گجرات انتخابات:خاتون کے ساتھ ہاردک کی مبینہ سی ڈی لیک، ہاردک نے بتایا گندی سیاست

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th November 2017, 12:04 AM | ملکی خبریں |

احمدآباد،13؍نومبر(ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا )گجرات میں اسمبلی انتخابات کی تشہیر زوروں پرہے۔سیاسی جماعتوں میں تیکھے الزام تراشیوں کے درمیان پیر کو پاٹیدار لیڈر ہاردک پٹیل کی ایک مبینہ سی ڈی جاری ہو گئی۔اس سی ڈی میں ہاردک ایک عورت کے ساتھ ہوٹل کے کمرے میں نظر آ رہے ہیں۔سی ڈی کے مقامی نیوزچینلز پر ٹیلی کاسٹ ہونے کے ساتھ ہی سیاسی گلیاروں میں ہنگامہ مچ گیا۔ حالانکہ ہاردک پٹیل نے اس کے لئے بی جے پی کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔ہاردک نے کہا ہے کہ اگر میں اس میں ہوتا تو سینہ چوڑا کرکے قبول کرتا۔ہاردک نے ٹویٹ کرتے ہوئے لکھاکہ اب گندی سیاست کا آغاز ہوگیاہے۔مجھے بدنام کر لو کوئی فرق نہیں پڑے گا، لیکن گجرات کی خواتین کی توہین کی جا رہی ہے۔غور طلب ہے کہ ہاردک پٹیل نے گزشتہ ہفتے ہی خدشہ ظاہر کیا تھا کہ الیکشن سے پہلے ان کی فحش سی ڈی سامنے آ سکتی ہے۔ ذرائع کے مطابق یہ ویڈیو اسی سال 16مئی کوجاری کی گئی ہے۔یو ٹیوب پر ویڈیو جاری کرنے والے اشون ساکڑسریا نے کہاکہ مجھے بینکاک میں ویڈیو بنانے کی اطلاع ملی تھی۔انہوں نے کہا کہ میرے پاس ہاردک کے علاوہ ان کے ساتھیوں کی بھی سی ڈی ہے۔دوسری طرف اپنی مبینہ سی ڈی جاری ہونے کے بعد ہاردک نے کہاکہ میں پہلے بھی کہہ چکا ہوں کہ ان لوگوں نے پہلے سنجے جوشی کی سی ڈی جاری کی تھی، جب وہ تیزی سے ابھر رہے تھے۔بی جے پی پہلے بھی ایسا کرتی رہی ہے اور یہ آگے بھی ایسا کریں گے۔گجرات کے لوگوں کو بیدار ہونے کی ضرورت ہے، یہ لوگ اقتدار کی خواہش کے لئے کسی بھی عورت کا استعمال کرسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس طرح کے کاموں سے مجھے کوئی پریشانی نہیں ہے۔ہاردک نے کہاکہ سیاسی جنگ لڑتے تو اچھا رہتا لیکن یہی سب کرنا چاہتے ہیں تو بھی مجھے کوئی فرق نہیں پڑتا۔گجرات کی 6 کروڑ عوام میرے ساتھ ہے، اگر میں اس سی ڈی میں ہوں، تو بھی چھپانے والی کوئی بات نہیں ہے۔جو کرتا ہوں سینہ چوڑا کرکے کرتا ہوں۔بتاتے چلیں کہ گجرات میں اگلے ماہ دو مراحل میں اسمبلی انتخابات کی پولنگ ہونی ہے۔ریاست کی 182اسمبلی سیٹوں پر 9اور 14دسمبر کو ووٹنگ کے بعد 18دسمبر کو ووٹوں کی گنتی ہوگی۔

ایک نظر اس پر بھی

گجرات:بی جے پی میں بڑی بغاوت کے آثار،ٹکٹ کٹنے پراستعفوں کی دھمکی،اعلیٰ قیادت پرامیدوارتبدیل کرنے کادباؤ

بی جے پی کے ٹکٹ کی تقسیم کے بعد شروع ہونے والی بغاوت تھمنے کانام نہیں لے رہی ہے۔ پارٹی کے اعلیٰ کمان دفترتک پہنچنے کے بعد بی جے پی کے کارکنان نے اپنا احتجاج کرناشروع کردیا۔