امت شاہ نے سنبھالی یوپی کی کمان، ناراض لیڈروں کو منانے کی کوشش; بی جے پی میں کہیں کچھ گڑبڑ تو نہیں!

Source: S.O. News Service | Published on 15th May 2024, 2:03 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ، 15/مئی (ایس او نیوز /ایجنسی) اتر پردیش میں انتخابات کے چار  مراحل کی تکمیل کے ساتھ اور بھارتیہ جنتا پارٹی کو درپیش چیلنجوں کے پیش نظر مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ، جنہیں اب پارٹی کا چانکیہ کہا جاتا ہے، نے سب سے زیادہ لوک سبھا  سیٹوں والی  ریاست کی کمان سنبھال لی ہےناراض چھتریہ  لیڈروں کو راضی کرنا ہو، انہیں پارٹی میں شامل کرنا ہو یا پھر سیٹوں کے حساب سے مسائل پیدا کرنے والے لوگوں کو پٹری پر لانا ہو، امت شاہ ان سب معاملوں کو سلجھانے میں مصروف ہیں۔ کئی سیٹوں پر  پہلے  اعلان کردہ امیدواروں میں تبدیلی سے لے کر آکاش آنند کی جارحانہ مہم کو روکنے تک، اسے شاہ کی حکمت عملی کی کامیابی کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔ یہی نہیں، پارٹی کے ایم ایل اے جو لاتعلق ہیں یا کئی لوک سبھا سیٹوں پر اپنے امیدواروں کی مہم کی اندرونی طور پر مخالفت کر رہے ہیں، انہیں بھی سخت ڈانٹ پلائی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ وہ کسی بھی قیمت پر جیت کو یقینی بنائیں۔

راجہ بھیا کو چارٹرڈ ہوائی جہاز کے ذریعے بنگلور بلا کر سمجھایا۔اتر پردیش کے مضبوط چھتریہ  لیڈر رگھوراج پرتاپ سنگھ عرف راجہ بھیا، جو پچھلے کئی سالوں سے بی جے پی کو ہر موقع پر سپورٹ کر رہے ہیں، اس لوک سبھا انتخابات میں اب تک خاموش بیٹھے تھے۔ کہا جا رہا تھا کہ اس سے پہلے راجہ بھیا اپنی پارٹی جنُ ستہ دل کے لیے ایک یا دو لوک سبھا سیٹوں کا مطالبہ کر رہے تھے اور اگر انہیں یہ نہیں ملیں تو وہ کم از کم اپنے اثر و رسوخ والے علاقوں پرتاپ گڑھ اور کوشامبی میں اپنی پسند کے بی جے پی امیدوار چاہتے تھے۔

جب دونوں توقعات پوری نہ ہوئیں تو راجہ بھیا کسی کے لیے مہم چلائے بغیر خاموشی سے بیٹھ گئے۔ راجہ بھیا کوشامبی کے ایم پی امیدوار ونود سونکر سے زیادہ ناراض تھے جو اکثر ان کے خلاف بیانات دیتے رہتے تھے۔ گزشتہ ہفتے امیت شاہ نے راجہ بھیا کو چارٹرڈ ہوائی جہاز میں ان سے بنگلور میں ملاقات کے لیے بلایا اور انہیں قائل کیا۔ اب راجہ بھیا نے بی جے پی کے لیے مہم چلانے کا اعلان کیا ہے۔

پہلے بی ایس پی کا ٹکٹ واپس کرایا، پھر شاہ نے دھننجے سے ملاقات کی۔جونپور پارلیمانی حلقہ میں بی جے پی امیدوار کرپاشنکر سنگھ کو امیت شاہ کی پسند بتایا جا رہا ہے۔ طاقتور اور بااثر چھتریہ  لیڈر دھننجے سنگھ نے یہاں سے بی ایس پی امیدوار کے طور پر اپنی بیوی کا پرچہ نامزدگی داخل کیا تھا۔ دھننجے کی بیوی سری کلا ریڈی جونپور ضلع پنچایت کی صدر بھی ہیں اور وہ بھرپور طریقے سے انتخابی مہم چلا رہی تھیں۔ اس کے شوہر دھننجے ایک فوجداری کیس میں سات سال کی سزا کے تحت  جیل میں تھے۔ ہائی کورٹ نے دھننجے کو اسی دن ضمانت دے دی جس دن ان کی بیوی  نے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا اور ایک دن بعد بی ایس پی نے ٹکٹ واپس لے لیا۔ تاہم دھننجے کا کہنا ہے کہ انہوں نے خود ٹکٹ واپس نہیں کیا بلکہ بی ایس پی نے اسے تبدیل کر دیا۔ اس سب کے درمیان اس ہفتے دھننجے اپنی بیوی شریکلا کے ساتھ دہلی گئے اور امیت شاہ سے ملاقات کی اور ایک گھنٹے تک بات چیت کی۔ اب دھننجے نے کہا ہے کہ وہ اپنے حامیوں سے مل کر فیصلہ لیں گے کہ انتخابات میں کس کی مدد کی جائے۔ مانا جا رہا ہے کہ یہ فیصلہ صرف بی جے پی کے حق میں ہوگا۔

پوروانچل کے ایک بااثر چھتری رہنما راجکشور کو شامل کیا۔راج کشور سنگھ، بستی ضلع کے ایک بااثر چھتری  لیڈر ہیں ، مایاوتی اور پھر اکھلیش حکومتوں میں کابینہ کے وزیر تھے۔ راجکشور کافی عرصے سے بی جے پی میں شامل ہونے کی کوشش کر رہے تھے اور اس کے لیے امیت شاہ سے ملنا چاہتے تھے۔ تمام تر کوششوں کے باوجود وہ امیت شاہ سے نہیں مل سکے۔

بی جے پی سے چھتریوں کی ناراضگی کی خبر سامنے آنے کے بعد امیت شاہ نے خود راج کشور کو دہلی بلایا اور ان سے ملاقات کی اور اسی شام وہ بی جے پی میں شامل ہوگئے۔

بی جے پی امیدوار دنیش سنگھ کے لیے ایک جلسہ عام کرنے رائے بریلی آئے امت شاہ سماج وادی پارٹی کے باغی ایم ایل اے اور سابق وزیر منوج پانڈے کے گھر گئے اور وہاں کھانا کھایا۔ منوج پانڈے اسمبلی میں ایس پی کے چیف وہپ تھے لیکن قانون ساز کونسل اور راجیہ سبھا انتخابات سے قبل جنوری میں استعفیٰ دے دیا تھا۔ منوج پانڈے رائے بریلی لوک سبھا سیٹ سے بی جے پی کے ٹکٹ کے مضبوط دعویدار تھے۔ ٹکٹ نہ ملنے کی وجہ سے وہ ناراض تھے اور بی جے پی امیدوار کے لیے مہم نہیں چلا رہے تھے۔ امیت شاہ کے آنے کے بعد ان کا رویہ نرم ہوا ہے اور انہوں نے مدد کا یقین دلایا ہے۔

اتر پردیش میں کئی سیٹوں پر مقامی ایم ایل ایز کی ناراضگی اور بی جے پی امیدوار کی مدد نہ کرنے کی خبریں آئی تھیں۔ بعض مقامات پر اس غصے کا کھلم کھلا اظہار بھی کیا گیا۔ اس کی وجہ سے انتخابات میں نقصان کے امکان کے پیش نظر، پہلے پارٹی جنرل سکریٹری سنیل بنسل کو ایم ایل اے کو وارننگ دینے کے لیے بھیجا گیا، پھر امت شاہ نے براہ راست ہدایات جاری کرتے ہوئے سبھی کو پارٹی امیدواروں کی جیت کو یقینی بنانے کے لیے کہا۔

ایک نظر اس پر بھی

بیرون ملک سے غیر قانونی اور نامناسب چندہ لینے کے الزامات بے بنیاد، انتخابات کی وجہ سے لگائے جا رہے: عآپ

عام آدمی پارٹی پر بیرون ملک سے غیر قانونی اور نامناسب چندہ لینے کے الزامات عائد کئے گئے ہیں۔ عام آدمی پارٹی نے ان الزامات کو مکمل طور پر بے بنیاد اور جھوٹا قرار دیا ہے۔ عام آدمی پارٹی کا کہنا ہے کہ یہ برسوں پرانا الزام ہے۔ ان تمام باتوں پر عام آدمی پارٹی وزارت داخلہ، الیکشن ...

دہلی-این سی آر میں شدید گرمی کا سلسلہ جاری، درجہ حرارت 47 ڈگری سے متجاوز، محکمہ موسمیات نے جاری کیا الرٹ

دہلی شدید گرمی کی لپیٹ میں ہے اور آئی ایم ڈی نے جمعہ تک انتہائی درجہ حرارت کو لے کر ریڈ الرٹ جاری کیا ہے۔ گرمی اس حد تک تباہی مچا رہی ہے کہ پیر کو بھی دہلی کے کچھ حصوں میں درجہ حرارت 47 ڈگری سیلسیس کو پار کر گیا تھا۔ دریں اثنا، محکمہ موسمیات نے قومی راجدھانی میں گرمی کی لہر کے حالات ...

بی جے پی کیجریوال پر حملہ کرا سکتی ہے؛ عآپ رکن پارلیمنٹ سنجے سنگھ کا سنگین الزام

عآپ کے سینئر لیڈر اور راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے بی جے پی پر سنگین الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ بی جے پی کیجریوال پر قاتلانہ حملہ کروانے کی سازش تیار کر رہی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ’’کیجریوال کے جیل سے باہر آنے سے بی جے پی بوکھلائی ہوئی ہے۔ اب یہ لوگ کیجریوال پر قاتلانہ حملہ ...

کیجریوال کی خودسپردگی سے قبل ہی ای ڈی عدالت پہنچ گئی، عبوری ضمانت ختم ہوتے ہی حراست کا مطالبہ

 دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کو سپریم کورٹ نے مبینہ دہلی آبکاری پالیسی گھوٹالہ سے متعلق منی لانڈرنگ کیس میں 10 مئی کو عبوری ضمانت دی تھی۔ انہیں 2 جون کو عدالت میں خودسپردگی کرنی ہے۔ مگر ان کی خودسپردگی سے قبل ہی ای ڈی انہیں حراست میں لینے کے لیے عدالت پہنچ گئی۔ ای ڈی ...