اتر کنڑا میں نیشنل ہائی وے پر حادثے میں موت ہونے پر افسران کے خلاف درج ہوگا مقدمہ - نومنتخب رکن پارلیمان کاگیری نے دی وارننگ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th June 2024, 8:40 PM | ساحلی خبریں |

کاروار 14 / جون (ایس او نیوز) نو منتخب رکن پارلیمان وشویشورا ہیگڑے کاگیری نے محکمہ جاتی افسران کے ساتھ منعقدہ اپنی پہلی میٹنگ میں ضلع پولیس سپرنٹنڈنٹ کو سخت ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ اگر ضلع اتر کنڑا میں غیر سائنٹیفک انداز میں کیے گئے نیشنل ہائی وے کے تعمیراتی کام کی وجہ سے حادثہ رونما ہوتا ہے اور اس میں عام لوگوں کی جان چلی جاتی ہے تو نیشنل ہائی وے کے افسران کو اس کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے ان کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے۔ 

 رکن پارلیمان وشویشورا ہیگڑے کاگیری نے ضلع ڈپٹی کمشنر کے دفتر میں منعقدہ مرکزی حکومت کے مختلف محکمہ جات سے تعلق رکھنے والے افسران کی میٹنگ میں کہا کہ نیشنل ہائی وے کا کام شروع ہو کر اتنے سال گزر گئے مگر ابھی تک اس کی تکمیل نہیں ہوئی ہے۔ ابھی بھی محکمہ پولیس کی طرف سے نشان دہی کیے گئے 'حادثات کے خطرات والے مقامات پر عوام کو چوکنا کرنے والے بورڈ نصب کرنے یا تعمیری کام مکمل کرنے کی طرف توجہ نہیں دی گئی ہے جس کی وجہ سے عوام کو جانی نقصان بھگتنا پڑ رہا ہے۔ ایسی صورت میں نیشنل ہائی وے اتھاریٹی کے افسران کے خلاف معاملات درج کیے جائیں۔

 ضلع ایس پی وشنو وردھن نے رکن پارلیمان بتایا کہ فی الحال ہائی وے افسران کو وارننگ دی گئی ہے اب اس کے آگے ان کے خلاف مقدمے درج کیے جائیں گے۔

 رکن پارلیمان وشویشورا ہیگڈے کاگیری نے کہا کہ نیشنل ہائی وے اتھاریٹی کے جو افسران ضلع انتظامیہ کی بات کو خاطر میں نہیں لاتے ان کے خلاف ہائی وے کا وزیر کے پاس شکایت بھیجی جائے۔ جو افسران اچھا کام کر رہے ہیں ان کا ساتھ دیا جائے گا لیکن ضلع کے عوام کے مفادات کو نظر انداز کرنے والے افسران کے خلاف کٹھن کارروائی کی جائے گی۔ 

 انہوں نے کہا کہ سی برڈ بحری اڈے اور کونکن ریلوے کے منصوبوں سے متاثر ہونے والے ضلع کے عوام کو تمام ضروری سہولتیں پوری طرح فراہم کرنا چاہیے۔ اس سے متعلقہ مسائل کے سلسلے میں ضلع انتظامیہ کے ساتھ رابطے کے لئے ایک نوڈل افسر تعینات کیا جائے۔ انہوں نے لیڈ بینک کے افسران کو ہدایت دی کہ مرکزی حکومت کی اسکیموں سے تعلق رکھنے والے معاملات میں عوام کو ضروری قرضہ فراہم کرنے میں کوتاہی نہیں ہونی چاہیے۔ انہوں نے ضلع ڈپٹی کمشنر سے کہا مرکزی حکومت کے جتنے منصوبے نا مکمل ہیں اور جن نئے منصوبوں کی تجویز مرکزی حکومت کےسامنے رکھنی ہے ان کی تفصیلات انہیں فراہم کی جائیں۔ ان مسائل سے متعلقہ وزیروں کے ساتھ بات چیت کرکے انہیں حل کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ 

 وشویشورا ہیگڑے کاگیری نے کہا کہ ضلع کے عوام نے مجھ پر بہت زیادہ اعتماد کرتے ہوئے مجھے یہاں سے رکن پارلیمان منتخب کیا ہے۔ میں ان کی توقعات کے مطابق کام کروں گا اور اس معاملے میں مجھے افسران کی طرف سے پورا تعاون ملنا چاہیے۔ 

 میٹنگ میں ضلع ڈپٹی کمشنر گنگو بائی مانکر، ضلع پنچایت سی ای او ایشور کمار کانڈو، ایڈیشنل ڈی سی پرکاش راجپوت کے علاوہ سی برڈ، کوسٹ گارڈ، بی ایس این ایل، نیشنل ہائی وے، محکمہ ڈاک سمیت مرکزی محکمہ جات کے افسران موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

دکشن کنڑا میں 83 مقامات پر بج رہی خطرے کی گھنٹی - موسلا دھار برسات سے کھسک سکتی ہیں چٹانیں 

کئی دنوں سے چل رہی مسلسل برسات کی وجہ سے جگہ جگہ چٹانیں کھسکنے کے واقعات پیش آ رہے ہیں ۔ اس وقت دکشن کنڑا میں 83 ایسے مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے جہاں چٹانیں کھسکنے کا خطرہ سر پر منڈلا رہا ہے ۔    

 انکولہ میں زمین کھسکنے کا معاملہ : ضلع انتظامیہ نے کی ملبے میں ٹرک دبے ہونے کی تصدیق؛ کیا زندہ برآمد ہوگا لاری ڈرائیور ؟

انکولہ تعلقہ کے شیرور میں پیش آئے چٹان کھسکنے کے المیہ کے بارے میں مزید کچھ اہم باتیں سامنے آ رہی ہیں، جس سے یقین ہوگیا ہے کہ ملبے کے اندر ایک بینز ٹرک دبا ہے ۔ اس وجہ سے ملبے کے اندر ٹرک کا لا پتہ ڈرائیور بھی موجود ہونے کا قوی امکان ہے۔

کمٹہ تعلقہ میں بھاری برسات کے بعد چٹان کھسک گئی  

اتر کنڑا میں موسلا دھار برسات کے نتیجے میں انکولہ تعلقہ کے  شیرور میں بڑے پیمانے پر چٹان کھسکنے کا جان لیوا حادثہ پیش آنے کے بعد اب کمٹہ تعلقہ میں الورومٹھ  کے قریب بھی ایک بڑی چٹان کھسک گئی ۔ اس سے کمٹہ سداپور شاہراہ مکمل طور پر بند ہوگئی ہے ۔

اڈپی میں ڈینگی کے بڑھتے معاملے - ڈاکٹری نسخے کے بغیر پیراسیٹامول گولی کی فروخت پر لگی پابندی

ضلع میں ڈینگی اور دوسرے متعدی امراض میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور زیادہ تر مریض خود ہی اپنا علاج (سیلف میڈیکیشن) کرنے لگے ہیں ۔ اس کی وجہ سے امراض کی نامناسب تشخیص اور نامکمل علاج کا سلسلہ چل پڑا ہے جس کا نتیجہ کبھی کبھی جان لیوا ثابت ہوتا ہے ۔