منگلورو میں کانگریس کا ریاستی اجلاس؛ ملیکا رجن کھرگے نے کہا : مودی دوبارہ جیت گئے تو ڈکٹیٹرشپ شروع ہوجائے گی - آئندہ الیکشن نہیں ہوگا

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 18th February 2024, 2:05 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

منگلورو 18/ فروری (ایس او نیوز) شہر کے مضافات اڈیار میں کانگریسی کارکنان کے ریاستی اجلاس کا افتتاح کرتے ہوئے کانگریسی صدر ملیکا ارجن کھرگے نے کہا کہ اگر نریندر مودی دوبارہ الیکشن جیت جاتے ہیں تو پھر  ملک میں ڈکٹیٹرشپ کا سلسلہ شروع ہو جائے گا اور  آئندہ ملک میں انتخابات منعقد نہیں ہونگے۔      انہوں نے کہا کہ اگر ملک میں دستور اور جمہوریت کو بچانا ہے تو کانگریس پارٹی کو جیت ملنی چاہیے ۔ اس کے لئے پارٹی کے لیڈروں اور کارکنان کو پوری محنت کرنی ہوگی ۔ 

    بی جے پی نے اپوزیشن کو نقصان پہنچایا :    کھرگے نے بتایا کہ اس وقت اینفورسمنٹ ڈپارٹمنٹ (ای ڈی)  اور انکم ٹیکس ڈپارٹمنٹ سمیت تمام اداروں کو مرکزی حکومت نے اپنے قبضے میں لے لیا ہے ۔ کانگریس کو پوری طرح ختم کرنے کے لئے پارٹی کے تمام بینک کھاتوں کو منجمد کر دیا گیا ہے ۔ لیکن بی جے پی نے الیکشن بانڈ کے ذریعے 6 ہزار کروڑ روپے جمع کر لیے ۔      انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے متحدہ بلاک کو نقصان پہنچانے کا کام مرکزی حکومت کی طرف سے کیا گیا ہے ۔ ریاست کے وزیر اعلیٰ کو دہلی میں ستیہ گرہ کرنا پڑا ۔ ریاست کے سیلاب اور قحط زدہ عوام کو تکلیف پہنچانے کا کام کیا گیا ۔ 

    کانگریسی صدر نے کہا کہ بی جے پی والے مذہب کی بنیاد پرسیاست کرتے ہیں ۔ دلتوں کو دبانے اور کمزور کرنے کے مقاصد رکھتے ہیں ۔ عوام کو چاہیے کہ بی جے پی کو اس کا مناسب جواب دیں ۔ ہمارے کارکنان کو چاہیے کہ کانگریس پارٹی کے کام اور فراہم کی  گئی سہولتوں کے بارے میں عوام کو مکمل جانکاری دیں۔  منگلورو، اڈپی، چکمگلورو جیسے اضلاع میں کانگریس کی قوت کا مظاہرا کرتے ہوئے پارلیمانی سیٹوں پر جیت حاصل کرنی چاہیے ۔

    دیش کا مستقبل خطرے میں ہے :    انہوں نے کہا کہ کانگریس کے زمانے میں ڈاکٹر امبیڈکر نے دستور ہند وضع کیا تھا جس سے غریبوں، دلتوں اور خواتین کو اختیارات ملے تھے ۔ اگر اُس وقت بی جے پی والے اقتدار میں ہوتے تو پھر دستور ہند کی جگہ پر منوسمرتی کو دیش کا آئین بنا دیتے ۔ اس لئے پچھلے دور کو یاد کریں، یاد رکھیں کہ آج  دیش کا مستقبل خطرے میں ہے ۔      دیش کو ہم نے آزادی دلائی , نریگا، انّا بھاگیہ، فوڈ سیکیوریٹی، تعلیمی منصوبے یہ سب ہماری اسکیمیں ہیں ۔ ہم نے جو کہا وہ کرکے دکھایا ۔ مرکز ہماری حکومت کے دوران ملک کو ترقی دلانے کی ذمہ داری پہلے بھی نبھائی ہے ۔ آج بھی کانگریسی اقتدار والی ریاستوں میں اس پر عمل ہو رہا ہے ۔ ہم آئندہ بھی یہ ذمہ داری نبھائیں گے ۔     ملیکا راجن کھرگے نے کہا کہ دکشن کنڑا میں لاکھوں افراد کانگریس کی وجہ سے زمینوں کے مالک بنے ہیں ، مگر کانگریس سے فائدہ اٹھانے والے ہی اسے بھول گئے ہیں ۔ لیکن اب گارنٹیوں سے اٹھائے گئے فائدے کو تو یاد رکھنا چاہیے ۔ 
    
وزیراعلیٰ سدرامیا نے کہا؛     ہماری گارنٹی بی جے پی نے چرائی :    اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سدا رامیا نے کہا کہ ہمارا گارنٹی کا فقرہ بی جے پی نے چرا لیا ہے اور اسے اب مودی گارنٹی کا نام دیا جا رہا ہے ۔ اگر ہمارے کارکنان حکومت کی گارنٹیوں کو عوام تک نہیں پہنچائیں گے تو بی جے پی والے اسے اپنی ہی کارکردگی بتائیں گے۔     بی جے پی کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے سدا رامیا نے کہا کہ اس سے پہلے بی جے پی والے کہتے تھے کہ ہماری گارنٹیوں پر عمل نہیں ہو سکے گا ، مگر اب ہمارا ہی فقرہ چرا کر مودی گارنٹی کہنے لگے ہیں ۔ حالانکہ خود نریندرا مودی نے کہا تھا کہ کانگریس کی گارنٹی اسکیموں سے ریاست دیوالیہ ہو جائے گی ۔ اگر دیوالیہ ہوگیا ہوتا تو کیا 3.71 کروڑٰ روپے کا بجٹ پیش کرنا ممکن تھا ؟ اصل میں بی جے پی والے اتنا جھوٹ اس لئے بول رہے ہیں کہ اب ان کے پاس سرمایہ کاری کے لئے کچھ بچا ہی نہیں ہے ۔ 

    ریاست کے ساتھ نا انصافی :    انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں ٹیکس وصولی کے زمرے میں ہماری ریاست دوسرے نمبر پر ہے اور ہم 4.30 لاکھ کروڑ روپے ٹیکس جمع کرکے مرکز کو دے رہے ہیں لیکن ہمیں اپنے تناسب کے مطابق 50,257 کروڑ روپے کا حصہ نہیں دیا گیا ہے ۔ 15 ویں فائنانس کمیشن کی سفارشات کے مطابق ریاست کو 4,495 کروڑ روپے ، بینگلورو ڈیولپمنٹ کے لئے خصوصی پیکیج سمیت جملہ 11,495 کروڑ روپے مرکزی کی طرف سے ریاست کو ملنے تھے ۔ لیکن کرناٹکا سے منتخب ہو کر فائنانس منسٹر بننے والی نرملا سیتا رامن نے ریاست کے ساتھ نا انصافی کی ہے ۔ اسی طرح نریندرا مودی کرناٹکا کے ساتھ نا انصافی کر رہے ہیں ۔

 بی جے پی کو مرچی کیوں لگتی ہے؟:    انہوں نے پوچھا کہ جب ہم یہ بات کہتے ہیں تو بی جے پی والوں کو کیوں مرچی لگتی ہے ؟ اگر ریاست کے 7 کروڑ کنڑیگاس کے مفادات کا تحفظ کرنے کا خیال ان کے دل میں ہوتا تو دہلی میں ہماری طرف سے کیے گئے دھرنے میں یہ لوگ شامل رہتے ۔ نلین کمار کٹیل، شوبھا کرندلاجے سمیت ریاست سے منتخب کیے گئے کسی ایک رکن پارلیمان نے بھی ریاست کے حق میں ایک لفظ نہیں بولا ۔ تو کیا پھر ایسے لیڈروں آئندہ الیکشن میں جیت ملنی چاہیے ؟ اگر ساحلی علاقے لوگوں کو اپنی عزت نفس کا خیال ہے تو پھر کنڑیگاس کے ساتھ دھوکہ کرنے والے بی جے پی کے ان لیڈروں کو شکست دے کر ان کی جگہ کانگریسی امیدواروں کو منتخب کرنا چاہیے ۔ 

    'مودی گارنٹی' ، 'فیک گارنٹی' :    ریاست کرناٹکا کے کانگریس پارٹی کے نگران کار رندیپ سنگھ سرجے والا نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 'مودی گارنٹی' در اصل 'فیک گارنٹی' ہوتی ہے ۔ کیونکہ مودی نے اس سے پہلے دیا گیا کوئی بھی وعدہ پورا نہیں کیا ہے ۔ اس پس منظر میں ہم نے مودی گارنٹی کو فیک گارنٹی قرار دیا ہے ۔ اس بار الیکشن میں ہمیں جیت ضرور ملے گی ۔ 

    کانگریس کم از کم 20 سیٹیں جیتے گی :        اس موقع پر بولتے ہوئے نائب وزیر اعلیٰ ڈی کے شیوکمار نے کہا کہ کانگریس پارٹی گارنٹیوں کے ذریعے عوام کی ترقی کے لئے  56 ہزار کروڑ روپے کا فنڈ خرچ کر رہی ہے ۔ اپوزیشن والے چاہے جو بھی چالاکی کریں آئندہ پانچ سال تک ریاست میں کانگریس کی حکومت رہے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں عوام کی خدمت کرتے ہوئے تمام باشندوں کو ایک ساتھ  لے  کر چلنے کا کام کانگریس پارٹی سے ہی ممکن ہے ۔ انہوں نے پورے یقین کے ساتھ کہا کہ اس بار پارلیمانی الیکشن میں ریاست سے کانگریس پارٹی کو کم از کم 20 سیٹوں پر ضرور کامیابی ملے گی ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ماہی گیر تنظیموں کا متفقہ فیصلہ - کاسرکوڈ میں تجارتی بندرگاہ کے خلاف ہوگی قانونی جد و جہد

) شہر کے سینٹ جوزیف ہال میں ماہی گیر تنظیموں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی اور کراولی ماہی گیر مزدوروں کی تنظیم کا مشترکہ اجلاس منعقد ہوا جس میں کاسرکوڈ میں مجوزہ نجی تجارتی بندرگاہ کی تعمیر کے خلاف تنظیمی اور قانونی طریقے سے جد وجہد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔

بھٹکل میں ووٹر بیداری مہم؛ سرکاری افسران نے طلبہ کے ساتھ نکالی ریلی؛ سو فیصد ووٹنگ کویقینی بنانے کی کوششیں

بھٹکل میں  صد فیصد ووٹنگ کا ٹارگٹ لے کر   اُترکنڑاضلعی انتظامیہ،  ضلع پنچایت، بھٹکل تعلقہ انتظامیہ اور تعلقہ پنچایت کے زیراہتمام  بھٹکل کے سرکاری آفسران  نے کالج طلبہ کو ساتھ لے کر  ووٹنگ بیداری مہم  کے تحت شاندار ریلی نکالی اور عوام پر زور دیا کہ وہ  کسی بھی صورت میں اپنی ...

بھٹکل میں مسلم رپورٹروں کی طرف سے غیر مسلم رپورٹروں کوپیش کی گئی عید الفطر کی مٹھائیاں

ورکنگ جرنلسٹ اسوسی ایشن   بھٹکل  کے مسلم رپورٹروں کی طرف سے بھٹکل کے غیر مسلم رپورٹروں کو عید الفطر کی مناسبت سے مٹھائیاں تقسیم کی گئیں اور اُنہیں عید کے تعلق سے  معلومات فراہم کی گئیں۔

بی جے پی نے کانگریس ایم ایل اے کو 50 کروڑ روپے کی پیشکش کی؛ سدارامیا کا الزام

کرناٹک کے وزیر اعلی سدارامیا نے ہفتہ کو بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر الزام لگایا کہ وہ کانگریس کے اراکین اسمبلی کو وفاداری تبدیل کرنے کے لیے 50 کروڑ روپے کی پیشکش کرکے 'آپریشن لوٹس' کے ذریعے انکی حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوششوں میں ملوث ہے۔

لوک سبھا انتخاب 2024: کرناٹک میں کانگریس کو حاصل کرنے کے لیے بہت کچھ ہے

کیا بی جے پی اس مرتبہ اپنی 2019 لوک سبھا انتخاب والی کارکردگی دہرا سکتی ہے؟ لگتا تو نہیں ہے۔ اس کی دو بڑی وجوہات ہیں۔ اول، ریاست میں کانگریس کی حکومت ہے، اور دوئم بی جے پی اندرونی لڑائی سے نبرد آزما ہے۔ اس کے مقابلے میں کانگریس زیادہ متحد اور پرعزم نظر آ رہی ہے اور اسے بھروسہ ہے ...

تعلیمی میدان میں سرفہرست دکشن کنڑا اور اُڈپی ضلع کی کامیابی کا راز کیا ہے؟

ریاست میں جب پی یوسی اور ایس ایس ایل سی کے نتائج کا اعلان کیاجاتا ہے تو ساحلی اضلاع جیسےدکشن کنڑا  اور اُ ڈ پی ضلع سر فہرست ہوتے ہیں۔ کیا وجہ ہے کہ ساحلی ضلع جسے دانشوروں کا ضلع کہا جاتا ہے نے ریاست میں بہترین تعلیمی کارکردگی حاصل کی ہے۔

این ڈی اے کو نہیں ملے گی جیت، انڈیا بلاک کو واضح اکثریت حاصل ہوگی: وزیر اعلیٰ سدارمیا

کرناٹک کے وزیر اعلیٰ سدارمیا نے ہفتہ کے روز اپنے بیان میں کہا کہ لوک سبھا انتخاب میں این ڈی اے کو اکثریت نہیں ملنے والی اور بی جے پی کا ’ابکی بار 400 پار‘ نعرہ صرف سیاسی اسٹریٹجی ہے۔ میسور میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے سدارمیا نے یہ اظہار خیال کیا۔ ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ ...

بی جے پی نے الیکٹورل بانڈ کے ذریعے دنیا کا سب سے بڑا گھوٹالہ کیا، وزیر اعظم بدعنوانی کے چیمپین ہیں! راہل گاندھی

راہل گاندھی نے کانگریس اور سماجوادی پارٹی کی مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی کو بدعنوانی کا چیمپین قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے الیکٹورل بانڈ کے ذریعے بھتہ خوری کی اور دنیا کا سب سے بڑا گھوٹالہ انجام دیا۔ راہل گاندھی نے سوال کیا کہ اگر ...

بی جے پی اپنی ناکامیوں سے توجہ بھٹکانے کے لیے مذہب کی سیاست کر رہی، سچن پائلٹ نے الیکشن کمیشن پر بھی اٹھائے سوال

کانگریس لیڈر سچن پائلٹ نے جموں و کشمیر میں آج انتخابی تشہیر کے دوران بی جے پی حکومت کو تو تنقید کا نشانہ بنایا ہی، الیکشن کمیشن کو بھی کٹہرے میں کھڑا کر دیا۔ انھوں نے منگل کے روز ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جب اپوزیشن پارٹیوں کے اکاؤنٹس پر لین دین سے متعلق روک لگائی گئی ...

بی جے پی و آر ایس ایس آئین کو تباہ کرنا چاہتی ہیں جبکہ کانگریس اسے بچانے کی کوشش کر رہی ہے: راہل گاندھی

کیرالہ کے وائناڈ میں کانگریس کے لیڈر راہل گاندھی نے بی جے پی پر سخت حملہ کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی و آر ایس ایس ملک کے آئین کو ختم کرنے کی کوشش کر رہی ہیں جبکہ کانگریس اسے بچانے کی کوشش میں مصروف ہے۔ یہ بیان راہل گاندھی روڈ شو کے دوران دیا جس کو سن کر عوام پورے جوش میں دکھائی دی ...

لوک سبھا انتخابات 2024: کانگریس نے امیدواروں کی نئی فہرست جاری

کانگریس نے لوک سبھا انتخاب کے پیش نظر اپنے امیدواروں کی ایک نئی فہرست جاری کر دی ہے۔ اس فہرست میں جھارکھنڈ کی تین لوک سبھا سیٹوں پر امیدواروں کے ناموں کا اعلان کیا گیا ہے۔ جاری فہرست کے مطابق گوڈا سے دیپکا پانڈے سنگھ، چترا سے کرشنانند ترپاٹھی اور دھنباد سے انوپما سنگھ کو ...

مرکزی وزارت داخلہ کی دوسری منزل پر آتش زدگی، زیروکس مشین، کمپیوٹر اور دیگر دستاویزات خاکستر

آگ لگنے کے واقعات یوں تو ہوتے ہی رہتے ہیں مگر جب حکومت کے دفاتر میں آگ لگنے لگے تو معاملہ کچھ زیادہ ہی سنگین ہو جاتا ہے۔ آتش زدگی کا ایسا ہی ایک واقعہ دہلی میں مرکزی وزارت داخلہ کے دفتر میں پیش آیا ہے۔ اس حادثے میں کسی شخص کے متاثر ہونے کی تو کوئی خبر نہیں ہے البتہ زیروکس ...

تیجسوی یادو کا وزیراعظم پر سخت حملہ؛ 10 سالوں میں مودی جی نے صرف غریبی، بے روزگاری، مہنگائی اور جملہ دیا

لوک سبھا انتخاب سے قبل بیان بازیوں نے رفتار پکڑ لی ہے۔ برسراقتدار طبقہ اپنی خوبیاں بیان کر رہا ہے اور اپوزیشن لیڈران حکومت کی ناکامیوں و عوام مخالف پالیسیوں کو عوام کے سامنے رکھ رہے ہیں۔ اس درمیان تیجسوی یادو نے پٹنہ میں مرکز کی مودی حکومت پر آج زبردست حملہ کیا۔