ہجومی تشدد پر سپریم کورٹ کا ایک بارپھر سخت موقف، ماب لنچنگ کیخلاف عرضداشت پر سماعت، مختلف ریاستوں سے طلب کیاجواب

Source: S.O. News Service | Published on 17th April 2024, 11:42 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی17/اپریل (ایس او نیوز/ایجنسی) ملک بھر میں گائے کے تحفظ کے نام پر مسلمانوں کیخلاف قتل اورہجومی تشدد کے بڑھتے ہوئے واقعات پر سپریم کورٹ نے ایک بار پھر سخت موقف اختیار کیا ہے۔ عدالت نے  ہجومی تشدد کے سنگین  معاملے میں کئی ریاستی حکومتوں کو کارروائی سے متعلق جواب داخل کرنے کیلئے چھ ہفتے کا وقت دیا ہے۔

 خواتین کی ایک تنظیم  کے ذریعہ  دائر کردہ عرضداشت پر سماعت کرتے ہوئے جسٹس بی آر گاوائی، جسٹس جے بی پاردی والا اور جسٹس سندیپ مہتا کی بنچ نے ریاستی حکومتوں سے جواب طلب کیا ہے۔ عرضی میں ریاستوں کو یہ ہدایت دینے کی مانگ کی گئی ہے کہ وہ نام نہاد’ گئو رکشکوں ‘کے ذریعہ مسلمانوں کے خلاف ہجومی تشدد اور لنچنگ کے واقعات میں سپریم کورٹ کے۲۰۱۸ء کے فیصلے کے مطابق فوری کارروائی کریں۔بنچ نے کہا کہ ہمیں معلوم ہوا ہے کہ زیادہ تر ریاستوں نے ہجومی تشدد پر اپنا جوابی حلف نامہ داخل نہیں کیا ہے۔ ان ریاستوں سے توقع تھی کہ وہ کم سے کم وقت میں اپناجواب دیںگی کہ انہوں نے ایسے معاملات میں کیا کارروائیاں کی ہیں۔

 قابل ذکرہےکہ سپریم کورٹ ،کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا سے وابستہ تنظیم نیشنل فیڈریشن آف انڈین ویمن (این ایف آئی ڈبلیو) کی درخواست پر سماعت کر رہی تھی، تنظیم نے گزشتہ سال مرکز اور مہاراشٹر، اودیشہ ، راجستھان، بہار، مدھیہ کے ڈی جی پی کو نوٹس جاری کرکےجواب طلب کیا  تھا۔سماعت کے دوران، درخواست گزار تنظیم کی طرف سے ایڈوکیٹ نظام پاشا نے کہا کہ مبینہ ہجومی تشدد کا واقعہ مدھیہ پردیش میں پیش آیا تھا، لیکن اس معاملے میں متاثرین کے خلاف ہی ایف آئی آر درج کی گئی تھی۔ انہوں نے کہا کہ اگر ریاست کو ماب لنچنگ کے واقعہ سے انکارہے تو پھر تحسین پونا والا کیس میں ۲۰۱۸ء کے فیصلے پر کیسے عمل کیا جا سکتا ہے۔؟واضح رہے کہ پونا والا کیس میں عدالت عظمیٰ نے ریاستوں کو گائے کے تحفظ اور ہجومی تشدد کے واقعات کی جانچ کیلئے کئی ہدایات جاری کی ہیں۔

 بنچ نے مدھیہ پردیش حکومت کی طرف سے پیش ہونے والے وکیل سے سوال کیا کہ ایف آئی آر کیسے درج کی گئی اس کی جانچ کئے بغیر کہ یہ گائے کا گوشت ہے یا نہیں؟ اور اس میں ملوث لوگوں کے خلاف ایف آئی آر کیوں درج نہیں کی گئی۔ بنچ نے مزید کہا کہ کیا آپ کسی کو بچانے کی کوشش کر رہے ہیں؟ گائے ذبح کرنےکی ایف آئی آر بغیر تفتیش کے کیسے درج کر سکتے ہیں؟

 عرضداشت گزار تنظیم کے وکیل نظام پاشا نے عدالت کو بتایا کہ ایسا واقعہ ہریانہ میں بھی ہوا ہے۔ یہاں گائے کے گوشت کی اسمگلنگ کا معاملہ درج کیا گیا تھا، ہجومی تشدد کا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ  `ریاست اس بات سے انکار کر رہی ہے کہ موب لنچنگ کا کوئی واقعہ پیش آیا ہے اور متاثرین کے خلاف ایف آئی آر درج کی جا رہی ہے۔ صرف دو ریاستوں، مدھیہ پردیش اور ہریانہ نے واقعات پر رٹ پٹیشن اور اپنے حلف نامے داخل کئے ہیں، لیکن دیگر ریاستوں نے کوئی حلف نامہ داخل نہیں کیا۔ دوسرے مذاہب کے لوگوں کے ماب لنچنگ کا کوئی ذکر نہیں ہے۔جسٹس کمار نے پاشا سے کہا کہ درخواستوں میں تمام واقعات کا ذکر کیا جائے۔

 سینئر وکیل ارچنا پاٹھک ڈیو نے ریاست کی طرف سے پیش ہوتے ہوئے کہا کہ رٹ پٹیشن میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ ہجومی تشدد کے واقعات مسلمانوں کے ساتھ ہوتے ہیں، اس دوسرے مذاہب کے لوگوں کی ماب لنچنگ کا کوئی ذکر نہیں ہے۔ اس اعتراض  اور سوال کے جواب میں پاشا نے کہا کہ یہ معاشرے کی افسوسناک حقیقت ہے اور مخصوص برادریوں کے خلاف ہونے والے واقعات کو بھی عدالت کے سامنے لایا جا سکتا ہے۔اس پربنچ نے ان سے کہا کہ وہ اپنے دلائل میں تحمل کا مظاہرہ کریں اور مذہب کی بنیاد پر واقعات میں  شامل  نہ ہوں،ہمیں بڑے مقصد پر توجہ دینی چاہیے۔ سپریم کورٹ نے گرمیوں کی تعطیلات کے بعد کیس کی سماعت ملتوی کرتے ہوئے حکم دیا کہ ریاستیں  ہجومی تشدد کو روکنے کے لیے اٹھائے گئے اقدامات پر اپنا جواب داخل کریں۔

ایک نظر اس پر بھی

اروند کیجریوال کی گرفتاری کو چیلنج کرنے والی عرضداشت پر سپریم کورٹ نے فیصلہ محفوظ رکھا

سپریم کورٹ نے جمعہ (17 مئی) کو دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کی ای ڈی کے ذریعے آبکاری پالیسی کے تحت گرفتاری کو چیلنج کرنے والی عرضداشت پر اپنا فیصلہ محفوظ رکھ لیا ہے۔ جسٹس سنجیو کھنہ اور جسٹس دیپانکر دتّہ کی بنچ نے فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے اروند کیجریوال کو ضمانت کے لیے نچلی ...

دہلی میں بڑھتی آلودگی کی ذمہ دار مودی حکومت ہے، کانگریس کا سنگین الزام

دہلی میں بڑھتی آلودگی کے لیے کانگریس نے مرکز کی مودی حکومت کو ذمہ دارٹھہریا ہے۔ کانگریس کے جنرل سکریٹری جے رام رمیش نے آج (17 مئی) کو ایک پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ معیار کو نظر انداز کرتے ہوئے دہلی میں تقریباً ایک درجن بجلی گھروں میں کوئلہ استعمال کیا جا رہا ہے اور مرکز کی ...

بی جے پی محکمہ پولیس میں بھی اگنی ویر اسکیم لانے کی تیاری کر رہی ہے، تیجسوی یادو کا بڑا دعویٰ

بہار کے سابق نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے مرکز کی اگنی ویر اسکیم کے تعلق سے ایک بڑا دعویٰ کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ مرکز کی بی جے پی حکومت محکمہ پولیس میں بھی فوج کی طرح اگنی ویر اسکیم لانے کی تیاری کر رہی ہے۔ ملک بھر کے نوجوانوں کا سب سے بڑا مسئلہ اگنی ویر اسکیم ہے۔ ہم نے حکام ...

اَپنا بیٹا آپ کے سپرد کر رہی ہوں، وہ کبھی آپ کو مایوس نہیں کریگا ؛ رائے بریلی کے عوام سے سونیا گاندھی کی جذباتی اپیل

کانگریس کا قلعہ قرار دئیے جانے والے رائے بریلی میں جمعہ کو انڈیا اتحاد کے تمام اہم لیڈران ایک ساتھ جمع ہوئے۔ اس موقع پر راہل گاندھی کی حمایت میںمنعقدہ انتخابی جلسہ سے سونیا گاندھی نے نہایت جذباتی خطاب کیا اور وہاں کے ووٹرس سے اپیل کی کہ وہ راہل کو کامیاب بنائیں۔

مہاراشٹر غداروں کو کبھی معاف نہیں کرتا، ادھوٹھاکرے کا ایکناتھ شندے گروپ پر سخت حملہ

ملک میں لوک سبھا انتخابات کے چار مرحلوں میں ووٹنگ ہوچکی ہے۔ پانچویں مرحلے کے تحت 20 مئی کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔ تمام سیاسی پارٹیاں انتخابی مہم میں مصروف ہیں۔ اس دوران شیوسینا (یو بی ٹی) کے صدر ادھو ٹھاکرے نے شیوسینا توڑنے والوں کے ساتھ بی جے پی پر جم کر نشانہ سادھا ہے۔ انہوں نے کہا ...

ہیمنت سورین کو فی الحال سپریم کورٹ سے نہیں ملی راحت، عبوری ضمانت کی درخواست پر سماعت ملتوی

جھارکھنڈ کے سابق وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین کو جمعہ کو سپریم کورٹ سے راحت نہیں مل سکی۔ سورین نے ای ڈی کی کارروائی اور گرفتاری کے خلاف درخواست دائر کی ہے۔ انہوں نے انتخابی تشہیر کے لئے عبوری ضمانت کے لئے بھی درخواست دائر کی ہے لیکن جسٹس سنجیو کھنہ اور جسٹس دیپانکر دتہ کی بنچ نے کہا ...