نیتی آیوگ نے جزائر کی مجموعی ترقی کے لیے سرمایہ کاروں کی کانفرنس کا انعقاد کیا 

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 11th August 2018, 1:08 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی:10/ اگست (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)نیتی آیوگ نے مختلف جزیروں کی مجموعی ترقی کے لئے وزارت داخلہ ، مرکز کے زیر انتظام علاقے، انڈمان اور نکور بار جزائر نیز لکشدیپ انتظامیہ کے ساتھ مل کر آج یہاں سرمایہ کاروں کی ایک کانفرنس کا انعقاد کیا۔ کانفرنس کا افتتاح نیتی آیوگ کے چیف ایکزیکیٹیو جناب امیتابھ کانت نے کیا۔ اس موقع پر حکومت ہند کے سابق سیکریٹری جناب وویک رائے، انڈمان اور نیکوبار جزائر کے چیف سیکریٹری اور نیتی آیوگ کے ایڈیشنل سیکریٹری یدوویندر ماتھربھی موجودتھے۔اپنے افتتاحی خطاب میں جناب امیتاب کانت نے کہا کہ مرکزی وزیر داخلہ اور جزیرہ ترقی ایجنسی کے صدر جناب راجناتھ سنگھ نے نیتی آیوگ کو ہدایت دی ہے کہ وہ جزائر کی مجموعی ترقی کا کام تیز کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد انڈمان نیکوبار اور لکشدیپ جزائر جیسے جزیروں کی مسلسل اور ماحولیات کے مطابق ترقی کو یقینی بنانا ہے۔حکومت اس بات کا دھیان رکھے گی کہ ترقی کے اس کام میں ان جزیروں کے صلاحیت پر کسی طرح کا دباؤ نہ پڑے۔ سرمایہ کاروں کے ساتھ تبادلہ خیال میں حصہ لیتے ہوئے جناب وویک رائے نے کہا کہ ان جزائر میں سیاحت کی ترقی کی بے پناہ صلاحیت ہے۔جزائر کی مسلسل ترقی اور بحری مجموعی ترقی کو حکومت کے ذریعے اولین ترجیح دی گئی ہے۔اس کام کے لئے وزیر داخلہ کی صدارت نے ایک چوٹی کا ادارہ جزائر ترقی ایجنسی(آئی ڈی اے) کی تشکیل جنوری 2017ء میں کی گئی تھی، جبکہ نیتی آیوگ کو متعلقہ مرکز کے زیر انتظام علاقے کے انتظامیہ ریاستی حکومتوں کے ساتھ مل کر مجموعی جزائز ترقی پروگرام کو آگے بڑھانے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔ اس کام کے تحت پہلے مرحلے میں انڈمان اور نیکوبار کے لئے مجموعی ترقی اور لکشدیپ کے 10 جزیروں کا کام ہاتھ میں لیا گیا ہے۔جزیرہ ترقی ایجنسی نے کل 11سیاحتی پروجیکٹوں(انڈمان اور نیکوبار میں 6 اور لکشدیپ میں 5) کا جائزہ لیا۔ اس کے علاوہ رو-روفیری سروس، ڈیجیٹل کنکٹیٹوی اور سبز توانائی جیسے منصوبوں کو ان جزائر کی مجموعی ترقی کے پہلے مرحلے میں لاگو کرنا ہے۔ان 11پروجیکٹوں میں 7 پروجیکٹ (انڈمان او رنیکوبار میں 4 اور لکشدیپ میں3)آغاز کے لئے تیار ہے۔تفصیلی اراضی سروے ، پروجیکٹوں کے مقام کے جائزے، اسکیم سے جڑے جزائر نے صلاحیت کا اندازہ ، سی آر زیڈ اپلی کیشن اور قبل از مطالع کا کام شرو ع کردیا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

راجستھان میں اس بار 158 کروڑ پتی ممبر اسمبلی

راجستھان کی 15 ویں اسمبلی کے لئے نو منتخب 199 اراکین اسمبلی میں سے 158 کروڑ پتی ہیں۔ سال 2013 کے گزشتہ اسمبلی انتخابات میں یہ تعداد 145 تھی۔ ایسوسی ایشن آف ڈیموکریٹک ریفارمس (اے ڈی آر) کی رپورٹ کے مطابق کانگریس کے 99 میں سے 82 ممبران اسمبلی، بی جے پی کے 73 میں سے 58 ممبران اسمبلی، بی ایس پی ...

رافیل ڈیل پر فیصلے میں مبنی بر حقائق ’ اصلاح ‘کی مانگ کو لے عدلیہ پہنچی مرکزی حکومت

رافیل ڈیل پر سپریم کورٹ کے فیصلہ اور اس پر مچے سیاسی گھمسان کے درمیان مرکزی حکومت ایک بار پھر عدالت عظمی پہنچی ہے۔حکومت نے عرضی داخل کرکے رافیل ڈیل پر دیئے گئے فیصلے میں مبنی بر حقائق اصلاح کا مطالبہ کیا ہے۔ مرکز نے سپریم کورٹ سے فیصلے کے اس پیراگراف میں ترمیم کا مطالبہ کیا ہے، ...

پلوامہ تصادم: آخر ایک فوجی نے جنگجوئیت کیوں اختیار کی ؟ ظہور ٹھوکرفوجی کیمپ سے فرار ہو کرجنگجوئیت اختیار کی تھی

جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع میں ہفتہ کو ایک تصادم میں سکیورٹی فورسز نے تین دہشت گردوں کو مار گرایا۔ اس تصادم میں مارے گئے دہشت گردوں میں ظہور احمد ٹھوکر بھی ہے، جو گزشتہ سال جولائی میں فوج کے کیمپ سے فرار ہو کر دہشت گرد تنظیم میں شامل ہو گیا تھا۔بتایا جا رہا ہے کہ مقامی باشندے ...

چھتیس گڑھ میں کون بنے گا وزیر اعلی؟ راہل گاندھی نے کیا اشارہ

پی اور راجستھان میں سی ایم کا اعلان کرنے کے بعد چھتیس گڑھ کے وزیر اعلی کے عہدے پر کانگریس میں پیچ پھنسا ہوا ہے۔ کانگریس صدر راہل گاندھی نے پی اور راجستھان کی طرح آج بھی ٹویٹر پر چھتیس گڑھ کے تمام سی ایم دعویداروں کے ساتھ تصویر تو پوسٹ کر دی ہے لیکن وزیر اعلی کون ہوگا اس پر پارٹی ...