حیدرآباد کرناٹک کے مسائل پر گفتگو کے لئے کلبرگی میں خصوصی اجلاس، مقامی نمائندوں کے وفد کو کمار سوامی کی یقین دہانی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 7th September 2018, 10:11 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،7؍ستمبر(ایس او نیوز) ریاست کے پسماندہ علاقے حیدرآباد ۔کرناٹک کی ترقی پر ریاستی حکومت کی طرف سے خصوصی توجہ دی جائے گی اور یہاں کے مسائل پر تبادلۂ خیال کے لئے کلبرگی میں ایک خصوصی میٹنگ کا اہتمام کیا جائے گا۔ یہ بات آج وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے کہی۔ سابق رکن اسمبلی وائی جیناتھ پاٹل کی قیادت میں حیدرآباد کرناٹک کے نمائندوں کے ایک وفد کی ملاقات کے دوران کمار سوامی نے کہاکہ ریاستی حکومت حیدرآباد کرناٹک کی ہمہ جہت ترقی کی پابند ہے۔ یہاں تعلیم ، روزگار کے مواقع اور ترقیاتی منصوبوں کی جلد تکمیل کے لئے حکومت عنقریب جامع فیصلے لینے والی ہے۔ انہوں نے کہاکہ اس علاقے کی ترقی کے مختلف منصوبوں پر تبادلۂ خیال کے لئے کلبرگی میں ہی ایک خصوصی میٹنگ کی جائے گی جس میں حیدرآباد کرناٹک کے تمام اضلاع کے نمائندوں کو طلب کرکے وہاں کے مسائل پر تفصیلی بات چیت کی جائے گی۔

وزیراعلیٰ نے کہاکہ ریاستی حکومت حیدرآباد کرناٹک میں صنعتوں کے قیام پر زور دے رہی ہے۔ کلبرگی میں سولار آلات کی تیاری، بیدر میں زرعی آلات کی تیاری، کوپل میں الیکٹرانک پرزوں کی تیاری ، بلاری میں پارچہ جات کی صنعتوں پر مشتمل الگ الگ پلسٹرس تعمیر کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہاکہ حالانکہ یکے بعد دیگرے حکومتوں نے حیدرآباد کرناٹک کے علاقوں کی ترقی کے لئے کافی فنڈ مہیا کرایا ہے، اس کے باوجود بھی ان علاقوں میں ترقیاتی کام اتنے نہیں ہوئے جتنے ہونے چاہئے تھے۔ ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل کے لئے افسروں کی کمی ایک رکاوٹ قرار دی جارہی ہے، حکومت اس کمی کو دور کرنے کے لئے بھی قدم اٹھائے گی۔انہوں نے کہاکہ حکومت ہند نے آئین کی دفعہ 371Jکے تحت حیدرآباد کرناٹک کو خصوصی درجہ عطا کیا ہے اس کی بنیاد پر ریاستی حکومت نے بھی اس علاقے کی ترقی کے لئے قواعد میں کئی تبدیلیاں کی ہیں۔ وفد کی طرف سے اس نشاندہی پر کہ حکومت نے جن ضوابط کو مرتب کیا اس میں کئی خامیاں ہیں ، وزیراعلیٰ نے کہاکہ ان پر غور وخوض کے بعد ان میں مناسب اصلاح کی کوشش ترجیحی بنیاد پر کی جائے گی۔ 

ایک نظر اس پر بھی

بنگلورو میں گڈھوں کو بند کرنے میں بی بی ایم پی کی سست روی پر ہائی کورٹ برہم

شہر میں مسلسل بارش کی وجہ سے سڑکوں پر گڈھوں کی تعداد میں دن بدن اضافے پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے ریاستی ہائی کورٹ نے بی بی ایم پی کی طرف سے گڈھوں کو بند کرنے میں اپنائی جارہی سست روی پر برہمی کا اظہار کیا ہے

ریاستی لیجسلیٹیو کونسل کے لئے نصیر احمد اور وینو گوپال کی نامزدگی 

ریاستی لیجسلیٹیو کونسل سے خالی ہونے والی تین سیٹوں کو پر کرنے کے لئے 4؍ اکتوبر کو ہونے والے انتخاب کے لئے دو کانگریس امیدواروں نصیر احمد اور ایم سی وینو گوپال نے آج ریٹرننگ افسر کے دفتر میں اپنے کاغذات نامزدگی جمع کروائے۔