ریاست میں این ایس ایس اسکیم کو اسکولی سطح تک توسیع دینے کی تجویز

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 18th May 2017, 12:51 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو: 17/مئی (یو این آئی) نیشنل سرویس اسکیم (این ایس ایس) جو ڈگری کے طلبہ کے لئے لازمی اور پی یو کے طلبہ کے لئے اختیاری بنائی گئی ہے 'کی ہائی اسکول کی سطح تک بھی توسیع کی جائے گی۔تجویز کے مطابق ریاست کا محکمہ امور نوجوانان اور محکمہ کھیل کود چاہتا ہے کہ این ایس ایس ہائی اسکول کے طلبہ کی تعلیم کا بھی حصہ بنے۔محکمہ تعلیم کو اس سلسلہ میں تجویز بھیجی گئی ہے اور حتمی فیصلہ کے لئے یہ اب ریاستی حکومت کے پاس ہے۔عہدیدارو ں کے مطابق تمام یونیورسٹیز کی جانب سے عمل کی جارہی نئی کریڈٹ اسکیم کے تحت این ایس ایس کو تمام طلبہ کے لئے لازمی قرار دیا گیا ہے۔اس کے سبب طلبہ سماج کی تلخ حقائق کو سمجھ سکیں گے اور سماج کی خدمت کے بارے میں غور کرسکیں گے۔ پی یو سی سطح پر این ایس ایس کو اختیاری بنایا گیا ہے کیو ں کہ طلبہ کو کافی تعلیمی دباو ہوتا ہے تاہم اب ہائی اسکول کی سطح پر بھی این ایس ایس کو متعارف کرنے کے سلسلہ میں تبادلہ خیال کیا جارہا ہے کیوں کہ مستقبل میں بہتر شخصیت بنانے میں طلبہ کے لئے یہ مددگار ثابت ہوگی۔تاہم کئی افراد کا احساس ہے کہ ہائی اسکول کی سطح پر این ایس ایس ضروری نہیں ہے۔ محکمہ تعلیم کے ایک افسر نے کہا کہ پہلے ہی طلبہ کو ہائی اسکول کی سطح پر اسکاوٹس اینڈ گائیڈس کی تربیت دی جارہی ہے جو این ایس ایس کی طرح کام کرتے ہیں۔

 

ایک نظر اس پر بھی

اسکولی بچوں کے سوشیل میڈیا استعمال کرنے پر پابندی،پابندی پامال کرنے والوں کو اسکول سے نکال دینے کی تاکید

ریاستی محکمۂ تعلیمات نے کمسن ذہنوں پر سوشیل میڈیا کے اثرات کو دیکھتے ہوئے سختی سے یہ فرمان جاری کیا ہے کہ 13سال کی عمر تک کے بچوں کو سوشیل میڈیا کا استعمال کرنے کی اجازت قطعاً نہ دی جائے۔

مودی حکومت کے انسداد گؤ کشی قانون کو کمار سوامی نے قرار دیا خوش آئند: گائیوں کی دیکھ بھال کیلئے مراکز قائم کرنے کا بھی مشورہ

مرکزی حکومت کی طرف سے کل ملک بھر میں لاگو کئے گئے انسداد گؤ کشی قانون کا سابق وزیراعلیٰ اور ریاستی جنتادل(ایس) صدر ایچ ڈی کمار سوامی نے خیر مقدم کیااور کہاکہ مرکزی حکومت کو چاہئے کہ اس قانون کو نافذ کرنے کے ساتھ ملک بھر میں گائیوں کی دیکھ بھال کیلئے مراکز قائم کرے۔

موسلادھار بارش کی وجہ سے شہر میں عام زندگی متاثر،نشیبی علاقے زیر آب ، دوسو سے زائد درخت اور متعدد بجلی کے کھمبے زمین بوس

شہر میں کل رات ہوئی زبردست بارش کے سبب 200 سے زائد مقامات پر درخت اور بجلی کے کھمبے اکھڑگئے اور ساتھ ہی نہ صرف نشیبی علاقے بلکہ چند مشہور ومعروف سرکاری اور دیگر عمارتوں میں بھی بارش کا پانی گھس آیا۔