لوک سبھا انتخابات ، بی جے پی 22سیٹیں جیت گئی تو ریاست کی مخلوط حکومت باقی نہیں رہے گی:یڈیورپا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th March 2019, 11:15 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو ،11؍مارچ (ایس او نیوز) آنے والے لوک سبھا انتخابات میں اگر بی جے پی ریاست میں 22سیٹیوں پر جیت درج کرتی ہے تو کانگریس اور جے ڈی ایس پرمشتمل مخلوط حکومت زیادہ دن نہیں چل سکتی ۔ یہ بات ریاستی بی جے پی یونٹ کے صدر بی ایس یڈیورپا نے کہی ۔ شہر کے ہوائی اڈہ پرنامہ نگاروں سے بات چیت کے دوران انہوں نے کہا کہ بیلگاوی ،چکوڈی میں پارٹی کارکنوں کا اجلاس ہے ،اس میں شرکت کررہا ہوں۔لوک سبھا انتخابات کے لئے بہت جلد پارٹی امیدواروں کو منتخب کرنا ہمارا مقصد ہے ۔ریاست کے موجودہ اراکین پارلیمان کو ٹکٹ فراہم کرنا تقریباً طے ہے ۔ موجودہ اراکین پارلیمان میں دو تین تبدیلیاں لائی جاسکتی ہیں۔پاکستان کے مسعوداظہر کو بی جے پی حکومت نے رہا کیا تھا ، ہاویری کے کانگریس اجلاس میں راہل گاندھی نے بی جے پی پر ہلہ بولتے ہوئے کہا تھا کہ مسعود اظہر کو کس نے رہا کیا ؟ اس پر کئے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے ایڈی یورپا نے کہا کہ راہل گاندھی اب بھی ناتجربہ کار ہیں ۔ اس لئے انہیں نا پختہ ذہن کہاجاتا ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

ہندو لیڈر سورج نائک سونی نے اننت کمار ہیگڈے کو کہا،مودی حکومت کا داغدار وزیر؛ اُس کی مخالفت میں کام کرنے کے لئے نوجوانوں کی ٹیم تیار

ضلع شمالی کینرا میں ایک نوجوان ہندو لیڈر کے طور پر اپنی پہچان رکھنے والے کمٹہ کے سورج نائک سونی نے اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ’’ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں چل رہی مرکزی حکومت میں اننت کمار ہیگڈے کی حیثیت ایک داغداروزیر کی ہے۔ اور ایسا لگتا ہے کہ انہیں ...

کرناٹک میں نوٹیفکیشن کے پہلے دن 6؍امیداروں کی نامزدگیاں داخل 

ریاست میں لوک سبھا الیکشن کے پہلے مرحلہ میں 14؍سیٹوں پر 18؍اپریل کو ہونے والے الیکشن کے لئے پرچہ نامزدگی کرنے کا آغاز ہوگیا ۔ پہلے دن چار حلقوں میں6؍ امیدواروں کی جانب سے 11؍ مزدگیاں داخل کئیں۔ یہ اطلاع ریاستی الیکشن افسر سنجیو کمار نے دی۔

بنگلورو کے تینوں پارلیمانی حلقوں میں ڈی سی پیز کی زیرنگرانی سخت بندوست لائسنس یافتہ 7؍ہزار ہتھیارات تحویل میں :پولیس کمشنر ٹی۔ سنیل کمار

پولیس کمشنر ٹی۔ سنیل کمار نے بتایا کہ بنگلور سنٹرل ،بنگلور نارتھ اور بنگلور ساؤتھ لوک سبھا حلقوں میں ہونے والے پارلیمانی انتخابات کے لئے ڈپٹی کمشنر آف پولیس (ڈی سی پی) سطح کے پولیس افسروں کی نگرانی میں پولیس کا سخت بندوبست کیاگیا ہے۔