رافیل ڈیل پرمجھ سے مودی جی آنکھ نہیں ملا پائے، ادھر ادھر دیکھ رہے تھے، رافیل طیارے سودے راہل گاندھی کاحملہ جاری،کہا،ہندوستان کاسب سے بڑادفاعی گھوٹالہ

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 11th August 2018, 12:56 AM | ملکی خبریں |

رائے پو:10/ اگست (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)کانگریس صدر راہل گاندھی نے جمعہ کو چھتیس گڑھ میں کانگریس کے نئے دفتر کا افتتاح کیاہے۔اس موقع پرانہوں نے پی ایم نریندر مودی پر رافیل طیارے سودے کو لے کر جم کر حملہ بولاہے۔راہل گاندھی نے رافیل طیارے سودے کو ملک کا سب سے بڑا دفاعی گھوٹالہ بتایاہے۔انہوں نے اس کے لیے وزیر اعظم نریندر مودی کو ذمہ دار ٹھہرایا۔راہل گاندھی نے کہاکہ میں نے پارلیمنٹ میں وزیر دفاع سے کہا کہ آپ نے ہندوستان سے جھوٹ کیوں بولا؟ جواب نہیں ملا۔جب میں نے مودی جی کوکہا،وہ اپنی آنکھ میری آنکھ سے نہیں ملا پائے۔اپنی ٹی وی پر دیکھا وہ ادھر ادھر دیکھ رہے تھے، کیوں؟کیونکہ چوکیدارپارٹنربن گیا ہے۔کانگریس صدر راہل گاندھی نے کہاکہ جب پاکستان کے سابق وزیر اعظم نواز شریف کانام پاناماپیپرمیں آیا توانہیں اس معاملے میں سزا ہوئی۔اور چھتیس گڑھ میں جب آپ کے وزیراعلیٰ کے بیٹے کا نام پاناما کاغذات میں آتا ہے تو جانچ تک شروع نہیں ہوتی۔یہی بی جے پی-این ڈی اے کی’’چوکیداری‘‘ہے۔انہوں نے چھتیس گڑھ میں کہاکہ ملک کی خواتین وزیر اعظم مودی سے پوچھ رہی ہیں کہ وہ اتر پردیش، بہار اور راجستھان میں عصمت دری کے واقعات پر کیوں نہیں بول رہے ہیں؟ بھارت میں ایسی صورت حال تین ہزار سالوں میں کبھی نہیں دیکھی گئی۔اس سے پہلے راہل گاندھی کا سوامی وویکانندہوائی اڈے پر کانگریس کے سینئر رہنماؤں اور عہدیداروں نے جم کرخیر مقدم کیاہے۔

ایک نظر اس پر بھی

لوک سبھا انتخابات میں نہ اتار کر وزیر اعظم نے اڈوانی ،جوشی کی توہین کی : کیجریوال

عام آدمی پارٹی کے سربراہ اروند کیجریوال نے منگل کو کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے لال کرشن اڈوانی اور مرلی منوہر جوشی جیسے سینئر رہنماؤں کو آئندہ لوک سبھا انتخابات میں نہیں اتار کر انکی توہین کی ہے۔