بی جے پی کو اس کی جگہ دکھائیں گے، دہلی کے اقتدار سے اکھاڑ پھینکیں گے : راہل گاندھی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th December 2018, 4:36 AM | ملکی خبریں |

چندی گڑھ / موہالی،11؍ دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)کانگریس صدر راہل گاندھی نے دعوی کیا ہے کہ ان کی پارٹی 2019 کے عام انتخابات میں بی جے پی کو اقتدار سے اکھاڑ پھینکیں گے ۔اس دوران راہل نے بی جے پی پر عدلیہ، فوج اور میڈیا کی طرح اداروں کی ساکھ کو کمزور کرنے کا الزام بھی لگایا۔راہل نے کہاکہ ہم بی جے پی کو اس کی جگہ دکھائیں گے اور انتخابات میں ہرائیں گے۔ 2019 میں ہم یقینی بنائیں گے کہ دہلی میں بی جے پی کو اقتدار سے بے دخل کیا جائے۔بی جے پی اور مودی حکومت پر برستے ہوئے کانگریس صدر نے کہا کہ ملک میں خوف کا ایک ماحول بنایا گیا ہے۔انہوں نے الزام لگایا کہ میڈیا کو بھی دبانے کی کوشش کی گئی۔سپریم کورٹ اور فوج کے بہانے مودی حکومت کو گھیرتے ہوئے راہل نے کہاکہ سپریم کورٹ کے جج کھلے طور پر کہہ رہے ہیں کہ انہیں کام کرنے نہیں دیا جا رہا ہے۔فوج کے جنرل کہہ رہے ہیں کہ مودی فوج کا غلط استعمال کر رہے ہیں اور الیکشن کمیشن کو بھی دبایا جا رہا ہے۔کانگریس صدر نے کہاکہ ہم ان اداروں کی حفاظت کے لئے لڑیں گے۔ہم راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) اور بی جے پی کے جیسے نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ مرکز میں حکمراں لوگ میڈیا کو بے روزگاری اور کسانوں کی حالت زار جیسے مسائل نہیں اٹھانے دے رہے ہیں۔سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کی تعریف کرتے ہوئے راہل نے کہا کہ انہوں نے یہ دکھایا کہ کس طرح عاجزی اور احترام کے ساتھ قیادت کیا جاتا ہے۔اس دوران کسانوں اور نوجوانوں کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے بھی راہل نے بی جے پی پر حملہ بولا۔کانگریس صدر نے کہاکہ مودی حکومت کسانوں کو بوجھ سمجھتی ہے۔اہم مسئلہ روزگار اور کسانوں کا واجب الادا ہے۔ملک میں غصہ بڑھتا جا رہا ہے۔کسانوں کے مستقبل کی حفاظت کئے بغیر ملک آگے نہیں بڑھ سکتا یہ اظہر من الشمس ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

الیکشن کمیشن کا حلف نامہ - گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات قانون کے مطابق، کمزور پڑ رہی کانگریس 

گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات کو لے کر کانگریس کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے حلف نامہ داخل کیا ہے الیکشن کمیشن نے دو سیٹوں پر الگ الگ انتخابات کرانے کے اپنے فیصلے کو برقرار رکھا۔

بی ایس این ایل کی حالت خراب؛ ملازمین کو جون کی تنخواہ دینے کے لیے نہیں ہیں رقم

رکاری ٹیلی کام کمپنی بی ایس این ایل نے حکومت کو ایک خط  بھیجا ہے، جس میں کمپنی نے آپریشنز جاری رکھنے میں تقریبا نااہلی ظاہر کی ہے۔کمپنی نے کہا ہے کہ رقم میں  کمی کے سبب کمپنی کے ملازمین کو  جون ماہ کی تنخواہ  تقریبا 850 کروڑ روپے  دے پانا مشکل ہے۔کمپنی پر ابھی قریب 13 ہزار کروڑ ...