ووٹر لسٹ سے نام بغیر نوٹس کے ہٹادینا غیر قانونی جو بھی لسٹوں سے نام غائب کرنے کے ذمہ دار ہیں ان پر کارروائی کی جائے: سدارامیا

Source: S.O. News Service | Published on 26th November 2022, 12:25 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 26؍نومبر (ایس او  نیوز)سابق وزیر اعلیٰ اور ریاستی اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر سدارامیا نے کہا ہے کہ بنگلورو کے ووٹر لسٹوں سے لاکھوں کی تعداد میں نام بغیر نوٹس دئیے نکال دئیے گئے ہیں، اس لئے الیکشن کمیشن کی طرف سے جو ڈرافٹ ووٹر لسٹ جاری کی گئی ہے، اسے فوری طور پر منسوخ کر دیا جائے اور ووٹر لسٹوں سے ناموں کو ہٹانے کے معاملہ میں شامل این جی او کے ساتھ ساتھ اس کو بڑھاوا دینے والے وزیر اعلیٰ اور دیگر وزراء کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔

اپنے ایک اخباری بیان میں انہوں نے کہا کہ چیلومے نامی این جی او کو ووٹر لسٹوں پر نظر ثانی کی ذمہ داری دینے کے پیچھے بی بی ایم پی اور ریاستی لیکشن کمیشن کے افسر بھی شامل ہیں۔ الیکشن کمیشن کو اس کی اطلاع پہلے ہی سے تھی اور اس کی طرف سے بی بی ایم پی کو ایک مکتوب بھی روانہ کیا گیا۔کمیشن کی تنبیہ کے باوجود بھی چیلومے کو کام جاری رکھنے کا موقع فراہم کیاگیا۔ انہوں نے کہا کہ ووٹر لسٹوں پر نظر ثانی کے کام کے لئے ایک ایک نوجوان کو 25 تا30ہزار روپے کی تنخواہ پر مقرر کیا گیا۔ اس کے لئے فنڈس کہاں سے آئے، اس کی جانچ ہونی چاہئے۔ اس بات کی جانچ بھی ہونی چاہئے کہ ہزاروں نوجوانوں کو اچھی تنخواہ پر رکھ کر ووٹر لسٹوں میں چھیڑ چھاڑ کسے فائدہ پہنچانے کے لئے کروائی گئی اور اس کمپنی کو کس ذریعہ سے پیسے ادا کئے گئے اور کیوں؟۔

انہوں نے کہا کہ ووٹر لسٹوں میں نام حذف کرنے کا اتنا بڑا گھپلہ بے نقاب ہونے کے باوجود اب تک بی بی ایم پی کے کسی بڑے افسر کے خلاف کارروائی کا نہ ہونا اس بات کا ثبوت ہے کہ اس معاملہ میں شامل وزیر اعلیٰ، وزراء اور اوراراکین اسمبلی و کونسل کو بچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ سارے معاملہ میں ان بے روزگار نوجوانوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے جو تنخواہ کے عوض میدان میں اتر کر کام کر رہے تھے۔ یہ خبر ملی تھی کہ چیلومے کے دفتر میں ایک وزیر کے لیٹر ہیڈ برآمد کئے گئے تو پھر اب تک اس پر کوئی کارروائی کیوں نہیں کی گئی۔ سدارامیا نے کہا کہ کسی طرح کے فارم داخل کئے بغیر ووٹر لسٹ میں ناموں کا اندراج اور اخراج ممکن ہی نہیں ہے، ایسے میں بغیر فارم کے کس کے کہنے پر ووٹر لسٹوں میں ناموں کی شمولیت اور اخراج کیا گیا،اس کی حقیقت سامنے لانے کی ضرورت ہے۔ سدارامیا نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی یہ ذمہ داری ہے کہ جو دھاندلی ہوئی، اس کے بارے میں حقائق عوام کے سامنے لایاجائے۔ جن جن لوگوں نے ووٹر لسٹوں میں چھیڑ چھاڑ کی ہے،ا ن کی نشاندہی ہو چکی ہے، اب ان کو جیل بھیجنے کا کام ہو نا چاہئے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں بی جے پی حکومت کے دوران ہندوؤں کا سب سے زیادہ قتل ہوا، یہی ان کا اصلی چہرہ ہے: سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا

کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس لیڈر ایس سدارامیا نے منگل کے روز ریاست میں برسراقتدار بی جے پی پر زوردار حملہ کیا۔ انھوں نے بی جے پی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں بی جے پی حکومت میں سب سے زیادہ ہندوؤں کا قتل کیا گیا۔ انھوں نے کہا کہ ہمارے دور میں نہ صرف ہندو، ...

بی جے پی کے ریاستی صدر نلین کمار کٹیل کی بھٹکل آمد؛ آنے والے انتخابات کو لے کر کٹیل نے کہا؛ ساورکر اور ٹیپو نظریات کے درمیان ہوگا الیکشن

اس بار ریاستی انتخابات کانگریس اور بی جے پی کے بجائے ساورکر اور ٹیپو  نظریات کے درمیان ہوں گے۔ یہ بات  بی جے پی ریاستی یونٹ کے صدر نلین کمار کٹیل نے کہی۔ شرالی میں منعقدہ بی جے پی پروگرام میں شریک ہوتے ہوئے  کٹیل نے سوال کیا کہ آپ کو محب وطن ساورکرچاہئے  یا جنونی ٹیپو  چاہئے ...

 اڈانی کمپنی کے خُرد بُرد معاملہ پر کانگریس کا بنگلورو میں احتجاج

ریاست کرناٹک کے دارلحکومت بنگلورو کے میسور بینک سرکل پر کانگریس کی جانب سے اڈانی کمپنی سے جڑے معاملات پراحتتجاج کیاگیا جس میں پارٹی کے رہنما و کارکنان شریک تھے۔ احتجاج کے دوران کانگریس کے رہنماؤں نے کہا کہ راہل گاندھی نے پہلے ہی اس معاملہ سے متعلق پیشن گوئی کی تھی۔

منگلورو: نیشنل ایجوکیشن پالیسی 'ہندوتوا راشٹرا' بنانے کا ٹوُل کِٹ ہے؛ ماہر تعلیم ڈاکٹر نرنجنارادھیا 

کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کی آل انڈیا یوتھ فیڈریشن (اے آئی وائی ایف) جنوبی کینرا و اڈپی، سمدرشی ویدیکے منگلورو، کرناٹکا تھیولوجیکل ریسرچ انسٹی ٹیوٹ منگلورو کے اشتراک سے 'نیشنل ایجوکیشن پالیسی (این ای پی) اور اسکولی تعلیم' کے عنوان پر شہر میں منعقدہ  سیمینار میں اپنے خیالات کا ...

پتور: آپسی اختلافات بھول کر بی جے پی کو شکست دینے کے لئے متحد ہوجائیں - کانگریس پارٹی کارکنان سے لیڈروں کی اپیل 

کانگریس پارٹی لیڈران نے  پتور کے نیلیاڈی سے  ملناڈ اور ساحلی علاقے کے لئے اپنی 'پرجا دھونی یاترا' کا دوسرا مرحلہ شروع کرتے ہوئے اپنی کارکنان کو آواز دی کہ وہ آپسی اختلافات بھول کر بی جے پی کی  "بد عنوان، غیر فعال، غیر مخلص، غیر موثر اور عوام سے دور" حکومت کو ہٹانے کے لئے متحد ...