قرآن جلانے والوں کے خلاف سخت جوابی اقدامات کریں: او آئی سی

Source: S.O. News Service | Published on 2nd February 2023, 12:03 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

جدہ، 2؍فروری (ایس او نیوز؍ایجنسی ) اسلامی تعاون کی تنظیم (او آئی سی) کی مجلس عاملہ کا ایک غیر معمولی اجلاس منگل کے روز سعودی عرب کے ساحلی شہر جدہ میں واقع اس تنظیم کے ہیڈ کوارٹرز میں ہوا۔ اس میں سویڈن، نیدرلینڈز اور ڈنمارک میں مسلمانوں کی مقدس کتاب قرآن کے نسخے جلائے جانے اور ان کی بے حرمتی کے حالیہ واقعات پر سخت تشویش کا اظہار کیا گیا۔

اس اجلاس کے بعد جاری کردہ ایک بیان میں او آئی سی نے اپنے تمام رکن ممالک سے اپیل کی کہ ان حالیہ واقعات کے خلاف مشترکہ موقف اختیار کریں تاکہ مستقبل میں اس طرح کی اشتعال انگیز کارروائیوں کو روکا جا سکے۔ اس اجلاس میں اسلاموفوبک حملوں کے مرتکب افراد کے خلاف ممکنہ اقدامات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

او آئی سی کے سیکرٹری جنرل حسین ابراہیم طہٰ نے مغربی ممالک میں انتہائی دائیں بازو کے کارکنوں کی ایسی اشتعال انگیز کارروائیوں پر مایوسی کا اظہار کیا۔ انہوں نے زور دیا کہ اس طرح کے مجرمانہ اقدامات مسلمانوں کو نشانہ بنانے اور ان کے مذہب، اقدار اور مذہبی علامات کی توہین کے بنیادی ارادے سے کیے جاتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس طرح کے واقعات کی روک تھام کے لیے متعلقہ حکومتوں کو سخت جوابی اقدامات کرنا چاہییں، بالخصوص اس لیے بھی کہ انتہائی دائیں بازو کے انتہا پسند اس طرح کی اشتعال انگیزی ایسے ممالک میں بار بار کر رہے ہیں۔

او آئی سی کے سیکرٹری جنرل نے کہاکہ قرآن کی بے حرمتی اور پیغمبراسلام کی توہین پر مبنی ایسی کارروائیاں جان بوجھ کی جاتی ہیں اور ایسے اقدامات کو اسلاموفوبیا کے کسی عام واقعے کے طور پر نہیں دیکھا جانا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کا عمل دنیا کی ایک ارب60 کروڑ کی مسلم آبادی کی براہ راست اجتماعی توہین ہے۔

حسین ابراہیم طہٰ نے تمام متعلقہ فریقوں پرزور دیا کہ وہ ایسی اشتعال انگیز حرکتوں کے ذمے دار عناصر کے خلاف سخت کارروائی کریں تاکہ مستقبل میں اس طرح کی اشتعال انگیزی کا اعادہ نہ ہو سکے۔

او آئی سی میں ترکی کے مستقل نمائندے محمد متین ایکر نے کہا کہ اسٹاک ہوم، دی ہیگ اور کوپن ہیگن میں قرآن جلائے جانے کے حالیہ 'شرمناک‘ واقعات کی انقرہ حکومت شدید مذمت کرتی ہے۔ انہوں نے کہا، ''ترکی کی جانب سے درخواست کے باوجود بدقسمتی سے سویڈش حکام 21جنوری کو قران پر حملہ روکنے کے لیے ضروری احتیاطی اقدامات کرنے میں ناکام رہے، جس سے حوصلہ پاکر بعد میں نیدرلینڈز اور ڈنمارک میں بھی اسی طرح کی کارروائیاں کی گئیں۔‘‘

ترک سفیر کا کہنا تھا، ''دنیا کے کئی حصوں بالخصوص یورپ میں اسلام مخالف نفرت خطرناک حد تک پہنچ گئی ہے۔‘‘ انہوں نے کہا کہ دائیں بازو کے سیاست داں اپنے 'تنگ نظر ایجنڈے‘ کو نافذ کرنے کے لیے اسلام مخالف اور مردم بیزاری کی مظہر سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔

دائیں بازو کے شدت پسند ڈینش سویڈش رہنما راسموس پالوڈن نے 21 جنوری کو اسٹاک ہوم میں ترکی کے سفارت خانے کے باہر قرآن کو نذر آتش کیا تھا۔ اس کے بعد اسلام مخالف گروپ پیگیڈا کے رہنما اور دائیں بازو کے ڈچ سیاست دان ایڈون ویگنس ویلڈ نے بھی نیدرلینڈز اور ڈنمارک میں قرآن کو نذر آتش کیا تھا۔

دریں اثنا ہنگری کے وزیر خارجہ پیٹر سزیجاترو نے کہا ہے کہ کسی بھی دوسرے مذہب کی مقدس کتاب جلانا یا اس کی بے حرمتی کرنا کسی بھی صورت قابل قبول نہیں۔ انہوں نے کہا کہ مذہب خواہ کوئی بھی ہو، '' ہم اس کی مقدس کتاب یا دیگر مقدس علامات کو جلانے یا ان کی بے حرمتی کرنے کی قطعی مخالفت کرتے ہیں۔‘‘

ہنگری کے وزیر خارجہ کے مطابق، ''میں ایک مسیحی اور باعقیدہ کیتھولک مسیحی کی حیثیت سے کہتا ہوں کہ کسی بھی دوسرے عقیدے کی مقدس کتاب کو جلانا یا اس کے بے حرمتی کرنا کسی بھی شکل میں قابل قبول نہیں ہو گا۔ میں نہایت معذرت سے کہتا ہوں کہ کسی اور عقیدے کی مقدس کتاب کی بے حرمتی کو اظہارِ بیان کی آزادی کہنا حماقت کے علاوہ اور کچھ بھی نہیں۔ اب اگر کوئی ملک نیٹو کی رکنیت چاہتا ہو اور ترکی کی بھی حمایت حاصل کرنا چاہتا ہو، تو اسے زیادہ محتاط ہونا چاہیے۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

عرفات کے اہم ترین مقام’مسجد نمِرہ‘ کا تاریخی پس منظر

مسجد نمِرہ کا شمار عرفات کے میدان میں ایک اہم ترین مقام کے طور ہوتا ہے، یہاں ہر سال لاکھوں عازمین حج وقوف عرفہ کے روز رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی پیروی کرتے ہوئے ظہر اور عصر کی نمازیں ایک وقت میں قصر کرکے پڑھتے ہیں۔

20 لاکھ خوش نصیب،سعادت حج سے مشرف

  دنیا بھر سے آئے مسلمانوں نے ہفتہ کے دن یہاں تپتی دھوپ میں وقوفِ عرفہ کیا۔ جبل ِعرفات کو جبل ِ رحمت بھی کہا جاتا ہے۔ وقوف ِ عرفہ‘ حج کا رُکن ِ اعظم ہوتا ہے جس کے ساتھ ہی حج کی تکمیل ہوجاتی ہے۔ یہ عازمین کے لئے نہایت یادگار ہوتا ہے۔ وہ اللہ سے گڑگڑاکر رحم کی‘ خوشحالی اور اچھی صحت ...

میدان عرفات میں لاکھوں عازمین حج کا اجتماع، رکن اعظم کی ادائیگی میں مصروف

  بیس لاکھ سے زائد عازمین حج آج میدان عرفات میں حج کا رکن اعظم ادا کریں گے۔ حج کے رکن اعظم کی ادائیگی کے لیے لاکھوں عازمین میدان عرفات میں پہنچ گئے ہیں جہاں وہ ظہر اور عصر کی نمازیں قصر و جمع کی صورت میں ادا کریں گے اورخطبہ حج سنیں گے۔

میدانِ عرفات میں دُنیا کا سب سے بڑا اجتماع، لاکھوں عازمین لبیک کی صداؤں کے ساتھ وقوف ِ عرفہ کیلئےپہنچیں گے، مسجد نمرہ سے خطبہ ٔ حج کی تیاریاں مکمل

دنیا بھر سے مکہ مکرمہ پہنچنے والے لاکھوں عازمین ِ حج جمعہ ۸؍ ذی الحجہ کو  ’یوم  ترویہ ‘ گزارنے کیلئےلبَيك اللّھُمَ لَبّيك کی صدائیں  بلند کرتے ہوئے منیٰ پہنچ  گئے جہاں  خیموں کا  شہرآباد  ہوگیا ہے۔  پوری دنیا سے  ۱۵؍ لاکھ سے زیادہ عازمین حج مکہ مکرمہ پہنچے ہیں۔

کویت کی رہائشی عمارت میں آتشزدگی سے 40 ہندوستانیوں سمیت پچاس لوگوں کی موت

کویت کے جنوبی شہر منگاف میں ایک عمارت میں آگ لگنے سے کم از کم 41 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ آگ بدھ کی صبح لگی اور پوری عمارت راکھ ہو گئی۔ صبح کی اولین ساعتوں میں لگی آگ تیزی سے پوری عمارت میں پھیل گئی اور کئی لوگ عمارت کے اندر پھنس گئے۔ اس حادثے میں کئی لوگ شدید زخمی بھی ہوئے ہیں۔