ضمنی انتخابات کے لئے سیاسی پارٹیاں امیدوار کے انتخاب میں مصروف

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th October 2018, 12:16 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،9؍اکتوبر(ایس او نیوز) 3؍ نومبر کو ریاست کے تین لوک سبھااور دو اسمبلی حلقوں کے لئے ہونے والے ضمنی انتخابات کے لئے امیدواروں کے انتخاب میں کانگریس ، بی جے پی اور جے ڈی ایس مصروف ہیں۔ آج ان انتخابات کے لئے نوٹی فکیشن جاری ہونے کے ساتھ ہی نامزدگیوں کے اندراج کا آغاز ہوچکا ہے۔پانچوں حلقوں میں جیت درج کرنے کانگریس اور جے ڈی ایس اتحاد نے جہاں حکمت عملی تیار کی ہے تو دوسری طرف بی جے پی بھی ان حلقوں میں حکمران اتحاد کو مات دینے کی حکمت عملی مرتب کرنے میں لگا ہوا ہے۔آج شہر میں اے آئی سی سی جنرل سکریٹری انچارج برائے کرناٹک کے سی وینو گوپال نے پارٹی لیڈروں کے ساتھ میٹنگ کی جس میں سابق وزیر اعلیٰ سدرامیا ، نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر پرمیشور، کے پی سی سی صدر دنیش گنڈو راؤ ، کارگز ار صدر ایشور کھنڈرے ، وزراء ، اراکین اسمبلی اور دیگر لیڈر موجود تھے۔ سدرامیا کی رہائش گاہ پر منعقدہ میٹنگ میں طے کیا گیا کہ رام نگرم اسمبلی اور منڈیا لوک سبھا حلقہ جے ڈی ایس کو دیا جائے، بلاری ، شیموگہ اور جمکھنڈی میں کانگریس مقابلہ کرے۔ حالانکہ شیموگہ پارلیمانی حلقے سے جے ڈی ایس نے بھی مقابلے کی خواہش ظاہر کی ہے کانگریس نے طے کیا ہے کہ اس سلسلے میں جے ڈی ایس کے قومی سربراہ دیوے گوڈا سے بات چیت کی جائے گی۔ تین لوک سبھا اور دو اسمبلی سیٹوں پر ہونے والے ضمنی چناؤ میں حکمران اتحاد کی بالا دستی قائم کرنے اور بی جے پی کو ان میں سے ایک بھی سیٹ پر کامیابی کا موقع فراہم نہ کرنے کے لئے اتفاق کیاگیا ہے۔دوسری طرف وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے آج رام نگرم اور منڈیا حلقوں سے جے ڈی ایس امیدواروں کے بارے میں اپنے پارٹی لیڈروں سے تبادلۂ خیال کیا۔ پارٹی میں اس بات پر اتفاق ہوگیا ہے کہ رام نگرم میں جے ڈی ایس کی امیدوار انیتا کمار سوامی ہوں گی۔ منڈیا لوک سبھا حلقے سے ابھی جے ڈی ایس امیدوارکا فیصلہ نہیں ہوا ہے، دوسری طرف شیموگہ پارلیمانی حلقے سے بی جے پی نے یڈیورپا کے فرزند بی وائی راگھویندرا کو میدان میں اتارنا طے کرلیا ہے۔منڈیااور بلاری لوک سبھا حلقوں اور رام نگرم اور جمکھنڈی اسمبلی حلقوں کے لئے امیدواروں کا فیصلہ ابھی نہیں ہوا ہے۔ بلاری لوک سبھا حلقے سے سابق اراکین پارلیمان جے شانتا ،سنا فقیرپا یا ایم وائی ہنومنتپا کے فرزند سوجے کو میدان میں اتارنے پر غور کیا جارہاہے۔ منڈیا لوک سبھا حلقے سے سابق نائب وزیراعلیٰ آر اشوک کو مقابلہ کرنے کے لئے پارٹی قیادت کی طرف سے زور دیا جارہاہے۔ رام نگرم حلقے سے بی ردریش کو میدان میں اتارا جارہاہے۔ ان انتخابات کے لئے پرچۂ نامزدگی داخل کرنے کی آخری تاریخ 16اکتوبر ہوگی، 17اکتوبر کو جانچ ہوگی اور 20اکتوبر کو نامزدگی واپس لینے کی آخری تاریخ ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

کاروار: کائیگا پلانٹ توسیعی منصوبہ۔ عوامی احتجاج کے درمیان افسران نے منعقد کیا عوامی اجلاس

کائیگا جوہری توانائی اسٹیشن میں مزید دو یونٹس کا اضافہ کرنے کے منصوبے پر عوامی رائے جاننے کے لئے سرکاری افسران نے کائیگا ٹاؤن شپ میں اجلاس منعقد کیا جبکہ ٹاؤن شپ سے باہر موجودہ اور سابق اراکین اسمبلی کی قیادت میں سیکڑوں افراد نے توسیعی منصوبے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔

بنگلورومیٹرو برڈج میں خرابی کا نائب وزیراعلیٰ پرمیشور نے معائنہ کیا

شہر کے ایم جی روڈ پر ٹرینٹی سرکل کے قریب ایم جی روڈ بیپنا ہلی میٹرو روٹ کے پلر نمبر 155کے قریب ایک بیم میں دراڑ کا آج نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور نے معائنہ کیا اور کہاکہ اس سلسلے میں مرمت کا کام جاری ہے۔

زہریلے کھانے کا معاملہ، اعلیٰ سطحی جانچ کرانے سدارمیاکا مطالبہ

کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ اور مخلوط حکومت کے کورابطہ کمیٹی کے صدر سدارمیا نے سُلوادی گاؤں کے مرمَّا مندر میں زہریلا کھانہ کھانے سے 11 عقیدتمندوں کی موت اور 80 افراد کے بیمار ہونے کے معاملے کی اعلیٰ سطحی جانچ کا مطالبہ کیا ہے ۔