کان کنی گھوٹالہ:اکھلیش یادوسے بھی پوچھ تاچھ ہوگی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 5th January 2019, 7:48 PM | ملکی خبریں |

لکھنو،5جنوری(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) اتر پردیش کے حمیرپورمیں غیر قانونی کان کنی گھوٹالے میںآئی اے ایس بی چندرکلا کے گھر سی بی آئی نے چھاپہ ماری کی ہے اوران کے خلاف کیس بھی درج کرلیاگیاہے۔

سی بی آئی کا کہنا ہے کہ اس معاملے میں اتر پردیش کے سابق وزیراعلیٰ اکھلیش یادوکے کردار کی بھی جانچ ہوگی۔ غور طلب ہے کہ سال 2012 سے 2013 کے درمیان اکھلیش یادو کان کنی وزیربھی تھے۔

سی بی آئی کا کہنا ہے کہ اس دوران جو بھی لیڈر وزیر رہے ہیں، ان کے کردارکی بھی جانچ کی جائے گی۔ سی بی آئی نے ریت کی غیرقانونی کانکنی سے جڑے معاملے میں ہفتہ کو اتر پردیش اور دہلی میں 12 جگہوں پر چھاپے مارے ہیں۔

حکام نے بتایا کہ آئی اے ایس افسربی چندرکلاسمیت اعلیٰ افسران کی رہائش گاہوں پر اس سلسلے میں چھاپے مارے گئے۔ چندرکلا بدعنوانی کے خلاف اپنی مہمات کے لیے سوشل میڈیا پر بہت مقبول ہیں۔سی بی آئی نے اس معاملے میں بی ایس پی لیڈرستدیودکشت اور ایس پی ایم ایل سی رمیش مشرا کے گھر بھی چھاپہ ماری کی ۔

ذرائع نے بتایاہے کہ چھاپے اترپردیش کے جالون، حمیر پور، لکھنؤ سمیت کئی اضلاع کے ساتھ ہی دہلی میں بھی مارے گئے۔ الہ آباد ہائی کورٹ کی ہدایت پر مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

الیکشن کمیشن کا حلف نامہ - گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات قانون کے مطابق، کمزور پڑ رہی کانگریس 

گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات کو لے کر کانگریس کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے حلف نامہ داخل کیا ہے الیکشن کمیشن نے دو سیٹوں پر الگ الگ انتخابات کرانے کے اپنے فیصلے کو برقرار رکھا۔

بی ایس این ایل کی حالت خراب؛ ملازمین کو جون کی تنخواہ دینے کے لیے نہیں ہیں رقم

رکاری ٹیلی کام کمپنی بی ایس این ایل نے حکومت کو ایک خط  بھیجا ہے، جس میں کمپنی نے آپریشنز جاری رکھنے میں تقریبا نااہلی ظاہر کی ہے۔کمپنی نے کہا ہے کہ رقم میں  کمی کے سبب کمپنی کے ملازمین کو  جون ماہ کی تنخواہ  تقریبا 850 کروڑ روپے  دے پانا مشکل ہے۔کمپنی پر ابھی قریب 13 ہزار کروڑ ...