سماج میں مساوات تعلیم سے ہی ممکن،ڈگری کالجوں کے طلبا کو مفت لیاپ ٹاپ کی فراہمی نومبر سے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 22nd September 2017, 11:17 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 22ستمبر (ایس او نیوز؍عبدالحلیم منصور) وزیر اعلیٰ سدرامیا نے کہا ہے کہ سماج میں ذات پات کی بنیاد پر جو امتیازات ہیں انہیں تمام طبقات کو تعلیمی مواقع کی فراہمی سے دو ر کیاجاسکتاہے۔ آج بلاری میں ویرا شیوا ودیا وردکاسنگھا کی صد سالہ تقریبات میں حصہ لیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ سو سال قبل ہی تعلیم کی اہمیت کو محسوس کرتے ہوئے اس ادارہ کا قیام کیاگیاتھا اور یہاں سے فارغ ہونے والے طلبا نے سماج کی کافی خدمت کی ہے۔آج اس سنگھا کے تحت چلنے والے تعلیمی اداروں میں 22؍ ہزار سے زائد طلبا تعلیم حاصل کررہے ہیں جو کہ خوش آئند بات ہے۔ انہوں نے کہاکہ آج جمہوری نظام کے تحت صرف انہیں ممالک کو پیش رفت حاصل ہوئی ہے جنہوں نے سماج کے تمام طبقات کی یکساں ترقی کیلئے فکر مندی ظاہر کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ لنگایت طبقہ کے مذہبی سربراہ بسونا نے مساوات کی بنیاد پر سماج قائم کرنے کی آواز دی تھی۔ آج ضرورت اس بات کی ہے کہ مساوات کے اس پیغام کو عام کیاجائے۔ انہوں نے کہاکہ ذات پات کے نظام کے تحت سماج کے کمزور طبقات کو دانستہ طور پر تعلیم سے محروم رکھا گیا ، خاص طور پر خواتین میں ناخواندگی ایک بہت بڑا چیلنج بن کر سامنے آئی ہے۔ گزرتے وقت کے ساتھ خواتین کو تعلیمی پیش رفت میں آگے بڑھانے کیلئے تعلیمی اداروں کی فکر مندی کو انہوں نے خوش آئند قرار دیا اور کہاکہ تعلیمی میدان میں حاصل نئے نئے مواقع کا استفادہ کرتے ہوئے طلبا اپنے مستقبل کو سنواریں اور ملک کیلئے اپنے آپ کو ایک سود مند شہری میں تبدیل کریں۔ وزیر اعلیٰ نے کہاکہ ریاستی حکومت کا منشاء یہی ہے کہ سماج کے کمزور طبقات بشمول دلت ، پسماندہ طبقات ، اقلیتیں اور خواتین ،کتابوں ، یونیفارم ، فیس وغیرہ نہ ہونے کی وجہ ئے تعلیم سے محروم نہ رہیں ، اسی مقصد کو ذہن میں رکھتے ہوئے حکومت نے پرائمری اسکولوں میں گرم کھانے کی اسکیم رائج کی اور اس کی وجہ سے شرح خواندگی میں اضافہ صد فیصد تک ہوپایا ہے، وزیر اعلیٰ نے اس موقع پر اعلان کیا کہ ریاست کے سبھی سرکاری اور ایڈڈ ڈگری کالجوں میں پہلے سال میں داخلہ لینے والے طلبا کو حکومت کی طرف سے عمدہ معیاری لیاپ ٹاپ مفت فراہم کیاجائے گا۔ نومبر سے یہ اسکیم رائج کی جائے گی، اس سے 1.96لاکھ طلبا استفادہ کرسکیں گے۔ اس موقع پر ویرا شیوا لنگایت مہاسبھا کے صدر الم بسوراج ، سابق وزیر شامنور شیوشنکرپا، کے پی سی سی کارگذار صدر ایس آر پاٹل ، وزیر برائے اعلیٰ تعلیمات بسوراج رایا ریڈی اور دیگر موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں عازمین حج سے ضرورت سے زائد رقم کی جارہی ہے وصول ، نئے وزیرحج ضمیراحمد خان کا الزام

کرناٹک کے نئے وزیرحج ضمیراحمد خان نے الزام عائد کیا ہے کہ سفرحج کےنام پر عازمین حج کو لوٹا جارہاہے۔ بنگلورو میں ضمیراحمد خان نے کہاکہ مرکزی حج کمیٹی عازمین حج سے کیوں زائد رقم وصول کررہی ہے؟ ضمیر احمد خان نے اس پورے معاملے میں اشاروں ہی اشاروں میں  ہیراپھیری کا بھی الزام ...

جنرک میڈیکل اسٹورس میں دوائیوں کی مانگ پوری کی جائیگی منظم نیٹ ورک کے ذریعہ دوائیاں تقسیم کرنے کیلئے نیا سافٹ ویر تیار ہوگا : اننت کمار

مرکزی حکومت کی طرف سے قائم کردہ جنرک میڈیکل اسٹورس میں دوائیوں کی مانگ میں جو دن بہ دن اضافہ ہورہاہے اس کے متعلق مرکزی حکومت کو حال ہی میں اطلاع ملی ہے ۔ مزید ایک ماہ میں یہ مسئلہ حل کرلیا جائے گا۔

حج بھون کے معاملے کو لے کر بی جے پی کی سیاسی رنگ دینے کی کوشش؛ ضمیر احمد نے شوبھا کرندلاجے سے کہا؛ اپنے مفاد کے لئے گندی سیاست اور عوام کو گمراہ نہ کریں

ریاستی وزیر برائے اقلیتی امور،اوقاف وحج وغذا شہری رسد بی زیڈ ضمیر احمد خان نے کہا کہ حج گھر کو حضرت ٹیپو سلطان شہیدؒ کے نام سے منسوب کرنے کو لے کر فرقہ پرست جماعت گندی سیاست نہ کرے۔

بنگلورو میں سڑک پر ملے یتیم بچے کو دودھ پلانے والی کانسٹیبل کی عزت افزائی

کوڑا کرکٹ کے ذخیرہ سے قریب ملے یتیم بچے کی جان بچانے کے لئے اپنا دودھ پلاکر انسانیت کی مثال قائم کرنے والی الیکٹرانک سٹی پولیس تھانے کی خاتون کانسٹیبل ارچناکو مےئر سمپت راج نے آج اپنے دفتر میں اس اقدام کو سراہتے ہوئے تہنیت پیش کی۔ مےئر سمپت راج نے اپنے دفترمیں ارچنا کو ایک ...

کے پی سی سی صدارت حاصل کرنے ایچ کے پاٹل اور دنیش گنڈوراؤ کے درمیان رسہ کشی منی اپا بھی دعویدار۔ پاٹل دوڑمیں آگے،کئی سینئر لیڈروں کی تائید حاصل

کرناٹک پردیش کانگریس کمیٹی( کے پی سی سی) کے صدر کا عہدہ حاصل کرنے کے لئے ریاستی لیڈروں کے درمیان رسہ کشی جاری ہے۔ ایک دن ایک لیڈر کے نام کا اعلان ہوتا ہے تو دوسرے دن کسی دوسرے لیڈر کا نام لیا جاتا ہے۔

ڈاکٹر جی پرمیشور بنگلور کو ’’جنگی پیمانہ‘‘ پر بچانا چاہتے ہیں

شہری مسائل جو ہمارے شہر گلستاں بنگلور کو سالوں سے پریشان کئے ہوئے ہیں وہ اب بہت جلد ماضی کا باب بننے والے ہیں ، اس لئے کہ ریاستی حکومت نے کہا ہے کہ وہ اس تیز رفتاری کے ساتھ بڑھتے ہوئے شہر کو پلاسٹک سے پاک کر دے گی اور شہر کے تالابوں کو آلودگی سے محفوظ رکھنے کے لئے جنگی پیمانہ پر ...