بھٹکل نیشنل ہائی وے پرتیز رفتار کار زیرتعمیر ڈیوائیڈر سے ٹکراگئی؛ آئی آر بی کی لاپرواہی کو ذمہ دار ٹہراتےہوئے عوام نے کیا احتجاج

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 30th March 2024, 2:43 AM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 30 مارچ (ایس او نیوز)  تیزرفتار کاربھٹکل نیشنل ہائی وے پر زیر تعمیر ڈیوائیڈرسے ٹکرانے کے نتیجے میں کار پر سوار چار لوگ بال بال بچ گئے، البتہ کار کے اگلے حصے کو شدید نقصان پہنچا ۔ کار کنداپور سے بھٹکل کے گُلمی  ہوتے ہوئے مرڈیشور جارہی تھی۔ حادثہ بھٹکل جے ایم ایف سی کورٹ کے سامنے جمعہ کی شب قریب گیارہ بجے پیش آیا۔

کار پر سوار کنداپور سے تعلق رکھنے والے  چار لوگ مُنیفا بانو (18)، زُبیدہ بانو (40) کو تھوڑی بہت چوٹ آئی تھی جنہیں بھٹکل سرکاری اسپتال لے جاکر مرہم پٹی کرائی گئی ہے، البتہ کار ڈرائیور عمر توصیف اور ابراہیم  محفوظ رہ گئے۔ ساحل آن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے   ابراہیم نے  بتایا کہ نیشنل ہائی وے پر ایسا اندھیرا ہے کہ سامنے کچھ نظر نہیں آتا،  بالخصوص کورٹ کے سامنے جہاں ڈیوائیڈر کا تعمیراتی کام چل رہا ہے، وہاں کسی قسم کا کوئی سائن  بورڈ نہیں ہے، نہ ہی لائٹنگ کا انتظام کیا گیا ہے۔ اس نے بتایا کہ ڈیوائیڈر سے ٹکراتے ہی کار کے  ائیربیگ کھل گئے، جس کی وجہ سے ہم سبھی لوگ بال بال بچ گئے۔

حادثے کے فوری بعد جائے وقوع پر لوگوں کا ہجوم جمع ہوگیا۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ یہاں اس قدر اندھیرا ہے اور زیر تعمیرڈیوائیڈر کے تعلق سے  کسی بھی طرح کا ہدایتی  بورڈ یا   کسی بھی طرح کا سائن بورڈ نہ ہونے سے گذشتہ دوتین دنوں سے رات کے اوقات میں حادثات پیش آرہے ہیں، بالخصوص  اسکوٹر اور بائک؛ ڈیوائیڈر سے  ٹکرا نے کے واقعات پیش آرہے ہیں جس کے نتیجے میں لوگ زخمی ہورہے ہیں۔ عوام کا کہنا ہے کہ  آج یہاں کار کی ٹکر ہوئی ہے جس کی وجہ سے حادثہ لوگوں کی نظروں میں آگیا ہے۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ  یہ تو اچھا ہوا کہ کار کے ائیربیگ کھل گئے، ورنہ حادثہ جان لیوا ثابت ہوسکتا تھا۔

کچھ دیر بعد جب ہائی وے تعمیر کرنے والی کمپنی ' آئی آر بی'  کی کرین جائے وقوع پر پہنچی اور  پولس کی موجودگی میں ڈیوائیڈر کے اندر گھسی ہوئی کار کو ہٹانے کےلئے آگے بڑھی تو  ناراض عوام نے یہ کہہ کر کرین کو آگے بڑھنے سے روک دیا کہ پہلے آئی آر بی کمپنی کےآفسر  کو جائےوقوع پر بلایا جائے۔ جب تک وہ خود جائے وقوع پر پہنچ کر  جائزہ نہیں لے گا اور اپنی کمپنی کی طرف سے ہورہی  لاپرواہی کا  مشاہدہ نہیں کرے گا، ہم یہاں سے کار کو ہٹانے نہیں دیں گے۔ عوام نے پولس کو بتایا کہ اگر آئی آر بی کمپنی کا انجینئر یا آفسر  نہیں آئے گا تو ہم ہائی وے کو   بلاک کرنے سے بھی  دریغ نہیں کریں گے۔

رپورٹ تحریر کئے جانے تک رات قریب ایک بجے تک عوام کی بڑی تعداد جائے حادثہ پر ہی موجود تھی اور لوگ  کار کو وہاں سے ہٹانے نہ دینے  کی اپنی ضد پر آڑے ہوئے تھے۔ بھٹکل ٹاون پولس تھانہ سے  پی ایس آئی اور دیگر پولس اہلکار بھی موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

ماہی گیر تنظیموں کا متفقہ فیصلہ - کاسرکوڈ میں تجارتی بندرگاہ کے خلاف ہوگی قانونی جد و جہد

) شہر کے سینٹ جوزیف ہال میں ماہی گیر تنظیموں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی اور کراولی ماہی گیر مزدوروں کی تنظیم کا مشترکہ اجلاس منعقد ہوا جس میں کاسرکوڈ میں مجوزہ نجی تجارتی بندرگاہ کی تعمیر کے خلاف تنظیمی اور قانونی طریقے سے جد وجہد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔

بھٹکل میں ووٹر بیداری مہم؛ سرکاری افسران نے طلبہ کے ساتھ نکالی ریلی؛ سو فیصد ووٹنگ کویقینی بنانے کی کوششیں

بھٹکل میں  صد فیصد ووٹنگ کا ٹارگٹ لے کر   اُترکنڑاضلعی انتظامیہ،  ضلع پنچایت، بھٹکل تعلقہ انتظامیہ اور تعلقہ پنچایت کے زیراہتمام  بھٹکل کے سرکاری آفسران  نے کالج طلبہ کو ساتھ لے کر  ووٹنگ بیداری مہم  کے تحت شاندار ریلی نکالی اور عوام پر زور دیا کہ وہ  کسی بھی صورت میں اپنی ...

بھٹکل میں مسلم رپورٹروں کی طرف سے غیر مسلم رپورٹروں کوپیش کی گئی عید الفطر کی مٹھائیاں

ورکنگ جرنلسٹ اسوسی ایشن   بھٹکل  کے مسلم رپورٹروں کی طرف سے بھٹکل کے غیر مسلم رپورٹروں کو عید الفطر کی مناسبت سے مٹھائیاں تقسیم کی گئیں اور اُنہیں عید کے تعلق سے  معلومات فراہم کی گئیں۔