ہبلی :سرکاری سہولیات کو عوام تک پہنچانے سے راشن دکان مالکان کا گریز :دیہی عوام کا سخت اعتراض

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 12th October 2017, 6:44 PM | ریاستی خبریں |

ہبلی:12 اکتوبر (ایس اؤنیوز)غریب ، بے سہاروں اور لاچاروں کے سہولت کی خاطر ریاستی حکومت راشن دکانوں کے ذریعے مفت اور رعایتی قیمت پر راشن تقسیم کیا کرتی ہے۔ لیکن یہاں حکومت کی طرف سے فراہم کردہ سہولیات کو عوام تک پہنچانےکے بجائے راشن دکان مالکان ہر دن کوئی نہ کوئی قانون، ضوابط جاری کرتےہوئے غریب عوام کو راشن دکان کے چکر کاٹنےپر مجبور کرنے پر دیہی عوام راشن دکان پہنچ کر دکان بند کرتےہوئے اپنا احتجاج جتانے کا واقعہ ہبلی کے تعلقہ کوسوگل دیہات میں پیش آیا ہے۔

راشن دکان کے سامنے جمع ہوئے دیہات کے سیکڑوں عوام نے اپنا دکھڑا سناتے ہوئے کہاکہ دیہات کے راشن دکان مالکان سرکاری اصولوں کے مطابق راشن کی تقسیم نہیں کررہے ہیں، راشن لینے کے لئے ایک دن دستخط، ایک انگوٹھا (تھمب)اور ایک دن لاگ آن کرنے کے بعد دوسرے دن خاندان کے ذمہ دار آئیں ، ایسے ہی کوئی نہ کوئی بہانہ بنا کر انہیں راشن نہیں دئیے جانےکا دیہی عوام نے الزام لگایا ہے۔ اتنا ہی نہیں بلکہ جب عوام راشن دکان پہنچتےہیں تو سرور نہیں ہے ، سرور بیوزی ہے جیسے تیارشدہ جملوں سے عوام کو لوٹایاجاتاہے۔ کلی طورپرغریبوں کو راشن کے لئے سخت جدوجہد کرنی پڑرہی ہے اور بعض دفعہ مایوس لوٹنےپر مجبور ہیں۔ حالات سےبیزار ہوکر دیہی عوام نے راشن دکان پہنچ کر سخت اعتراض جتاتے ہوئے راشن دکان کو ہی قفل لگانےکی کوشش کرتے نظر آئے ۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک کی کانگریس حکومت پر نشانہ لگانے پر سدرامیا نے کیا پلٹ وار؛ کہا مودی میں وزیراعظم بننے کی صلاحیت ہی نہیں

کرناٹک کی کانگریس حکومت پر نشانہ سادھنے پر پلٹ وار کرتے ہوئے ریاست کے وزیر اعلیٰ سدرامیا نے وزیراعظم نریندر مودی کو جھوٹ کا پلندہ   قرار دیتے ہوئے    کہا  کہ نریندر مودی   میں وزیراعظم بننے کی صلاحیت ہی نہیں ہے

کانگریس لیڈر کی بی بی ایم پی دفتر کو آگ لگادینے کی دھمکی؛سی سی ٹی وی میں قیدہوا پورا منظر؛ سدارامیا نے دکھایا پارٹی سے باہر کا راستہ

کانگریس لیڈر نارائن سوامی کے  بی بی ایم پی دفتر میں گھس کر پٹرول چھڑکنے اوردفتر کو آگ لگادینے کی دھمکی کی وڈیو نیوز چینلوں میں نشر ہونے کے بعد فوری حرکت کرتے ہوئے سدرامیا نے نارائن سوامی کو   کانگریس پارٹی سے باہر کا راستہ دکھادیا ہے۔

این اے حارث نے فرزند کی حرکت پر اسمبلی میں کی معذرت خواہی

رکن اسمبلی این اے حارث کے فرزند نلپاڈ محمد کی طرف سے کل پیر کو ایک طالب العلم کو زودوکوب کرنے کا معاملہ سامنے آنے کے بعد آج این اے حارث نے ریاستی اسمبلی میں معذرت طلب کی اور کہا کہ ان کے بیٹے کی حرکت کی وجہ سے  اُنہیں جس طرح ندامت اُٹھانی پڑی، وہ وقت کسی باپ پر نہ آئے۔