آل انڈیامجلس اتحادالمسلمین کی مرکزی وزیرتعلیم سے ملاقات, اے ایم یو کشن گنج سنٹرکے لیے جلد از جلد فنڈ جاری کرانے کی اپیل

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 11th August 2018, 1:37 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی:10/ اگست (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) مرکزی وزیر برائے فروغ انسانی وسائل پرکاش جاوڈیکر نے کہاکہ جلد ہی اے ایم یو کشن گنج سنٹرکے لیے رقم ریلیزکردی جائے گی۔ یہ یقین دہانی انہوں نے ایک وفد کو دلائی جس کی قیادت آل انڈیا مجلس اتحادالمسلمین کے صد ااور رکن پارلیمنٹ اسد الدین اویسی نے کی ۔اس وفدجس میں اسد الدین اویسی کے علاوہ سابق رکن اسمبلی بہار اور مجلس اتحاد المسلمین بہار کے صدر اختر الایمان بہار اتحاد المسلمین کے جنرل سکریٹری انجینئر آفتاب احمد اور ایم آئی ایم یوتھ بہار کے صدر ایڈووکیٹ عادل حسن آزاد موجود تھے۔ مرکزی وزیر نے کہا کہ حکومت اس پر سنجیدگی سے غور کر رہی ہے اور جلد ہی فنڈ ریلیز کرنے کی کوشش کی جائے گی کیوں کہ حکومت تعلیم کے تئیں سنجیدہ ہے۔مسٹر اویسی نے مسٹر جاوڈیکر کو پیش کردہ اپنے خط میں کہا کہ میں دوبار ہ آپ سے درخواست کرتا ہوں کہ اے ایم کشن گنج سنٹر کے لئے فنڈ جاری کیا جائے گا تاکہ یونیورسٹی میں ترقیاتی کام ہوسکے اور سنٹر اپنے کیمپس میں منتقل ہوسکے۔انہوں نے درخواست کی کہ ترجیحی بنیاد پر جلد از جلد فنڈ ریلیز کیا جائے۔ اس وقت اے ایم یو سنٹر اقلیتی ہوسٹل میں چل رہا ہے۔واضح رہے کہ سابقہ یوپی اے حکومت نے اے ایم یو کشن گنج سنٹر کے لئے 136.82کروڑ روپے کا بجٹ مختص کیا تھا جس میں سے بہ مشکل دس کروڑ روپے کشن گنج سنٹر کے لئے ریلیز ہوئے ہیں۔وفد میں شامل سابق رکن اسمبلی اختر الایمان نے بتایا کہ کئی بار مرکزی وزیر سے فنڈ کے سلسلے میں ملاقات ہوچکی ہے اور گزشتہ سال دسمبر میں مرکزی وزیر سے ملاقات کرکے فنڈ ریلیز کرنے کی درخواست کی گئی تھی لیکن اب تک اس پر کوئی کارروائی نہیں ہوئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ اس کا نتیجہ یہ ہے کہ اے ایم یو کشن گنج سنٹرآخری سانسیں گن رہا ہے کیوں کہ اس وقت صرف ایم بی اے کی تعلیم ہورہی ہے جب کہ گزشتہ سال تک بی ایڈ کی تعلیم ہورہی تھی۔ انہوں نے کہاکہ کشن گنج ضلع تعلیمی لحافظ سے پسماندہ ضلع میں شمار ہوتا ہے یہاں تعلیم کی سب سے زیادہ ضرورت ہے مگر اس علاقے کو ایک سازش کے تحت نظر انداز کیا جارہا ہے۔مسٹر اختر الایمان نے بتایا کہ اے ایم یو کشن گنج کے سلسلے میں وہ اے ایم علی گڑھ کے وائس چانسلر سے بھی ملاقات کرکے ان کی توجہ کشن گنج سنٹر کی زبوں حالی کی طرف دلاچکے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

جے پی سی سے جانچ کرانے کا راستہ ا بھی کھلا ہے، عام آدمی پارٹی نے کہا،عوام کی عدالت اورپارلیمنٹ میں جواب دیناہوگا،بدعنوانی کے الزام پرقائم

آپ کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے کہا ہے کہ رافیل معاملے میں جمعہ کو آئے سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود متحدہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے اس معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کا اراستہ اب بھی کھلا ہے۔

رافیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ، راہل گاندھی معافی مانگیں: بی جے پی

فرانس سے 36 لڑاکا طیارے کی خریداری کے معاملے میں بدعنوانی کے الزامات پر سپریم کورٹ کی کلین چٹ ملنے کے بعد کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے جمعہ کو کہا کہ کانگریس پارٹی اور اس کے چیئرمین راہل گاندھی ملک کو گمراہ کرنے کیلئے معافی مانگیں۔