سپریم کورٹ کا فرید آباد کانت انکلیو کے انہدام کا حکم

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th September 2018, 8:54 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،11؍ ستمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) سپریم کورٹ نے ہریانہ کے فریدآباد میں اراولی پہاڑی علاقے میں غیر قانونی طور سے تعمیر شدہ کانت انکلیو کو 31 دسمبر تک پوری طرح منہدم کرنے کا منگل کو حکم دیا ہے۔جسٹس مدن بلی لوکر اور جسٹس دیپک گپتا کی خصوصی بنچ نے 18 اگست 1992 کے بعد غیر قانونی تعمیر کے انہدام کا حکم دیا ہے۔ عدلات نے حالانکہ 17 اپریل 1984 سے 18 اگست 1992 کے درمیان ہوئے تعمیرات کو نقصان نہ پہنچانے کو کہا ہے۔جسٹس لوکر نے اپنے حکم نامے میں کہا کہ ’’18 اگست 1992 کے بعد غیر قانونی تعمیر ات کے انہدام کا ہریانہ حکومت کو ہدایت دینے کے علاوہ کوئی دوسرا متبادل نہیں ہے،تعمیرات کے انہدام کا کام 31 دسمبر تک پورا کر لیا جا نا چاہئے۔عدالت نے کہا کہ کانت انکلیو کے معاملے میں بلڈر آر کانت اینڈ کمپنی اور ہریانہ کے ٹاون اینڈ کنٹری ڈپارٹمنٹ 18 اگست 1992 کوجاری قانونی نوٹس کے بارے میں پوری طرح سے واقف تھے اس کے باوجود کانت انکلیو تعمیر ہوئی،عدالت نے متأثرہ خاندانوں کو معاوضہ ینے کا بھی حکم دیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس امیدوار ملند دیوڑا کے خلاف ایف آئی آر درج، مذہب کی بنیاد پر ووٹ مانگنے کا الزام،بی جے پی لیڈروں کے بیانات پرتماشائی

بی جے پی لیڈران مسلسل متنازعہ بیانات دے رہے ہیں لیکن الیکشن کمیشن سادھوی،امت شاہ جیسے لوگوں پرکارروائی تونہیں کررہاہے وہ تماشائی بناہواہے لیکن اپوزیشن کے لیڈران پرفوراََنوٹس لے لیاجارہاہے۔

کرکرے کے بعد بابری مسجد پر بیان: پرگیہ ٹھاکر کو الیکشن کمیشن کا ایک اور نوٹس جاری

دہشت گردانہ حملے میں شہید ہونے والے مہاراشٹر پولس کے سینئر افسر ہیمنت کرکرے کے بارے میں دیئے گئے بیان کے بعد بھوپال پارلیمانی سیٹ سے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی امیدوار پرگیہ سنگھ ٹھاکر اب ایودھیا کے بابری مسجد-رام مندر مسئلے پر دیئے گئے بیان کو لے کر زیر بحث آ گئی ہے۔

سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کا بھٹکل دورہ؛ کہا، جمہوریت خطرے میں ہے، اُسے بچانے کے لئے ہر شہری کو آگے آنا ہوگا

اس بار کے انتخابات سب سے زیادہ اہم اس لئے  ہے کہ مودی کے زیر اقتدار ملک کی جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔جب سے مودی ملک کے وزیراعظم  بنے ہیں ملک کے سرکاری جمہوری اداروں میں  دخل اندازی سے  عدالت تک محفوظ نہیں ہے، ریزروبینک آف انڈیا  ہو ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ہو، سی بی آئی ...