سرکاری ملازمین کی تنخواہوں پر نظر ثانی جنوری کے بعد: سدرامیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 15th November 2017, 12:09 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،14؍نومبر(ایس اونیوز؍عبدالحلیم منصور) ریاستی کے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں پر نظر ثانی کرنے کیلئے حکومت نے چھٹواں پے کمیشن تشکیل دیا ہے۔کمیشن کی رپورٹ موصول ہونے کے بعد حکومت ملازمین کی تنخواہوں پر نظر ثانی کا فیصلہ کرے گی۔یہ اعلان آج وزیر اعلیٰ سدر امیا نے ریاستی اسمبلی میں کیا۔ مرکزی حکومت اور ریاستی ملازمین کی تنخواہوں میں امتیاز کو دور کرنے کے مقصد کے تحت ہی حکومت نے وظیفہ یاب آئی اے ایس آفیسر سرینواس مورتی کی قیادت میں یکم جون 2017 کو چھٹواں پے کمیشن تشکیل دیاہے۔اس کمیشن نے رپورٹ پیش کرنے کیلئے 31جنوری تک کی مہلت طلب کی ہے، جسے منظور کرتے ہوئے کمیشن کی میعاد بڑھائی گئی ہے۔ وزیر اعلیٰ نے بات بی جے پی کے رکن دریودھن مہالنگپا کے سوال کے جواب میں بتائی۔ انہوں نے کہاکہ چھٹویں پے کمیشن کی رپورٹ پیش ہونے سے قبل ملازمین کوعبوری راحت رسانی کا کوئی منصوبہ حکومت کے سامنے نہیں ہے۔ پولیسوالوں کی تنخواہوں پر نظر ثانی کے متعلق سدرامیا نے کہاکہ اس کیلئے اعلیٰ افسران پر مشتمل کمیٹی قائم کی گئی تھی، اس کمیٹی نے اپنی رپورٹ حکومت کو پیش کردی ہے۔ اور اس کی سفارشات کے مطابق تنخواہوں میں اضافہ بھی ہوچکا ہے، پولیس والوں کوسالانہ 21سو روپیوں کی تنخواہ میں اضافہ منظور کیاگیاہ ے۔ گزشتہ 20 سال سے پولیس جوانوں کو ترقی نہیں دی گئی تھی۔ حکومت نے ہر بارہ سال میں ایک بار پولیس جوانوں کو ترقی دینے کا ضابطہ لاگو کیا ہے اس کے مطابق بارہ سال سے زیادہ کی مدت سے کام کرنے والے ہیڈکانسٹبلوں کواز خود اسسٹنٹ سب انسپکٹر کا درجہ مل جائے گا اور اسسٹنٹ سب انسپکٹرس سب انسپکٹرس بن جائیں گے۔ انہوں نے کہاکہ پولیس نظام کے تحت آرڈرلی کے رواج کو ختم کرنے کا حکم جاری کیاگیاہے، اس حکوم کی روسے کسی بھی اعلیٰ سرکاری آفیسر کے گھر پر کوئی پولیس جوان ملازم بن کر نہیں رہ سکتا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

زرعی قرضوں کی معافی کے ضوابط میں ترمیم جلد: بینڈپا قاسم پور

ریاستی وزیر کوآپریشن بینڈپا قاسم پور نے کہا ہے کہ ریاست میں کسانوں کے قرضوں کی معافی کے متعلق طے کردہ ضوابط میں ترمیم لائی جائے گی اور ایک لاکھ روپیوں تک کا قرضہ ایک خاندان کے ایک ہی فرد کو معاف کرنے کی پابندی ہٹادی جائے گی۔

کرناٹکا میں سیلاب اور بارش سے مچی تباہ کاریوں کی رپورٹ پیش کرنے وزیراعظم مودی نے دی ہدایت؛ سیلاب متاثرین سے کی اظہار ہمدردی

ریاست میں سیلاب اور بارش کی صورتحال سے متاثر کورگ ، ہاسن ، چکمگلور اور ساحلی کرناٹک کے مختلف علاقوں میں مچی تباہی جانی ومالی نقصان اور دیگر تمام تفصیلات یکجا کرکے رپورٹ پیش کرنے وزیراعظم نریندر مودی نے کرناٹک کے اراکین پارلیمان کو ہدایت دی ہے۔

بے تحاشہ ترقیاتی منصوبے کورگ اور کیرلا کی تباہی کا سبب، تعمیرات کا سلسلہ نہ روکا گیا تو دس سال میں دس گنا بڑی مصیبت آنے کا ظاہر کیا گیا خدشہ

کرناٹک اور کیرلا میں طوفانی بارش اور سیلاب سے ہوئی تباہی کے اسباب کا جائزہ لینے کے بعد نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی نے کہا ہے کہ ملک کے پہاڑی علاقوں میں بے روک تعمیرات اور ماحولیاتی طور پر حساس علاقوں کے ماحول کو مکدر کرنے کی مسلسل کوششیں اس تباہی کی اہم وجہ ہے۔

سیلاب متاثرین کی طرف بسکٹ پھینکنے پر وزیر تعمیرات عامہ ایچ ڈی ریونا تنازعے میں گھرگئے؛ کئی حلقوں میں شدید ناراضگی

ریاستی وزیر برائے تعمیرات عامہ ایچ ڈی ریونا کی طرف سے کورگ اور رامناتھ پورہ کے سیلاب زدگان کی راحت کاری مہم کے دوران متاثرین کی طرف بسکٹ پھینکے جانے کا معاملہ تنازعے کا سبب بنا ہوا ہے۔