کسانوں کا قرض معاف کرے مودی حکومت:اشوک گہلوت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 2nd January 2019, 1:07 AM | ملکی خبریں |

جے پور ،یکم جنوری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) راجستھان کے وزیراعلیٰ اشوک گہلوت نے مطالبہ کیا کہ مرکز کی این ڈی اے حکومت ملک بھر کے کسانوں کا قرض معاف کرے۔

انہوں نے کہاہے کہ کانگریس نے راجستھان، مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ میں اقتدار میں آنے کے بعد کسانوں کی قرض معافی کا اپنا وعدہ پوراکیاہے۔اس اعلان پر کام شروع ہو چکا ہے اور اب مرکزی حکومت کو بھی قرض معافی کرنی چاہئے۔گہلوت نے بتایاہے کہ این ڈی اے حکومت نے چنندہ صنعت کاروں کے 3.5 لاکھ کروڑ روپے کا قرض معاف کر دیا ہے جبکہ کسانوں کو ترجیح دی جانی چاہیے۔سابق یو پی اے حکومت نے کسانوں کے 72000 کروڑ روپے کے قرض معاف کئے تھے اور کانگریس حکومت والی ریاستوں راجستھان، مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ میں کسانوں کے قرض معافی کا اعلان کیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ریاست میں جلد ہی کسانوں کی ریلی کا انعقاد کیا جائے گا۔اس بارے میں پارٹی کے ریاستی سچن صدر پائلٹ سے بحث کے بعد ریلی منعقد کرنے کے پروگرام کو حتمی شکل دی جائے گی۔گہلوت نے وزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی صدر امت شاہ کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ملک میں صرف دو شخص حکومت چلا رہے ہے۔انہوں نے کہاکہ ملک میں بی جے پی نہیں بلکہ دو شخص نریندر مودی اور امت شاہ حکومت چلا رہے ہیں۔بی جے پی اور آر ایس ایس کے لوگ بھی اس بات کو سمجھ گئے ہیں۔ملک میں نفرت، تشدد اور بے حسی کا ماحول ہے۔گزشتہ لوک سبھا انتخابات میں عوام کے ساتھ جھوٹے وعدے کئے تھے، لیکن انتخابات کے بعد حالات بدل گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مودی دوبارہ ملک کے وزیر اعظم نہیں بنیں گے۔ریاست کی اقتصادی حالت کے بارے میں پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعلی نے کہا کہ 2013 ء میں بی جے پی حکومت نے جب اقتدار سنبھالا اس وقت ریاست کا قرضہ 1.29 لاکھ کروڑ روپے تھا جو فی الحال تقریباً3 لاکھ کروڑ روپے ہو گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ریاست کا قرضہ 30 سالوں میں 1.20 لاکھ کروڑ روپے تھا جو سبکدوش ہونے والے وسندھرا راجے حکومت کے پانچ برسوں کی مدت کار میں 1.29 لاکھ کروڑ روپے سے بالاتر تقریباً 3 لاکھ کروڑ روپے تک پہنچ گیا ہے۔گہلوت نے کہاکہ ریاست میں پانچ سال کے اقتدار کا اب اختتام ہو گیا ہے اور حکومت کے تبدیل کرنے کے بعد گڈ گورننس کے ایجنڈے پر فیصلہ لیے جا رہے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بورڈنگ پاس پر مودی کی تصویر پر تنقید کے بعد ایئر انڈیا نے انہیں واپس لیا

ایئر انڈیا نے تنقید کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی اور گجرات کے وزیر اعلی وجے روپانی کی تصاویر والے بورڈنگ پاس واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ایئر لائنز نے پہلے کہا تھا کہ تصاویر والے بورڈنگ پاس تیسری پارٹی کے اشتہارات کے طور پر جاری کئے گئے اور اگر یہ مثالی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ...

دہلی میں خدمات پر کنٹرول کے معاملے پر فیصلے کیلئے وسیع بنچ بنائے عدالت عظمی: آپ حکومت

قومی راجدھانی دہلی میں انتظامی خدمات پر کنٹرول کے معاملے پر جلد فیصلہ لینے کے لیے آپ حکومت نے پیر کو سپریم کورٹ سے ایک وسیع بنچ قائم کرنے کی درخواست کی۔چیف جسٹس رنجن گوگوئی اور جسٹس دیپک گپتا کی بنچ کے سامنے اس معاملے کا ذکر کیا گیا تو بنچ نے آپ حکومت کے وکیل سے کہا کہ اس پر غور ...

عدالت نے منی لانڈرنگ کیس میں گوتم کھیتان اور تین دیگر کو طلب کیا

دہلی کی ایک عدالت نے منی لانڈرنگ کے ایک معاملے میں ای ڈی کی طرف سے چارج شیٹ داخل کئے جانے کے بعد پیر کو وکیل گوتم کھیتان، ان کی بیوی ریتو اور دو کمپنیوں اسمیکس اور ونڈفور کو طلب کیا۔خصوصی جج اروند کمار نے چاروں ملزمان کو چار مئی کو پیش ہونے کے لئے کہا ہے

سبرامنیم سوامی بولے: میں برہمن ہوں، چوکیدار نہیں ہو سکتا

کانگریس کی جانب سے 'چوکیدار چور ہے" کا نعرہ اچھالے جانے کے جواب میں بھارتیہ جنتا پارٹی نے " میں بھی چوکیدار ہوں' کیمپین شروع کیا۔ اس کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی سمیت بی جے پی کے تقریبا سبھی لیڈران نے مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹویٹر پر اپنے نام کے آگے 'چوکیدار' لفظ لگایا لیا۔

سشیل کمارمودی کا شتروگھن سنہا کو مشورہ، انتخابات نہ لڑیں، پولنگ ایجنٹ تک نہیں ملے گا

بی جے پی کے سینئر لیڈر اور بہار کے نائب وزیراعلیٰ سشیل کمارمودی نے پارٹی کے باغی لیڈر شتروگھن سنہاپرکراراحملہ بولاہے۔سشیل مودی نے کہا کہ شتروگھن سنہا کو پٹنہ صاحب لوک سبھا لوک سبھا میں پولنگ ایجنٹ ملنا مشکل ہو جائے گا۔