جمعیۃعلماء کیرالا کے صدر مولانا عبد الشکور کی قیادت میں مہاراشٹر، تامل ناڈو، آندھرا پردیش اورکرناٹک کی ریاستی جمعیتوں کی ریلیف اور باز آباد کاری کی منصوبہ بندی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 6th September 2018, 11:52 AM | ملکی خبریں |

ممبئی 6؍ ستمبر (ایس او نیوز؍پریس ریلیز)  جمعیۃعلماء مہاراشٹر کے ریاستی وفد کی اطلاع کے مطابق کیرالا کے دو مقامات آلوا اور کایاکلم سیلاب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں ،اور حکومت کیرالا اب تک وہاں کے نقصانات کا سروے نہیں کرا سکی ہے،گو کہ حکومت کا یہ کہنا ہے کہ 10ستمبر تک اس کا سروے مکمل ہوجائے گا ۔

لیکن جمعیۃعلماء مہاراشٹر کے ریاستی وفد کا کہنا ہے کہ بظاہر اس کا امکان نظر نہیں آتا ہے کیوں کہ ابھی بھی بہت سے مقامات زیر آب ہیں اور وہاں کی آبادیاں جزیرہ نما بنی ہوئی ہیں ،جہاں پرپینے کا پانی اور کھانے کی اشیاء پہونچانے کی اشد ضرورت ہے ،جو بذریعہ کشتی ہی ممکن ہے۔

جمعیۃعلماء مہاراشٹر کے ریاستی وفد کے رکن مفتی محمد یوسف قاسمی(خازن جمعیۃعلماء مہاراشٹر)کی اطلاع کے مطابق مولا ناعبد الشکور صاحب صدر جمعیۃعلماء کیرالا کی نگرانی اور رہنمائی میں ریلیف بہم پہونچانے اور باز آباد کاری کا کام عمل میں لایا جائے گا۔

مفتی محمد یوسف قاسمی کا یہ بھی کہنا ہے کہ بہت سے مقامات پر مکانات کا نقصان کم ہوا ہے لیکن گھریلو سامان بالکل ضائع ہوگئے ہیں اور جا بجا ضائع شدہ سامانوں کے ڈھیر نظر آتے ہیں ۔واضح رہے کہ صوبہ مہاراشٹر سے ناگپور کے رضاکاروں کا ایک وفد پہونچ گیا ہے۔جس کو متاثرہ مقامات میں ریلیف کی تقسیم کے لئے مامور کیا جائے گا۔

اس وفد میں ریاست مہاراشٹر سے مولانا حافظ مسعود احمد حسامی (نائب صدر جمعیۃعلماء مہاراشٹر)مولانا حلیم اللہ قاسمی (جنرل سکریٹری جمعیۃعلماء مہاراشٹر)مفتی محمد یوسف قاسمی (خازن جمعیۃعلماء مہاراشٹر) کے علاوہ کرناٹک سے مفتی عبد الرحیم ،آندھرا پردیش سے مفتی محمد معصوم ثاقب،تاملناڈو سے حافظ محمد شریف اور میسور سے حافظ ارشد بھی اپنے رفقاء کے ساتھ شریک کاررہے۔

ایک نظر اس پر بھی

روی داس مندر گرائے جانے کے خلاف دلت کمیونٹی کے ہزاروں لوگوں نے کیامظاہرہ

شہر میں حال ہی میں ایک روی داس مندر کو گرائے جانے کی مخالفت میں ملک کے مختلف حصوں سے آئے دلت کمیونٹی کے لوگوں نے ہاتھوں میں نیلے رنگ کے جھنڈے لے کر جھنڈے والان سے رام لیلا میدان تک بدھ کو احتجاجی مظاہرہ کیا۔

خواتین اور نابالغ لڑکیوں کے ساتھ جنسی استحصال کے الزام میں ایک اور بابا گرفتار

ہندوستان کے کئی مشہور و معروف بابا خواتین کے ساتھ جنسی استحصال اور نابالغوں کے ساتھ مبینہ طور پر عصمت دری کے الزام میں یا تو گرفتار کر لیے گئے ہیں یا پھر انھیں گرفتار کرنے کا حکم جاری ہو چکا ہے۔

این ڈی ٹی وی کے بانیان کے خلاف سی بی ائی نے نیا مقدمہ درج کیا‘ چیانل نے کاروائی کو ”مضحکہ خیز“ قراردیا

ایف ائی آر میں دعوی کیاگیا ہے کہ ٹی وی چیانل نے 2004اور2010کے درمیان جورقم اکٹھا کی ہے وہ ”وہ ایک بدنام لین دین کی ایک جال کے ذریعہ نامعلوم سرکاری عہدیدیروں کے پیسے کو لانے میں اعتراض ہے“