامات تھے۔

    مہمان خصوصی ڈاکٹر حافظ کرناٹکی نے اپنے خطاب میں کہاکہ؛ یہ بڑی بات ہے کہ آج کے اس جلسے میں ہر مذہب، مسلک، اور عقیدے سے تعلق رکھنے والی ہزاروں خواتین شریک ہیں۔ جلسہ بہ ظاہر عیسائی مذہب کے بینر کے تلے ہورہا ہے مگر شرکا، خواتین میں ہندو مسلم اور دوسرے مذاہب کے ماننے والی خواتین کی تعداد زیادہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ  مذہب اور عقیدہ ہمارا نجی معاملہ ہے۔ ہم جب بھی گھر سے باہر نکلیں تو انسانیت کی خدمت کا جذبہ لے کر باہر نکلیں۔ انسان بن کر باہر نکلیں، اور انسانیت، مساوات، اور بھائی چارے اور بچوں اور عورتوں کے حقوق کے تحفظ کا جذبہ لے کر باہر نکلیں تا کہ ملک عزیز کے چہرے پر نکھار پیدا ہو۔ کل تک ہمارے کانوں میں مندر اور گرجاگھر کی گھنٹیاں شہد گھولتی تھیں۔ اذانوں کا ترنم اور اس کی پکار میں صبح کی چاندی کھنکتی تھی۔ اور ہم نئے جذبے اور جوش کے ساتھ زندگی کا سامنا کرتے تھے۔ مگر آج ہمارے وطن کے باشندوں کو گمراہ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ ہمیں ہندوستان کے سیکولر چہرے کی چمک میں اضافہ کرنا ہے۔ اور اس کی مثال قائم کرنی ہے۔اور تعلیم و صحت پر توجہ کرکے ملک عزیز کو مہذب اور ہر طرح صحت مند بناناہے۔

اس موقع پر     ڈاکٹر شیومورتی شیواچاریہ کو 2021کے شری چیتنیا اعزاز سے سرفراز کیا گیا تو ڈاکٹر لیوڈی سوزا، ایس جے کو 2020کے لیے شری چیتنیا اعزاز سے سرفراز کیا گیا۔ ڈاکٹر شیومورتی شیواچاریہ جی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم سبھوں کو اپنے ملک اور اپنے ملک کے باشندوں اور ان کے مذہبی جذبات کا احترام کرنا چاہیے۔ صدر جلسہ ڈاکٹر فرانسس سیراؤ، ایس جے نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہم سب کو اپنی استطاعت کے مطابق اپنے وطن کی اور اپنے وطن والوں کی مذہب و ملت کی سطح سے اوپر اٹھ کر خدمت کرنی چاہیے۔ شیموگا ملٹی پرپس سروس سوسائیٹی پچھلے تینتیس سالوں سے اس کوشش میں لگی ہوئی ہے کہ چند شرپسند لوگ ملک عزیز کے ماحول کو خراب کرنے میں لگے ہیں۔ ان کے مقابلے میں ہماری تعداد زیادہ ہے۔ اس لیے ہم مل جل کر اور سبھی مذاہب کے لوگوں کو ساتھ لے کر ہندوستان کے سیکولر کردار اور اس کے باوقار چہرے کی حفاظت کریں گے۔ 

    یہ خوب صورت اور ایکتا و اتحاد اور خدمت کے جذبے کی پرورش کرنے والا شاندار جلسہ ڈاکٹر کلی فرڈ روشن پن ٹو کے شکریہ کے ساتھ اختتام کو پہونچا۔

ایک نظر اس پر بھی

حجاب کیس: ججوں کو دھمکیاں دینے والے شخص کی درخواست ضمانت مسترد

بنگلورو کی ایک سیشن عدالت نے تمل ناڈو کے ترونیل ویلی سے تعلق رکھنے والے رحمت اللہ کی ضمانت کی درخواست مسترد کر دی ہے، جو حال ہی میں کلاس رومز میں حجاب پہننے پر فیصلہ سنانے والے کرناٹک ہائی کورٹ کے ججوں کی جان کو مبینہ طور پر خطرے میں ڈالنے کے الزام میں عدالتی حراست میں ہے۔ سٹی ...

صد فیصد مارکس لینے والے اردو میڈیم طلبہ کا ذکر نہ ہونے پر ایس ایس ایل اسی بورڈ سے بزم اردو وجئے پور نے چاہی وضاحت

بزم اردو وجئے  پور نے ایس ایس ایل کی بورڈ بنگلورو سے وضاحت طلب کی ہے کہ امسال ایس ایس ایل سی اردو میڈیم میں 625 میں سے 625 مارکس حاصل کرنے والے اردو میڈیم طلبہ کو آیا دور رکھا گیا ہے یا پھر اردو میڈیم کے طلبہ قابل نہیں تھے۔

بنگلور: ایس ایس ایل سی نتائج کے بعد پرائیویٹ سمیت سرکاری کالجوں میں بھی رش ۔ پی یوسی میں داخلہ لینے کالج میں طلبہ اوروالدین کی لمبی قطاریں

ایس ایس ایل سی امتحانات کے نتائج کے اعلان کے بعد پی یوکالجوں میں داخلہ کارروائی زوروں سے شروع ہوگئی ہے۔والدین اورطلبہ قطاروں میں کھڑے ہوکر فارم لیتے ہوئے عرضیاں پر کررہے ہیں۔ بنگلورو شہرکے معروف کالجوں میں عرضی حاصل کرنے کے لیے کلو میٹرکی مسافت تک کھڑے ہوئے والدین عرضیاں ...

بنگلورو کے ترقیاتی کاموں کی نگرانی کیلئے8ٹاسک فورس قائم کرنے کا فیصلہ:   وزیر اعلیٰ  بسواراج بومئی

  وزیر اعلیٰ  بسواراج بومئی نے کہا کہ بنگلورو میں ترقیاتی کاموں کی نگرانی اور شدید بارش جیسی کسی بھی ہنگامی صورت حال میں درکار فیصلے لینے کے لیے شہر کے تمام آٹھ زونس میں وزیر کی قیادت میں ٹاسک فورس تشکیل دی جائے گی۔ چیف منسٹر نے ارکا ن اسمبلی اور وزراء کے ہمراہ جمعہ کو شہر کے ...

گیان واپی مسجد کےخلاف سازشیں ناکام بنائیں،عبادت گاہوں سے متعلق ایکٹ 1991ء کو نافذ کرنے کا مطالبہ ، ایس ڈی پی آئی کا ریاست گیر احتجاجی مظاہرہ

سوشیل  ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا نے وارانسی میں گیان واپی مسجد کے ایک حصے کو سیل کرنے کے وارانسی عدالت کے حکم پر سخت اعتراض کرتے ہوئے ‘گیان واپی مسجد کے خلاف سازشیں ناکام بنائیں۔ عبادت گاہوں کے ایکٹ 1991کو نافذ کرو ‘کے مطالبے کے تحت بنگلور، میسور، چتر ...