احمد پٹیل آبائی وطن میں سپردِ خاک، راہل گاندھی سمیت کئی سینئر رہنما تدفین میں شریک

Source: S.O. News Service | Published on 26th November 2020, 10:48 PM | ملکی خبریں |

بھروچ،26؍نومبر(ایس او نیوز؍ایجنسی) کانگریس کے سنیئر رہنما احمد پٹیل کو آبائی وطن گجرات کے بھروچ میں سپرد خاک کر دیا گیا۔ ان کی تدفین کے وقت کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی سمیت دیگر اعلیٰ رہنما بھی موجود رہے۔ اس دوران کورونا کے تمام اصول و ضوابط پر عمل کیا گیا۔ متعدد لوگ قبرسستان آنا چاہتے تھے لیکن کورونا کی رہنما ہدایات کے سبب پولیس نے انہیں آنے کی اجازت نہیں دی۔

بھروچ ضلع کے پیرامن گاؤں کے رہنے والے احمد پٹیل کی خواہش تھی کہ ان کی تدفین آبائی گاؤں میں والدین کی قبور کے نزدیک کی جائے۔ لہذا ان کی آخری خواہش کے مطابق ہی ان کی قبر تیار کی گئی۔ پیرامن گاؤں میں آبائی رہائش سے ان کا جنازہ قبرستان لے جایا گیا۔ اس دوران کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے بھی جنازہ کو کندھا دیا۔

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی، مدھیہ پردیش کے سابق وزیر اعلی کمل ناتھ، چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپش بگھیل، پارٹی کے جنرل سکریٹری اور میڈیا انچارج رندیپ سنگھ سرجے والا سمیت کئی رہنما ان کی آخری رسومات میں شریک ہوئے۔ اس سے پہلے راہل گاندھی نے احمد پٹیل کے اہل خانہ سے ملاقات کی اور تعزیت کا اظہار کیا۔ احمد پٹیل کے پسماندگان میں ان کی اہلیہ میمونہ احمد، بیٹے فیصل پٹیل اور بیٹی ممتاز پٹیل صدیقی شامل ہیں۔

قبل ازیں، گزشتہ شب تقریباً 8.30 بجے احمد پٹیل کا جسد خاکی چارٹرڈ پلین سے وڈودرا لایا گیا۔ رات میں ان کا جسد خاکی سردار پٹیل اسپتال ہارٹ انسٹی ٹیوٹ میں رکھا گیا اور جمعرات کی صبح 7 بجے پیرامن گاؤں میں لایا گیا۔ ان کے انتقال کی خبر سے پورے گاؤں میں ماتم ہے۔ احمد پٹیل کو اپنے آبائی گاؤں سے بہت لگاؤ تھا اور وہ وقتاً فوقتاً یہاں تشریف لاتے رہتے تھے۔

خیال رہے کہ احمد پٹیل کا بدھ کے روز دہلی سے ملحقہ گڑگاؤں میں انتقال ہو گیا تھا۔ 71 سالہ احمد پٹیل تقریباً ایک مہینے پہلے کورونا وائرس کا شکار ہو گئے تھے اور انہیں نازک حالت کے سبب آئی سی یو میں داخل کیا گیا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

ہندوستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 259170 نئے کورونا کے معاملے، ایک دن میں سب سے زیادہ اموات

 کورونا وائرس کے معاملوں میں اضافہ کا سلسلہ لگاتار جاری ہے۔ مرکزی وزارت صحت کی طرف سے جاری اعدادوشمار کے مطابق منگل کے روز ملک میں ایک بار پھر ڈھائی لاکھ سے زیادہ کیسز کی تصدیق کی گئی۔ یہ لگاتار چوتھا دن ہے جب ملک میں ڈھائی لاکھ سے زہادہ کیسز کی تصدیق کی گئی۔

مولانا خالد سیف اللہ رحمانی نے کہا؛ ’مسلم عورتوں کو طلاق دینے کا اختیار نہیں ہوتا، عدالتی فیصلے کی ناقص ترجمانی ہوئی ہے

میڈیا میں آئی کیرالہ ہائی کورٹ کے ایک فیصلہ کےمطابق مسلمان عورت عدالت جائے بغیر خود طلاق دے سکتی ہے، اس میں فیصلہ کی ناقص ترجمانی کی گئی ہے، جس سے لوگوں میں غلط فہمی پیدا ہورہی  ہے۔اصل میںمسلم عورتوں کو طلاق دینے کا اختیار نہیں ہوتا اُنہیں خلع لینے کا اختیار ہوتا ہے مگر اس ...

دہلی-این سی آر میں مہاجر مزدور پھر نکلے سڑکوں پر، پہلے ’لاک ڈاؤن‘ کی آئی یاد

دہلی میں پیر کی صبح جیسے ہی یہ اعلان کیا گیا ہے کہ آج رات 10 بجے سے ایک ہفتہ کے لیے لاک ڈاؤن نافذ ہو جائے گا، لوگوں کا ہجوم آنند وِہار سمیت دیگر بس ٹرمینل پر نظر آنے لگا، اور ساتھ ہی سڑکوں پر قطار بند لوگوں کو پیدل چلتے ہوئے بھی دیکھا جانے لگا۔

ہائی کورٹ کا یوپی کے پانچ شہروں میں لاک ڈاؤن کا حکم، ریاستی حکومت کا عمل درآمد سے انکار

 اتر پردیش حکومت نے پیر کی شام الہ آباد ہائی کورٹ کی اس ہدایت پر عمل درآمد سے انکار کر دیا جس میں ریاست کے پانچ اہم شہروں لکھنؤ، الہ آباد، ورارانسی، کانپور اور گورکھپور میں گزشتہ شب سے 26 اپریل تک لاک ڈاؤن نافذ کر کو کہا گیا ہے۔ کورونا کیسز میں تیزی سے ہو رہے اضافہ کے درمیان ...