سپریم کورٹ کے فیصلے کو سی بی آئی کی ’اخلاقی جیت‘بتا کرروی شنکر پرساد نے ممتا بنرجی پر بولا حملہ

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 6th February 2019, 2:34 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی:5 /فروری (ایس اونیوز /آئی این ایس انڈیا)مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی نے منگل کو کولکاتہ پولیس کے سربراہ راجیو کمار کے خلاف مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کی درخواست پر عدالت عظمی کے فیصلے کا خیر مقدم کیا اور اسے ’اخلاقی جیت‘ قرار دیا۔وہیں بی جے پی نے بھی سپریم کورٹ کے فیصلے کو اپنی اخلاقی جیت قرار دیا ہے۔بتا دیں کہ سپریم کورٹ نے راجیو کمار کو سی بی آئی کے سامنے پیش ہونے کو کہا ہے۔ ساتھ ہی سپریم کورٹ نے 19 فروری سے پہلے تک اپنا جواب داخل کرنے کو کہا ہے۔سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد مودی حکومت میں وزیر قانون روی شنکر پرساد نے کہا کہ آج کے سپریم کورٹ کے حکم سے واضح ہے کہ ان کے پولیس کمشنر کو سی بی آئی کے سامنے حاضر ہونا پڑے گا۔اور کولکاتہ میں نہیں، شیلانگ میں حاضر ہونا پڑے گا۔بہت ہی ایماندار تحقیقات کے لئے یہ بہت ہی مناسب حکم ہے۔اس پورے جانچ کو سیاست کے دباؤ سے آزاد کیا جائے گا۔روی شنکر پرساد نے کہا کہ میں آج اپنی پارٹی کی جانب سے بڑا سوال پوچھتا ہوں۔چھوٹے سرمایہ کاروں کا صفایا کیا گیا، ان کے پیسے لوٹے گئے۔تو کیا یہ ہماری اخلاقی ذمہ داری نہیں ہے کہ اس کی جانچ ہو؟ کیوں اس پر ممتا بنرجی خاموش ہیں۔کیوں اس پر دیگر اپوزیشن پارٹیاں خاموش ہیں؟ دوسری بڑی بات ہوئی ہے کہ سپریم کورٹ نے افسران کے خلاف توہین کو نوٹس کیا ہے۔ان کے جواب کے بعد آگے کارروائی کی جائے گی۔کچھ لوگ کہیں گے کہ ہماری جیت ہے، اس پر کیا کہیں گے۔بڑا سوال یہ ہے کہ تین سال سے راجیو کمار کو کیوں نہیں پیش کر رہے تھے۔وہ کون سی طاقتیں تھیں جو پولیس کمشنر کو پیش ہونے سے روک رہی تھی۔انہوں نے مزید کہا کہ جانتے ہیں کہ یہاں ثبوت کو مسخ کیا گیا ہے، تو اب وہ آئیں گے، تحقیقات ایمانداری سے ہو، بڑی بات ہے، ہونا بھی چاہئے۔

ایک نظر اس پر بھی

مودی پھر جیتے تو ملک میں شاید انتخابات نہ ہوں: اشوک گہلوت

کانگریس کے سینئر لیڈر اور راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت نے منگل کو نریندر مودی حکومت کے دور میں ’جمہوریت اور آئین‘ کو خطرہ ہونے کا الزام لگاتے ہوئے دعوی کیا کہ اگر عوام نے مودی کو پھر سے اقتدار سونپا، تو ہو سکتا ہے