کورونا کی وبا کے درمیان 8/کروڑ بچوں کی ٹیکہ کاری ہوگی متاثر

Source: S.O. News Service | Published on 24th May 2020, 12:00 PM | عالمی خبریں |

جنیوا،24؍مئی(ایس او نیوز؍یواین آئی) عالمی وبا کورونا وائرس(کووڈ 19) نے دنیا بھر میں جہاں قہر برپا کیا ہوا ہے وہیں اس کی وجہ سے خسرہ،پولیو اور ڈپ تھیریا جیسی بیماریوں کا سامنا کررہے کم از کم 68؍امیرو غریب ملکوں کے ایک سال سے کم عمر کے تقریباً آٹھ کروڑ بچوں کی ٹیکہ کاری مہم میں رخنہ آنے کا خدشہ ہے -

عالمی ادارہ صحت(ڈبلیو ایچ او)، اقوام متحدہ کا چائلڈ ویلفیر فنڈ (یونیسیف)اور ویکشن الائنز،گاوی کی جانب سے یہ وارننگ ایسے وقت میں آئی ہے،جب آئندہ چار جون کو ہونے جارہے عالمی ویکسین چوٹی کانفرنس میں دنیا بھر کے لیڈر ٹیکہ کاری مہم کو قائم رکھنے اور اقتصادی طورپر کمزور ملکوں میں وبا کے اثر کو کم کرنے میں مدد کے لئے ایم اسٹیج پر جٹیں گے -ڈبلیو ایچ او،یونیسیف،گاوی اور سابن ویکسین انسٹی ٹیوٹ کی جانب سے جمع کئے گئے اعدادو شمار کے مطابق کم از کم 68 ملکوں میں باقاعدہ ٹیکہ کاری پروگراموں پر بہت حد تک نامناسب اثر پڑا ہے -ان ملکوں میں ایک سال سے کم عمر والے آٹھ کروڑ بچوں کے اس سے متاثر ہونے کا خدشہ ہے -گاوی کے سی ای او ڈاکٹر سیت برکلے نے کہا کہ حالیہ وقت میں زیادہ تر ملکوں کے زیادہ تر بچے ویکسین بچاؤ امراض سے محفوظ ہیں حالانکہ کورونا وائرس کی وبا کی وجہ سے ٹیکہ کاری مہم میں رخنہ آنے کی وجہ سے خسرہ اور پولیو جیسی بیماریوں کے ایک بار پھر سے سراٹھانے کا خطرہ بنا ہوا ہے -انہوں نے کہا کہ ٹیکاکاری پروگراموں کے ذریعہ ہی اس خطرے کو روکا جاسکے گا اور اس کے لئے یہ یقینی بنانا ہوگا کہ کورونا کا ٹیکہ بنانے کے لئے ہمارے پاس ایک بنیادی ڈھانچہ ہو-

ایک نظر اس پر بھی