اپنا راج قائم رکھنے کے لئے ٹی آر ایس اور بی جے پی نے سمجھوتہ کر رکھا ہے: راہل گاندھی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 3rd December 2018, 11:38 PM | ملکی خبریں |

گدوال،03؍ دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)کانگریس صدر راہل گاندھی نے الزام لگایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی اور تلنگانہ کے قائم مقام وزیر اعلی کے چندرشیکھر راؤ (کے سی آر) کے درمیان ایک سمجھوتہ ہوا ہے جس سے اس بات کا یقین ہو سکے کہ مرکزی اور ریاستی سطح پر بی جے پی اور تلنگانہ راشٹر سمیتی (ٹی آر ایس) کی حکومت جاری رہے۔انہوں نے یہاں ایک انتخابی ریلی میں کہاکہ ٹی آر ایس کا مقصد یہ یقینی بنانا ہے کہ نریندر مودی ہندوستان کے وزیر اعظم بنے رہیں، بی جے پی ملک پر راج کرتی رہے اور کے سی آر تلنگانہ میں حکومت کرتے رہیں۔ راہل نے کہا کہ گزشتہ پانچ سال میں کے سی آر نے مودی حکومت کی حمایت کی ہے اور انہوں نے دباؤ میں آکر نوٹ بندی اور جی ایس ٹی کی تعریف بھی کی تھی۔غور طلب ہے کہ ٹی آر ایس نے صدر اور نائب صدر انتخابات میں این ڈی اے کے امیدواروں کی حمایت کی تھی۔کانگریس صدر نے یہ بھی کہا کہ پانچ سال پہلے جب تلنگانہ ریاست کی تشکیل ہوئی تھی تو لوگوں کا خواب تھا کہ ’بنگارو تلنگانہ‘ (سنہرے تلنگانہ) بنے گا، لیکن کے سی آر کے وزیر اعلی بننے کے بعد ریاست میں صرف ایک خاندان کا راج ہے۔ٹی آر ایس کے دور حکومت میں ’سنہرے تلنگانہ‘ کا خواب ’سنہرے خاندان‘ میں تبدیل ہو گیا ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

وزیر اعظم نریندر مودی پہلے چائے و الا، اب چوکیدار بن کر کر رہے تشہیر: مایاوتی

وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے شروع کی گئی’میں بھی چوکیدار‘ مہم پر بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کی سربراہ مایاوتی نے منگل کو طنز کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ انتخابات میں چائے والا اور اب چوکیدار...، ملک واقعی بدل رہا ہے،