کان کنی گھوٹالہ:اکھلیش یادوسے بھی پوچھ تاچھ ہوگی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 5th January 2019, 7:48 PM | ملکی خبریں |

لکھنو،5جنوری(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) اتر پردیش کے حمیرپورمیں غیر قانونی کان کنی گھوٹالے میںآئی اے ایس بی چندرکلا کے گھر سی بی آئی نے چھاپہ ماری کی ہے اوران کے خلاف کیس بھی درج کرلیاگیاہے۔

سی بی آئی کا کہنا ہے کہ اس معاملے میں اتر پردیش کے سابق وزیراعلیٰ اکھلیش یادوکے کردار کی بھی جانچ ہوگی۔ غور طلب ہے کہ سال 2012 سے 2013 کے درمیان اکھلیش یادو کان کنی وزیربھی تھے۔

سی بی آئی کا کہنا ہے کہ اس دوران جو بھی لیڈر وزیر رہے ہیں، ان کے کردارکی بھی جانچ کی جائے گی۔ سی بی آئی نے ریت کی غیرقانونی کانکنی سے جڑے معاملے میں ہفتہ کو اتر پردیش اور دہلی میں 12 جگہوں پر چھاپے مارے ہیں۔

حکام نے بتایا کہ آئی اے ایس افسربی چندرکلاسمیت اعلیٰ افسران کی رہائش گاہوں پر اس سلسلے میں چھاپے مارے گئے۔ چندرکلا بدعنوانی کے خلاف اپنی مہمات کے لیے سوشل میڈیا پر بہت مقبول ہیں۔سی بی آئی نے اس معاملے میں بی ایس پی لیڈرستدیودکشت اور ایس پی ایم ایل سی رمیش مشرا کے گھر بھی چھاپہ ماری کی ۔

ذرائع نے بتایاہے کہ چھاپے اترپردیش کے جالون، حمیر پور، لکھنؤ سمیت کئی اضلاع کے ساتھ ہی دہلی میں بھی مارے گئے۔ الہ آباد ہائی کورٹ کی ہدایت پر مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

مودی پھر جیتے تو ملک میں شاید انتخابات نہ ہوں: اشوک گہلوت

کانگریس کے سینئر لیڈر اور راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت نے منگل کو نریندر مودی حکومت کے دور میں ’جمہوریت اور آئین‘ کو خطرہ ہونے کا الزام لگاتے ہوئے دعوی کیا کہ اگر عوام نے مودی کو پھر سے اقتدار سونپا، تو ہو سکتا ہے