گوکرن: کرناٹک میں سیاحت کیلئے ایک مشہور ساحلی علاقہ

Source: S.O. News Service | Published on 8th June 2024, 12:37 AM | ساحلی خبریں | سیر و تفریح |

بھٹکل ،7/جون (ایس او نیوز ) ضلع اُترکنڑا میں جس طرح سیاحت کے لئے مرڈیشور پورے ملک میں مشہور ہے، اُسی  طرح  کمٹہ تعلقہ میں واقع گوکرن  بیچ بھی  سیاحت کے لئے ایک بہترین علاقہ ہے جہاں قدیم مندروں کے ساتھ بحر عرب کا دلکش ساحل ہے، پہاڑی پر سے سمندر کا نظارہ بڑا ہی دلکش لگتا ہے۔

چونکہ  گوکرن گوا کے قریب واقع ہے، اکثر سیاح جو گوا میں سیاحت کے لئے جاتے ہیں،  گوکرن بھی پہنچ کر یہاں کے پرکشش مناظر سے لطف اندوزضرور ہونا پسند کرتے ہیں۔گوکرن چونکہ چھوٹا سا علاقہ ہے  لیکن  چھٹی کا بھرپور لطف اٹھاسکتے ہیں   اور ساحل سمندر پر مزے کرنا چاہتے ہیں، تو  گوکرن کے مشہور سیاحتی مقامات پرکشش ثابت ہوسکتے ہیں۔

ہالف مون بیچ: ’ہاف مون بیچ‘گوکرن میں واقع ایک چھوٹا سا ساحل ہے، لیکن اس کےباوجود اسے گوکرن کے مشہور سیاحتی مقام کے طور پر جاناجاتا ہے۔ یہ اوم بیچ سے ایک چٹان سے الگ ہے جہاں سے سیاح بحیرہ عرب کا شاندار نظارہ کر سکتے ہیں۔ جبکہ ساحل کے ساتھ واقع بہت سے ہندوستانی طرز کی جھونپڑیاں اس جگہ کو مزید دلکش بناتی ہیں وہ یہاں آنے والے سیاحوں کو مکمل طور پر روایتی اور گھریلو تجربہ فراہم کرتی ہیں۔ اس کے علاوہ سیاح یہاں دوپہر کے وقت دھوپ سینک سکتے ہیں اور رات کے وقت جھولے میں آرام کر سکتے ہیں، جس کی وجہ سے بڑی تعداد میں سیاح گوکرن آتے ہیں۔ 

پیراڈائز بیچ: ’پیراڈائز بیچ‘ گوکرن کا ایک اور خوبصورت ساحل ہے، جسےگوکرن کےبہترین مقامات میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔ پیراڈائز بیچ ہاف مون بیچ کے قریب واقع ہے جسے ’فل مون بیچ‘بھی کہاجاتا ہے۔ یہ خوبصورت ساحل سمندر اپنی چٹانوں اور پرسکون ماحول کے لیے کافی مشہورہے، جہاں مقامی لوگ اور گوکرن آنے والے سیاح  پر سکون اور خوشگوار ماحول میں وقت گزارسکتے  ہیں۔ اگر آپ بھی خاندانی تعطیلات کے لیے گوکرن جانےوالے ہیں، تو آپ اپنے سفر میں پیراڈائز بیچ کا دورہ کر سکتے ہیں۔

کُڈلے بیچ : ’کڈلے بیچ‘گوکرن کا ایک اور مشہورساحل ہے، جسے ساحل سمندر سے محبت کرنے والوں کے لیے جنت سمجھا جاتا ہے۔ہالف  مون بیچ اور اوم بیچ سے تھوڑے فاصلے پر واقع، کڈلے بیچ اپنے پرسکون ماحول اور غروب آفتاب کے حیرت انگیز نظاروں کیلئے مشہور ہے۔ اس ساحل پر سیاحوں کا زیادہ ہجوم نہیں ہوتا، اسی لیے یہ ساحل سمندر کی لہروں کے درمیان معیاری وقت گزارنے کے لیے بہترین جگہ ہے۔ سیاحوں کے ساتھ ساتھ مقامی لوگ بھی صبح اور شام کی سیرکیلئے اس ساحل کو پسند کرتے ہیں۔

گوکرن بیچ : گوکرن بیچ شہر کے بڑے ساحلوں میں سے ایک ہے جسے گوکرن سٹی کے نام سے جانا جاتا ہے۔ یہ ایک لمبا کھلا ساحل ہے جس میں بہت سے سیاح اور مقامی لوگ آتے ہیں۔ اسی لیے اگر آپ اپنے اہل خانہ کے ساتھ آرام دہ وقت گزارنا چاہتے ہیں تو آپ کو اس سےگریزکرنا چاہیے۔ اس کے برعکس، یہ ساحل دوستوں کے ساتھ گھومنے کے لیے اچھی جگہ ہے۔ 

اوم بیچ: گوکرن شہرمیں واقع ’اوم بیچ‘کرناٹک کا ایک حیرت انگیز ساحل ہے جو درحقیقت اوم کی شکل سے ملتا ہے جو اسے کافی دلچسپ بناتا ہے۔ یہ ساحل بہت سارے دلچسپ کھیلوں کی سرگرمیاں پیش کرتا ہے جیسے اسپیڈ بوٹنگ، سرفنگ، سنسنی کے متلاشی سیاحوں کے لیے کشتی رانی۔ جبکہ غروب آفتاب کے وقت بھی اس ساحل کا نظارہ دلفریب ہوتا ہے جو واقعی قابل دید ہے۔ اوم بیچ کی منفرد سیاہ چٹانیں بھی بہت سارے مسافروں کو اپنی طرف متوجہ کرتی ہیں۔ 

مرجان قلعہ : ’مرجان قلعہ‘،  شہر سے11کلومیٹرکےفاصلے پر واقع ہے، گوکرن کے اہم سیاحتی مقامات میں سے ایک ہے۔ گوکرن اپنےساحلوں کےساتھ تاریخی مقامات کے لیےبھی مشہور ہے جس میں مرجان قلعہ ایک اہم مقام ہے۔ مرجان قلعہ 16ویں صدی میں نواز سلطنت کے ذریعے تعمیر کیا گیا تھا اور بعد میں اسے وجیا نگر سلطنت نےاپنے قبضے میں لے لیا تھا۔ یوں توقلعہ کا ایک بڑا حصہ اب کھنڈرات میں تبدیل ہوچکا ہے لیکن اپنی تاریخی اہمیت اور سرسبز و شاداب مقام کے باعث یہ قلعہ سیاحوں کی توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے۔ 

یانا غار : مغربی گھاٹ میں سہیادری پہاڑی سلسلے کی سدابہار ہریالی کے بیچ واقع یانا ایک بہت بڑا ہل اسٹیشن ہےجوہرسال ہزاروں سیاحوں کو اپنی طرف متوجہ کرتا ہے۔ مذہبی اہمیت کے ساتھ ساتھ، یانا غارٹریکروں اورپرندوں کو دیکھنے والوں کے لیے بہترین مقام ہے۔ 

شیوا غار : گوکرن میں گھومنے کے لیے بہترین مقامات میں سے ایک کڈلے ساحل کے قریب واقع شیوا غار ہے جو ابھی تک بہت سے سیاحوں کو معلوم نہیں ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

اتر کنڑا میں نیشنل ہائی وے پر حادثے میں موت ہونے پر افسران کے خلاف درج ہوگا مقدمہ - نومنتخب رکن پارلیمان کاگیری نے دی وارننگ

نومنتخب رکن پارلیمان وشویشورا ہیگڑے کاگیری نے محکمہ جاتی افسران کے ساتھ منعقدہ اپنی پہلی میٹنگ میں ضلع پولیس سپرنٹنڈنٹ کو سخت ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ اگر ضلع اتر کنڑا میں غیر سائنٹفک انداز میں کیے گئے نیشنل ہائی وے کے تعمیراتی کام کی وجہ سے حادثہ رونما ہوتا ہے اور اس میں عام ...

بھٹکل تعلقہ ہاسپٹل رکھشا سمیتی کی میٹنگ میں وزیر منکال وئیدیا نے دیا تیقن : 250 بستروں والا اسپتال جلد ہوگا منظور

بھٹکل تعلقہ ہاسپٹل کے ہال میں ایڈمنسٹریٹیو میڈیکل آفیسر ڈاکٹر سویتا کامت کی صدارت میں منعقدہ ہاسپٹل رکھشا سمیتی کی میٹنگ میں ضلع انچارج وزیر منکال وئیدیا نے تیقن دیا کہ یہاں 250 بستروں والا ہاسپٹل جلد ہی منظور ہو جائے گا

بھٹکل پولیس گراونڈ میں راستے پر لگے بیریکیڈس - اسسٹنٹ کمشنر نے دیا 'جوں کی توں حالت' برقرار رکھنے کا حکم

پولیس میدان سے گزرنے والے عام پیدل راستے پر پولیس کی طرف سے لگائی گئی رکاوٹوں کے سلسلے میں بھٹکل اسسٹنٹ کمشنر ڈاکٹر نئینا نے اس زمین کا سروے مکمل ہونے تک جوں کی توں حالت برقرار رکھنے کے احکام جاری کیے

منگلورو میں طلباء کے والدین کو دھمکی والے فون کالس - پولیس کمشنر نے کہا : پولینڈ اور پاکستان کے کوڈ کا ہوا ہے استعمال

منگلورو شہر کے علاوہ سورتکل میں 11 اور 12 جون کو کالجوں میں زیر تعلیم طلباء کے والدین کو ان کے بچوں کے اغوا یا سنگین جرائم میں گرفتاری کی بات کہتے ہوئے تاوان کی رقم طلب کرنے کے  جو دھمکی والے فون کالس آئے تھے اس کے سلسلے میں پولیس کمشنر نے انوپم اگروال نے بتایا کہ فریب کاروں نے فون ...

بھٹکل میں وزیر منکال وئیدیا نے افسران سے کہا : کام کرنا ہے تو رہیں ورنہ دوسری جگہ چلے جائیں 

اسسٹنٹ کمشنر کے دفتر میں مانسون اور قدرتی آفات سے متعقلہ معاملات سے نمٹنے کے اقدامات کا جائزہ لینے کے لئے کل جو میٹنگ منعقد ہوئی تھی اس میں افسران سے خطاب کرتے ہوئے ضلع انچارج وزیر منکال وئیدیا نے کہا جن لوگوں کو کام کرنے میں دلچسپی ہے وہ لوگ یہاں رہیں اور جنہیں دلچسپی نہیں ہے ...

منگلورو : بی جے پی کارکنان کے خلاف کیس داخل کرنے میں کانگریس کا ہاتھ ہے ۔ کیپٹن چوتا کا الزام

دکشن کنڑا حلقے سے بی جے پی کے نومنتخب رکن پارلیمان کیپٹن برجیش چوتا نے کانگریس پر الزام لگایا کہ اس کے دباو کی وجہ سے بولیار چاقو زنی معاملے میں پولیس نے بی جے پی کارکنان پر کیس داخل کیا ہے ۔

میری پسندیدہ جگہ دارجلنگ ..........آز: محمد فیضیاب احمد قاسمی

 دارجلنگ جسے اسکی خوبصورتی کی وجہ سے queen of hill یعنی پہاڑوں کی ملکہ کہا جاتا ہے یہا ں آسمان چھوتے پہاڑ ' سر سبز وشاداب وادیاں  بہتے آبشار ' اور وائلڈ لائف آپ کا دل موہ لیں گے  ہمالیہ سے قریب ہونے کی وجہ سے یہاں پورے سال سردی رہتی ہے مزید سمندری سطح سے 8000 فٹ کی اونچائی کی وجہ سے بھی ...